Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹکٹس نہ ملنے پر ان بے چاروں کے دل ٹوٹ گئے

ٹکٹس نہ ملنے پر ان بے چاروں کے دل ٹوٹ گئے

محمد غوث ، ذاکر باقری ، مٹھارو پاشاہ سخت ناراض ۔یاسر عرفات ، افسر خاں ، خواجہ بلال ، ماجد حسین بھی مایوس

محمد غوث ، ذاکر باقری ، مٹھارو پاشاہ سخت ناراض ۔یاسر عرفات ، افسر خاں ، خواجہ بلال ، ماجد حسین بھی مایوس
حیدرآباد ۔ 15 ۔ اپریل : ( پی ٹی این ) : ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پے دم نکلے بہت نکلے میرے ارماں لیکن پھر بھی کم نکلے یہ شعر آج کل مقامی جماعت کے کارکنوں اور قائدین پر صادق آتا ہے ۔ سب سے پہلے ہم حلقہ اسمبلی کاروان ، یاقوت پورہ ، نامپلی اور چارمینار اسمبلی حلقوں کی بات کرتے ہیں چونکہ عوام بہت باشعور ہیں سیاست میں وہ سیاستدانوں سے کہیں زیادہ ماہر ہوچکے ہیں ۔ اس لیے ہر مسئلہ پر ہم نے عوام کی رائے کو ہی اہمیت دینے کا فیصلہ کیا ہے کوئی اگر کسی حلقہ کے امیدوار کے بارے میں دریافت کرتا ہے تو ہم فوری اس امیدوار سے متعلق معلومات کے حصول کیلئے عوام سے رجوع ہوجاتے ہیں ۔ اب جبکہ انتخابی مہم زوروں پر ہے ۔ ناراض قائدین اور کارکنوں کی صفوں میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ اس تعلق سے عوام کیا کہتے ہیں آپ بھی جانئے … چارمینار حیدرآباد کی شان ہے ۔ یہ شہر کا وقار ہے اسمبلی میں حلقہ اسمبلی چارمینار کی تاریخ رہی ہے ۔ لیکن اس مرتبہ حلقہ میں مقامی جماعت کو ناراض قائدین نے پریشان کر رکھا ہے ۔ناراض قائدین میں شاہ علی بنڈہ کے کارپوریٹر محمد غوث سرفہرست ہیں ۔ محمد غوث لاڈ بازار کے تاجر ہیں اور حلقہ میں مقامی جماعت کے بااثر قائد ہیں ۔ لاڈ بازار میں بنگلس کے ایک تاجر نے اپنا نام نہ بتانے کی شرط پر بتایا کہ محمد غوث نے پارٹی کیلئے بہت کچھ کیا لیکن قیادت نے انہیں وعدے کے باوجود اسمبلی انتخابات میں ٹکٹ نہیں دیا ۔ جس پر محمد غوث کافی برہم ہیں ۔ انہوں نے اپنے استعفیٰ کا اعلان تک کردیا تھا لیکن حلقہ چارمینار کے بااثر و معزز شخصیتوں و علماء کی مداخلت پر اپنا فیصلہ واپس لیا ۔ محمد غوث کے ایک قریبی دوست جو خورشید جاہ کے رہنے والے ہیں نے بتایا کہ محمد غوث نے پارٹی کی کامیابی کیلئے ہمیشہ غیر معمولی سرگرمی کا مظاہرہ کیا ۔ ہر مصیبت میں چٹان کی طرح ٹہر گئے اور اس کا صلہ انہیں اسمبلی ٹکٹ دینے سے انکار کی شکل میں ملا ہے ۔ محمد غوث کے ایک اور ساتھی نے جو خود بنگلس اور موتیوں کا کاروبار کرتے ہیں بتایا کہ محمد غوث کے ساتھ اچھا نہیں ہوا ہے ۔ انہیں اسمبلی ٹکٹ نہ دے کر پارٹی قیادت نے اپنے پیر پر آپ کلہاڑی مارلی ہے اس حلقہ میں محمد غوث کا نوجوانوں پر اچھا اثر ہے ۔ حلقہ میں غوث بھائی کو ٹکٹ نہ دینے پر برہمی ہے ۔ حلقہ اسمبلی یاقوت پورہ میں رین بازار کارپوریٹر خواجہ بلال کے بارے میں مقامی نوجوانوں کا خیال ہے کہ انہیں اس مرتبہ اسمبلی انتخابات میں ٹکٹ حاصل کرنے کی امید تھی لیکن پارٹی قیادت نے ان کی امیدوں پر پانی پھیر دیا ۔ واحد کالونی کے نوجوانوں کے مطابق یاقوت پورہ سے ٹکٹ نہ ملنے پر خواجہ بلال مایوس ہیں لیکن پارٹی امیدوار کیلئے بادل نخواستہ کام کررہے ہیں ۔ اکثر نجی محفلوں میں خود خواجہ بلال کے دوست بھی یاقوت پورہ سے اپنے ساتھی کو ٹکٹ نہ ملنے پر برہمی کا اظہار کررہے ہیں ۔ کاروان میں جہاں ایک سیاسی نووارد کو ٹکٹ دیا گیا ہے ۔ سرگرم کارکنوں میں بے چینی پائی جاتی ہے ۔ قلعہ گولکنڈہ میں کئی افراد سے بات کرنے پر پتہ چلا کہ کوثر محی الدین کی کوئی پہچان نہیں ہے ۔ قلعہ گولکنڈہ میں شادی خانے چلانے والے ایک صاحب نے بتایا کہ قائدین میں ناراضگی پائی جاتی ہے لیکن کسی مجبوری کے باعث وہ انتخابی مہم چلا رہے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ناراض قائدین میں مٹھارو پاشاہ سرفہرست ہیں ان کا کہنا ہے کہ ڈینٹر کی حیثیت سے اپنے کیرئیر کا آغاز کرتے ہوئے ارب پتی بن جانے والے مٹھارو پاشاہ کا نام دراصل غلام محی الدین خاں ہیں چونکہ وہ گاڑیاں مٹھارنے کا کام کرتے تھے اس لیے بہت جلد مٹھارو پاشاہ کے نام سے مشہور ہوگئے ۔ ان صاحب نے یہ بھی کہا کہ مٹھارو پاشاہ کو جس نے بھی یہ نام دیا بہت سوچ سمجھ کر دیا ہے کیونکہ انہوں نے سیاست میں داخل ہو کر اپنی زندگی کی گاڑی کو اچھی طرح مٹھار لیا ہے ۔ مٹھارو پاشاہ کے پڑوسیوں کا کہنا ہے کہ مٹھارو پاشاہ کو امید تھی کہ افسر خاں کی بجائے مقامی جماعت انہیں ٹکٹ دے گی لیکن پارٹی نے جب اپنے امیدوار کے نام کا اعلان کیا تب سب حیران رہ گئے اور سب سے زیادہ حیرانی مٹھارو پاشاہ کو ہوئی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مٹھارو پاشاہ اس قدر ناراض ہے کہ خود کو پارٹی کی انتخابی مہم سے دور رکھے ہوئے ہیں انہیں گلپوشی کرکے زبردستی پیدل دوروں میں لے جایا جارہا ہے ۔ مٹھارو پاشاہ کی طرح کاروان میں عوام کا کہنا ہے کہ ذاکر باقری کارپوریٹر مراد نگر بھی پارٹی ٹکٹ کے دعویداروں میں شامل تھے اور انہوں نے کچھ عرصہ قبل ہی خود کو ایم ایل اے تصور کرنا شروع کردیا تھا لیکن ان کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ پارٹی قیادت نے کوثر محی الدین کو جماعت کا امیدوار بناکر انہیں مایوس کردیا ہے ۔ ٹپہ چبوترہ کے ایک بزرگ شہری نے سوال کیا کہ اس بے چارہ کو ٹکٹ ملتا تو کیا ہوتا ؟ آج ذاکر باقری بہت مایوس ہے اور بد دلی سے پارٹی کی انتخابی مہم میں حصہ لے رہے ہیں ۔ حلقہ اسمبلی کاروان میں افسر خاں کو مایوسی کا سامنا کرنا پڑا وہ چاہتے تھے کہ کم از کم اسے ٹکٹ دیا جائے جس کی وہ سفارش کریں لیکن افسر خاں کی ہر سفارش اور درخواست کو مسترد کردیا گیا ۔ افسر خاں نے خاموشی اختیار کر رکھی ہے ۔ حلقہ اسمبلی نامپلی کو لے کر بھی مقامی جماعتوں کے کئی قائدین سخت ناراض ہیں ۔ ملے پلی کے رہنے والے مقامی جماعت کے ایک سرگرم کارکن نے بتایا کہ یاسر عرفات نامپلی سے مقابلہ کرنے کے خواہاں تھے لیکن ان سے واضح طور پر کہدیا گیا کہ الیکشن بچوں کا کھیل نہیں جو ہر کوئی کھیل سکے ۔ خود یاسرعرفات کے ذرائع کے خیال میں معراج حسین کونامپلی سے ٹکٹ دینے پر مایوس ہیں لیکن دنیا کو دکھانے وہ تصاویر میں ضرور دکھائی دے رہے ہیں ۔ ورنہ ایک وقت ایسا تھا جب یاسرعرفات ایم ایل اے کی طرح لوگوں سے پیش آرہے تھے ۔ یاسرعرفات کی طرح نامپلی کے سابق ایم ایل اے وراثت رسول خاں بھی غصہ میں ہیں ۔ مقامی جماعت کے ہی ذرائع کا کہنا ہے کہ وراثت رسول خاں نے نامپلی میں پارٹی کا موقف کمزور کردیا اگر ان کی کارکردگی اچھی ہوتی تو اس قدر بھاگ دوڑ کرنی نہیں پڑتی ۔ ناراض قائدین میں عوام نظیر الدین کارپوریٹر کا نام بھی لے رہے ہیں لیکن وہ دیگرناراض قائدین کی حالت زار دیکھتے ہوئے خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں ۔ اس صف میں مئیر ماجد حسین بھی کھڑے دکھائی دے رہے ہیں ۔ فرسٹ لانسر کے نوجوانوں کا کہنا ہے کہ ماجد حسین کو امید تھی کہ حلقہ پارلیمان سکندرآباد سے انہیں امیدوار نامزد کیا جائیگا لیکن سیاسی مجبوریوں اور مبینہ معاملتوں کے نتیجہ میں ان کا نام امیدواروں کی فہرست سے نکالدیا گیا ۔ عوام کے خیال میں مئیر کے چہرہ پر مسکراہٹ دکھائی دے رہی ہے لیکن شائد ان کا دل رو رہا ہے ۔ بہر حال اگر کسی مزدور کو بھی اس کی محنت کا صلہ نہیں ملتا تو بغاوت کیلئے تیار ہوجاتا ہے یہ بے چارے تو جماعت کے کٹر حامی تھے اپنے ارمانوں پر پانی پھر جانے کے بعد ان کے دلوں پر خراش ضرور آئی ہوگی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT