Sunday , January 21 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹولی مسجد کاروان کی وقف اراضی پر غیر مجاز تعمیرات

ٹولی مسجد کاروان کی وقف اراضی پر غیر مجاز تعمیرات

شمشان گھاٹ کا بورڈ آویزاں ، چیف ایکزیکٹیو آفیسر کی حکام سے نمائندگی

شمشان گھاٹ کا بورڈ آویزاں ، چیف ایکزیکٹیو آفیسر کی حکام سے نمائندگی

حیدرآباد۔/6مئی ، ( سیاست نیوز) چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ نے کمشنر پولیس حیدرآباد، کلکٹر حیدرآباد اور کمشنر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کو علحدہ علحدہ مکتوب روانہ کرتے ہوئے ٹولی مسجد کاروان کے تحت موقوفہ اراضی کے تحفظ کیلئے اقدامات کرنے کی خواہش کی۔ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے خدمات انجام دینے والی پیس اینڈ ڈیولپمنٹ کمیٹی کاروان نے اس مسئلہ پر وقف بورڈ عہدیداروں کی توجہ مبذول کرائی تھی۔کمشنر پولیس کو روانہ کردہ مکتوب میں چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے بتایا کہ ٹولی مسجد کاروان وقف پراپرٹی ہے جوکہ 1985ء کے گزٹ میں درج ہے اور اس کے تحت 27ایکر 30گنٹے اراضی موجود ہے۔ انہوں نے شکایت کی کہ بعض افراد غیرقانونی اور غیر مجاز طور پر اوقافی اراضی پر تعمیراتی کام انجام دے رہے ہیں۔ اس سلسلہ میں وقف بورڈ سے کوئی اجازت حاصل نہیں کی گئی۔ ان تعمیرات کے سبب ٹولی مسجد کا احترام پامال ہوا ہے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے غیر مجاز تعمیرات کے ذمہ دار افراد کے خلاف فوری کارروائی اور تعمیری کام روکنے کی اپیل کی۔انہوں نے کمشنر پولیس سے خواہش کی کہ وہ کلثوم پورہ پولیس اسٹیشن کو اس بات کی ہدایت دیں کہ وہ اوقافی اراضی پر غیر مجاز تعمیرات کو فوری برخواست کریں اور خاطیوں کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کیا جائے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر وقف بورڈ نے کلکٹر حیدرآباد اور کمشنر جی ایچ ایم سی کو بتایا کہ اوقافی اراضی پر ناجائز تعمیرات کے علاوہ ہندو شمشان گھاٹ کا بورڈ آویزاں کردیا گیا ہے جس کے باعث مسلمانوں میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ انہوں نے کمشنر جی ایچ ایم سی اور کلکٹر حیدرآباد سے یہ خواہش کی کہ اس اوقافی اراضی کے تحفظ کے اقدامات کریں۔دکن وقف پروٹیکشن سوسائٹی کے قائد عثمان الہاجری نے وقف بورڈ عہدیداروں اور پیس اینڈ ڈیولپمنٹ کمیٹی کاروان کی بروقت کارروائی کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT