Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹریفک خلاف ورزیوں کے نام پر بھاری چالانات ،شہریوں پر زیادتی

ٹریفک خلاف ورزیوں کے نام پر بھاری چالانات ،شہریوں پر زیادتی

ٹریفک پولیس کو فرائض سے زیادہ رقومات بٹورنے کی فکر افسوسناک۔ عامر علی خاں کا بیان

ٹریفک پولیس کو فرائض سے زیادہ رقومات بٹورنے کی فکر افسوسناک۔ عامر علی خاں کا بیان
حیدرآباد ۔ /12فبروری ، ( سیاست نیوز) وائی ایس آر کانگریس پارٹی لیڈر مسٹر عامر علی خاں نے حیدرآباد و سائبر آباد ٹریفک پولیس پر زور دیا ہے کہ وہ شہر میں موٹر سیکل رانوں اور موٹر رانوں پر بھاری جرمانے و چالان عائد کرنے کا عمل روک دے اور ٹریفک کی بحالی کیلئے عملیت پسندی کا مظاہرہ کیا جائے۔ ایک صحافتی بیان میں عامر علی خاں نے کہا کہ ٹریفک پولیس کو موٹر رانوں سے بھاری جرمانے اکٹھا کرنے کی فکر غیردرست ہے، زیادہ ٹریفک کے بہاؤ کو باقاعدہ بنانے پر زیادہ سے زیادہ توجہ دینی چاہیئے۔ ٹریفک پولیس کی اندھا دھند چالان کارروائیوں کو لب سڑک زبردستی رقومات کی وصولی کا غیر قانونی عمل قرار دیتے ہوئے وائی ایس آر کانگریس پارٹی لیڈر نے کہا کہ ٹریفک پولیس کے رائج کردہ چالانات اب موٹرسیکل و موٹر سواروں کی روٹی روزی پر اثر انداز ہورہے ہیں۔ ٹریفک پولیس کی یہ عین اور محسن ذمہ داری ہے کہ وہ شہریوں کو ہراساں کرنے کے بجائے ان میں ٹریفک اصولوں سے متعلق شعور بیدار کرے۔ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی بلا شبہ ایک معزز شہری کی طرز زندگی کے شایان شان نہیں ہوتی تاہم پولیس کا رویہ اور اس کی حرکتوں نے شہریوں کو بدظن کردیا ہے۔ عوام کو ٹریفک قواعد پر عمل کرنے کی دوستانہ ترغیب دینے کے بجائے ٹریفک خلاف ورزیاں کرنے والوں کی جیب ہلکی کرنے پر ساری توانائی صرف کی جاتی ہے۔ پولیس کی ان زیادتیوں سے شہریوں پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔ پولیس زیادتی کا شکار ایک نوجوان جی شیو پرساد راجندر نگر نے خودکشی کرلی تھی۔ ٹریفک چالان کی عدم ادائیگی پر لنگر حوض پولیس نے اس کی موٹر سیکل ضبط کرلی۔ اس واقعہ سے نوجوان کی عزت نفس کو ٹھیس پہونچی اور اس نے 28جنوری کو نامعلوم زہریلی شئے پی لی اور دواخانہ عثمانیہ میں علاج کے دوران 5فبروری کو فوت ہوگیا۔ یہ افسوسناک واقعہ پولیس کی ہراسانی سے پیش آیا۔ عامر علی خاں نے مزید کہا کہ حیدرآباد سائبر آباد پولیس کے ٹریفک شعبوں سے وابستہ عملہ اپنے فرائض کی ادائیگی سے زیادہ ٹریفک پولیس کے وجود کو ایک منفعت بخش شعبہ بنانے پر دھیان دے رہا ہے۔

انہوں نے شہر میں ٹریفک مسائل اور عوام پر کئے جانے والے جرمانوں کے اعداد و شمار کے حوالے سے بتایا کہ حیدرآباد و سائبرآباد پولیس حدود میں رہنے والے ہر تین میں سے دو شہریوں کو سال 2013ء کے دوران ٹریفک قواعد کی خلاف ورزی پر چالان ادا کرنا پڑا ہے۔ محکمہ پولیس نے سال 2013ء میں 40.36 لاکھ موٹر رانوں پر جرمانے عائد کرکے 67.87 کروڑ روپئے حاصل کئے جبکہ حیدرآباد سٹی پولیس نے 30,87,915 افراد سے 45.08 کروڑ روپئے جرمانے کے طور پر وصول کئے ہیں۔ سائبرآباد پولیس نے ٹریفک خلاف ورزی کرنے والے 948,140 موٹر رانوں سے 22.75 کروڑ روپئے کے جرمانے حاصل کئے۔ عام آدمی جو پہلے ہی مہنگائی سے پریشان ہے اور روز مرہ کی اشیاء کو دوگنی اور سہ گنا قیمتوں میں حاصل کررہا ہے،برقی اور دیگر بلوں پر من مانی شرح ادا کررہا ہے۔ ایسے میں ٹریفک چالانات کے ذریعہ ان پر زائد بوجھ ڈالنا سراسر غیر قانونی و غیر اخلاقی عمل ہے۔

انہوں نے حیدرآباد و سائبرآباد کے کمشنروں پر زور دیا کہ وہ ٹریفک قواعد سے متعلق شہریوں میں شعور بیداری مہم چلائیں۔ پولیس عملے کی جانب سے انہیں ہراساں کرنے کے بجائے ٹریفک کے بہاؤ اور اپنے فرائض پر دھیان دینے کی جانب توجہ مبذول کرنی چاہیئے۔ عامر علی خاں نے موٹر رانوں اور مالکین سے بھی اپیل کی کہ وہ شہر کی بے ہنگم ٹریفک کے پیش نظر اپنی ذمہ داریوں کو محسوس کرتے ہوئے ٹریفک اصولوں پر عمل کریں تاکہ اپنی محنت کی کمائی کو چالانات کی نذر کرنے سے گریز کیا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT