Tuesday , January 23 2018
Home / کھیل کی خبریں / ٹسٹ میں ناکامی ‘ہندوستان کو ونڈے میں نظرانداز نہ کریں

ٹسٹ میں ناکامی ‘ہندوستان کو ونڈے میں نظرانداز نہ کریں

سڈنی 13؍ جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی دورہ آسٹریلیا پرٹسٹ سیریز میں 2-0 کی شکست برداشت کرنی پڑی ہے تاہم میزبان ٹیم کے سابق کھلاڑی مائیک ہیسی نے آسٹریلیا کو انتباہ دیا ہے کہ سہ رخی سیریز اورورلڈ کپ میں ونڈے کی چمپین ٹیم کو نظرانداز کرنے کی غلطی نہ کریں ۔ ہیسی نے کہا ہے کہ ہندوستانی ٹیم کے لئے سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ وہ گ

سڈنی 13؍ جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی دورہ آسٹریلیا پرٹسٹ سیریز میں 2-0 کی شکست برداشت کرنی پڑی ہے تاہم میزبان ٹیم کے سابق کھلاڑی مائیک ہیسی نے آسٹریلیا کو انتباہ دیا ہے کہ سہ رخی سیریز اورورلڈ کپ میں ونڈے کی چمپین ٹیم کو نظرانداز کرنے کی غلطی نہ کریں ۔ ہیسی نے کہا ہے کہ ہندوستانی ٹیم کے لئے سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ وہ گذشتہ 2 ماہ سے آسٹریلیا میں موجود ہے اور مہمان ٹیم کے کھلاڑی آسٹریلیا کے موسمی حالات اور یہاں کی وکٹوں کے برتاؤ سے اچھی طرح واقف ہوچکے ہیں اور ورلڈ کپ سے قبل ہندوستانی ٹیم کو سہ رخی سیریز میں شرکت کا موقع بھی مل رہا ہے جس کی تیسری ٹیم انگلینڈ ہے ۔ ان تمام حالات میں ہندوستانی ٹیم کو ورلڈ کپ سے قبل بہترین تیاری کا موقع مل رہا ہے اور کسی بھی ٹیم کو ہندوستان کو نظرانداز کرنے کی غلطی نہیں کرنی چاہئے ۔ ٹسٹ سیریز میں 2-0 کی شکست اور 4 مقابلوں کی اس سیریز میں ہندوستانی کھلاڑیوں کے مظاہروں کی بنیاد پر کوئی رائے قائم کرنا غلطی ہوگی کیونکہ ہندوستانی ٹیم محدود اوورس کی کرکٹ میں ایک مختلف ٹیم دکھائی دینے کے علاوہ ونڈے میں ایک پرعزم ٹیم بھی ہوتی ہے ۔ ٹسٹ سیریز میں ہندوستانی ٹیم کے مظاہروں پر اظہار خیال کرتے ہوئے آسٹریلیا کے مسٹر کرکٹ نے کہاکہ آسٹریلیا کے خلاف ٹسٹ سیریز میں ہندوستانی بیٹنگ شعبہ نے بہتر مظاہرہ کیا تاہم مہمان بولروں نے مایوس کیا ہے ۔ ہیسی کے بموجب اوپنر مرلی وجئے اور اجنکیا راہانے نے بہتر مظاہروں کے ذریعہ ویراٹ کوہلی کا بہترین ساتھ نبھایاہے اور اسطرح کے مظاہرے 2011 کے دورہ پر دکھائی نہیں دیتے تھے ۔ جبکہ نوجوان اوپنر لوکیش راہول کا آسٹریلیا کا دورہ کرنا اور اپنے ٹسٹ کریئر کی پہلی سنچری یہاں اسکور کرنا ہندوستانی ٹیم کے لئے مستقبل کا ایک روشن باب ہے ۔ ہیسی کے بموجب وہ یہ کہنے کی بھی ہمت بھی کریں گے کہ 2011 کے برعکس اس مرتبہ ہندوستانی بولنگ شعبہ بہتر تھا اور اس شعبہ میں کئی ایک بولر انفرادی طور پر باصلاحیت بھی تھے لیکن بولروں پر مشتمل بولنگ شعبہ مجموعی طور پر بہتر مظاہرہ کرنے میں ناکام ہوا ہے ۔ مہمان بولروں نے ڈسپلن کے ساتھ بولنگ نہیں کی اور اہم مواقع پر بہت زیادہ رنز دیئے لیکن ان تمام حقائق کے باوجود ہندوستانی بولروں کو اس دورہ سے بہت کچھ سیکھنے کا ملا ہے ۔ آسٹریلیا میں رواں ہفتہ ونڈے سیزن کا آغاز ہو رہا ہے جیسا کہ 16؍ جنوری کو سہ رخی سیریز کا پہلا مقابلہ ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان کھیلا جائیگا جس کے بعد آئندہ ماہ ورلڈ کپ کا آغاز ہوگا ۔ نیزان مقابلوں کے بعد ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ ڈنکن فلیچر کی کوچنگ کی معیاد بھی ختم ہوگی اور 2015 کے نئے سیزن کے لئے ہسیی کا نام ہندوستانی ٹیم کے کوچ کے لئے مضبوط امیدواروں میں شامل کیا جا رہا ہے ۔ اس ضمن اظہار خیال کرتے ہوئے ہسیی نے کہا ہے کہ یہ خبر ان کے لئے حیران کن ہے حالانکہ وہ ہندوستانی کپتان مہندر سنگھ دھونی کو ایک عرصے سے جانتے ہیں جس کے باوجود کوچنگ کے موضوع پر دھونی سے بھی تبادلہ خیال نہیں ہوا ہے ۔ ہیسی نے واضح کر دیا ہے کہ ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی کوچنگ کے لئے بی سی سی آئی سے کسی نے بھی ان سے رابطہ نہیں کیا ہے ۔ جبکہ ہندوستانی ٹیم کی کوچنگ میں اپنی دلچسپی کے متعلق ہیسی نے کہا کہ دیانتداری سے کہا جائے تو انہوں نے کبھی بھی اس تعلق سے نہیں سوچا ہے اور خصوصاً اپنے کیریئر کے اس موڑ پر ان کے ذہن میں کسی ٹیم کی کوچنگ کا خیال نہیں آیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT