Wednesday , December 13 2017
Home / کھیل کی خبریں / ٹوئنٹی 20 مقابلوں میں بھی ڈی آرایس متعارف

ٹوئنٹی 20 مقابلوں میں بھی ڈی آرایس متعارف

 

٭ کرکٹ میں بھی سرخ کارڈ کا استعمال ہوگا
٭ رن آؤٹ ، باؤنڈری پر ہوا میں کیچ پکڑنے اور بیاٹ کے سائز کیلئے قانون

نئی دہلی۔26 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام)کرکٹ میں اب 28 ستمبر سے انقلابی تبدیلیاں نظر آئیں گی جس میں سبھی طرز کے مقابلوں میں بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کیلئے نئے ضابطوں کو بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے منظوری دے دی ہے ۔آئی سی سی نے آج اعلان کیاہے کہ بین الاقوامی سطح کے سبھی مقابلوں میں نئے ضابطے اب 28 ستمبر سے نافذ ہوجائیں گے جس میں امپائر کے پاس مشتعل کھلاڑیوں کو میدان سے باہر بھیجنے ، بیٹ کا سائز طے کرنا، کیچ، رن آؤٹ اور ڈی آر ایس سے وابستہ کئی ضابطے اس میں شامل ہیں۔عالمی ادارے نے اعلان کیا ہیکہ یہ نئے ضابطے جنوبی افریقہ اور بنگلہ دیش نیز پاکستان اور سری لنکا کے مابین آئندہ ٹسٹ سیریز سے نافذ ہوں گے جبکہ ہندوستان اور آسٹریلیا کے مابین جاری ونڈے سیریز کے دوران ہونے والے بین الاقوامی میچ، بین الاقوامی سطح پر کھیلے جانے والے آخری مقابلے ہوں گے جو موجودہ ضابطوں کے تحت کھیلے جائیں گے۔ آئی سی سی نے اپنی زیادہ تر تبدیلیاں میلبورن کرکٹ کلب کے نئے کوڈ آف لاء کی بنیادی پر کی ہیں جسے اسی برس کے آغاز میں نافذ کیا گیا تھا۔ آئی سی سی کے جنرل منیجر (کرکٹ) جیوف الرائڈسن نے کہا کہ آئی سی سی نے اپنے کھیل کے فارمیٹ میں جو تبدیلیاں کی ہیں وہ خاص طور سے ایم سی سی کے نئے کرکٹ ضابطے کا نتیجہ ہے ۔ ضابطہ بیٹ کے سائز کو یقینی بنانا ہے ۔ اسی کے ساتھ اب بیٹسمینوںکو400 ایم ایم سے زیادہ چوڑے اور67 ایم ایم سے زیادہ موٹے بیٹس کے استعمال کی اجازت نہیں ہوگی۔امپائروں کو مشتعل کھلاڑی کو میدان سے باہر بھیجنے کا حق بھی حاصل ہوگا۔ فٹبال کی طرز پر ہی اب کرکٹ میدان پر موجود امپائروں کے پاس یہ حق ہوگا کہ وہ سرخ کارڈ سے مشتعل کھلاڑی کو جزوی یا مستقبل طور پر میدان سے باہر بھیج سکیں گے اور مخالف ٹیم کو پینالٹی رن دینے کا بھی حق ہوگا۔موجودہ ضابطوں کے تحت ٹیموں کے پاس ٹسٹ اننگز میں 80 اوور کے بعد دو ریفرل اور ونڈے میں ایک ریفرل کی اجازت ہے لیکن نئے ضابطوں کی بنیاد پر اب ٹیمیں ایل بی ڈبلیو کو لیکر تھرڈ امپائر کے پاس فیصلہ جانے اور اس میں کوئی تبدیلی نہ ہونے کے باوجود بھی ریفرل کا موقع نہیں گنوائیں گی۔ اس کے علاوہ ٹونٹی20 میں بھی ڈی آر ایس کا استعمال ممکن ہوپائے گا۔تھرڈ امپائروں کے لئے سردرد بنے ہوئے رن آؤٹ کے ضابطے میں بھی تبدیلی کی گئی ہے ۔ پہلے اگر بیٹسمین بیٹ کریز کے اندر پہنچ گیا ہے اور گیند کے اسٹمپ سے ٹکرانے کے وقت اگر اتفاق سے اس کا بیٹ ہوا میں اٹھ جاتا ہے تو اسے رن آؤٹ قرار دیا جاتا تھا لیکن نئے ضابطوں کے مطابق اگر بیٹ کریز میں ایک مرتبہ پہنچ جاتا ہے اور پھر گیند اسٹمپ سے ٹکراجاتی ہے اور اس وقت اگر بیٹ ہوا میں اٹھ بھی جاتا ہے تو اسے رن آؤٹ قرار نہیں دیا جائے گا۔باؤنڈری پر کیچ ہونے کے بارے میں بھی ضابطہ بنایا گیا ہے ۔اس کے تحت فیلڈروں کے لئے ضروری ہوگا کہ جب وہ گیند کو ہوا میں کیچ کریں تو وہ کیچ باؤنڈری کے اندر ہی لیا گیا ہو،بصورت دیگر اس کے لئے بیٹسمینوںکو رن دے دیا جائے گا۔ اس کے علاوہ اگر گیند فیلڈر یا وکٹ کیپر کے ہیلمٹ سے اچھل کر بھی لگی ہو تو بیٹسمین کو اسٹمپ، رن آؤٹ یا کیچ آؤٹ دیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT