Sunday , February 25 2018
Home / سیاسیات / ٹکٹوں کی تقسیم میں امیت ۔آنندی کے اندرونی اختلافات منظرعام پر

ٹکٹوں کی تقسیم میں امیت ۔آنندی کے اندرونی اختلافات منظرعام پر

بی جے پی ٹکٹ سے محروم قائدین میں ناراضگی ، 15موجودہ ارکان کے ناموں پر غور نہیں کیا گیا
نئی دہلی ؍ احمد آباد۔ 21 نومبر۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) گجرات اسمبلی انتخابات کیلئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ٹکٹ تقسیم کے بعد مچے گھمسان کے منظر نامے میں پارٹی کے قومی صدر امیت شاہ اور گجرات کی سابق وزیر اعلیٰ آنندی بین پٹیل کے درمیان اندرونی اختلافات سامنے آنے لگے ہیں۔پارٹی کے اندرون سے موصول خبروں کے مطابق شاہ اورپٹیل کے درمیان اختلاف کا خمیازہ انتخابات میں پارٹی کو بھگتنا پڑ سکتا ہے ۔ فی الحال پٹیل کے قابل اعتماد ساتھیوں کو پہلے ٹکٹ سے محروم کر دیئے جانے کے نقطہ نظر میں طاقت کا توازن شاہ کے حق میں لگتا ہے ۔ پٹیل کی بھتیجی اور ریاستی وزیر واسوبین ترویدی اور سابق وزیر آئی کے جڈیجہ کو بی جے پی نے اس بار ٹکٹ سے محروم کر دیا ہے ۔ سال 2002-2007 کے دوران نریندر مودی کے وزیر اعلی رہتے ہوئے ان کے کافی قریبی رہے جڈیجہ کو کنارے کر دیا جاناایک غیر متوقع اقدام سمجھا جا رہا ہے ۔ اس بار پارٹی نے ایک بڑے تاجر دھنجي بھائی پٹیل کو امیدوار بنایا ہے ۔ ایسے ہی ایک اور معاملے میں سابق تعلیم، خواتین و اطفال بہبود کی وزیر واسوبین ترویدی کو بھی بی جے پی قیادت نے اس بار ٹکٹ نہیں دیا۔بی جے پی کی مرکزی الیکشن کمیٹی نے 15 موجودہ ممبران اسمبلی کی ٹکٹ کے لئے درخواست پر غور ہی نہیں کیا اور انہیں پارٹی امیدوار نہیں بنایا گیا۔ پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ شاہ اور پٹیل کے درمیان سیاسی اختلافات 2012 سے پہلے بھی اس وقت ہوئے تھے جب مودی نے گجرات کے معاملات کو اپنے کنٹرول میں لے لیا تھا۔بی جے پی نے اب تک 182 ممبر اسمبلی والی ریاست میں 134 امیدواروں کا اعلان کردیا ہے۔انتخابات دو مرحلے میں 9 اور 14 دسمبر کو ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT