Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹریفک کے آسان بہاؤ کے لیے 30جنکشن کی ترقی

ٹریفک کے آسان بہاؤ کے لیے 30جنکشن کی ترقی

سڑکوں کی توسیع میں فری لیفٹ کی راہ ہموار ، جی ایچ ایم سی کی منصوبہ بندی
ترقی دئیے جانے والے جنکشنس
سچترا ، ائی ڈی پی ایل ، سٹی کالج ، ہمت پورہ ( شاہ علی بنڈہ ) ، اشوک نگر ، سائبر سٹی ( خانہ میٹ ) ، پیراڈائیز ، پرانا پل ، عطا پور ، این ایف سی ملا پور ، آئی آئی آئی ٹی جنکشن ، شانیے نرسنگ ہوم ، نظام کالج ، وی ایس ٹی جنکشن ، بی این ریڈی جنکشن ، ہستناپورم ، کواڑی گوڑہ ، فیور ہاسپٹل ، کرمن گھاٹ ، عنبر پیٹ 6 نمبر ، رامتنا پور چرچ ٹی جنکشن ، علی کیفے ، رانی گنج ، نرسا سا پور ، مدینہ ، اعتبار چوک ، شیواجی برج ( دارالشفاء ) ، بی بی بازار ، حیدرگوڑہ ( عطا پور ) ، وی ٹی کمان ، کے پی ایچ بی ٹمپل بس اسٹاپ ، بورا بنڈہ بس اسٹاپ بالا نگر جنکشن ، ٹی وائی منڈلی ، ملے پلی جنکشن ۔۔

حیدرآباد ۔ 13 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے مستقبل کی 7 سال ٹریفک کو پیش نظر رکھتے ہوئے پہلے مرحلے میں 30 جنکشنس کو ترقی دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ سڑکوں کی توسیع میں فری لفٹ کے لیے خصوصی راہ ہموار کرنے کی تیاری جاری ہے ۔ فٹ پاتھ کو ریلنگ کی سہولت فراہم کرتے ہوئے سر سبز و شاداب بنایا جائے گا ۔ شہر کے ٹریفک جنکشنس میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں عمل میں لائی جائیں گی ۔ ٹریفک مسائل کو حل کرنے کے لیے جی ایچ ایم سی نے اہم جنکشنس کو ترقی دینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ ٹریفک کے بہاؤ کو بغیر کسی رکاوٹ کے آگے بڑھنے کا موقع فراہم ہوسکے ۔ اس کے لیے سڑکیں توسیع کرنے کی بھی تجویز شامل ہے ۔ لفٹ راستے پر جانے والی گاڑیوں کے لیے خصوصی راہ ہموار کی جارہی ہے ۔ پیدل راہروں کے لیے فٹ پاتھ تعمیر اور خصوصی ریلنگ لگاتے ہوئے عوام کو خوشگوار ماحول فراہم کرنے کے لیے سرسبز و شادابی کو فروغ دیا جائے گا ۔ روڈ سیفٹی کے لیے تمام بنیادی سہولتوں کا خیال رکھا جارہا ہے ۔ گریٹر حیدرآباد میونسپل کاروریشن اور ٹریفک ٹرانسپورٹ شعبہ نے ایک دوسرے سے تعاون و اشتراک کرتے ہوئے پہلے مرحلے میں اربن جنکشن امپرومنٹ کے نام 30 جنکشن کو ترقی دینے کی حکمت عملی تیار کی گئی ہے ۔ بہت جلد ٹنڈرس طلب کرتے ہوئے کاموں کا آغاز کیا جائے گا ۔ جی ایچ ایم سی کے ٹرانسپورٹ شعبہ نے کئی جنکشن میں آئی لینڈ ، گارڈ گرل ، فٹ پاتھس ، پیلی کان کراسنگ کے علاوہ دیگر سہولتیں فراہم کی ہیں ۔ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں تقریبا 250 جنکشنس ہیں آبادی میں اضافہ کے ساتھ شہر کی بھی توسیع ہورہی ہے اور ساتھ ہی گاریوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہورہا ہے ۔ جس سے ٹریفک مسائل پیدا ہورہے ہیں ۔ ٹریفک مسائل کو دور کرنے کے لیے جنکشنس کو ترقی دینے کا جی ایچ ایم سی نے فیصلہ کیا ہے ۔ اربن جنکشن امپرومنٹ پلان کے تحت 100 اہم جنکشنس کو ترقی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اس کے لیے لی اسوسی ایٹس کنسلٹنٹ کے ذریعہ اہم جنکشن پر ٹریفک بہاؤ کا سروے کرایا گیا ہے ۔ سروے رپورٹ کی بنیاد پر گاڑیوں کی آمد و رفت ، مقامی ضروریات کے پیش نظر جنکشن کو ترقی دینے کا ڈیزائن تیار کیا جارہا ہے ۔ 30 جنکشنس کا ڈیزائن تیار ہوجانے پر پہلے مرحلے میں ان جنکشنس کو ترقی دینے کی تیاریاں جاری ہیں ۔ اہم جنکشنس کے اطراف 100 میٹر سڑک توسیع کرتے ہوئے لفٹ میں جانے والی گاڑیوں کو بغیر رکاوٹ علحدہ راہ ہموار کی جائے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT