Friday , January 19 2018
Home / جرائم و حادثات / ٹکٹوں کے معاملہ میں مسلمانوں سے انصاف کا تیقن

ٹکٹوں کے معاملہ میں مسلمانوں سے انصاف کا تیقن

اقلیتی قائدین سراج الدین اور دیگر کی صدر پی سی سی تلنگانہ سے ملاقات

اقلیتی قائدین سراج الدین اور دیگر کی صدر پی سی سی تلنگانہ سے ملاقات

حیدرآباد ۔ 4 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا نے ٹکٹوں کی تقسیم میں مسلمانوں سے انصاف کرنے کا تیقن دیا جس پر پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ نے 6 اپریل کو منعقد ہونے والے زیڈ پی ٹی سی انتخابات کا بائیکاٹ کرنے کے فیصلے سے دستبردار ہوگئی ۔ مسٹر محمد سراج الدین نے تمام مسلمانوں کو کانگریس کے حق میں ووٹ کا استعمال کرنے کی اپیل کی ہے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا نے گاندھی بھون میں کانگریس کے اقلیتی قائدین کے ایک وفد سے ملاقات کی جس کی صدر پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر محمد سراج الدین نے قیادت کی ۔ وفد میں سکریٹری پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر عبدالغنی نائب صدر نشین اقلیتی ڈپارٹمنٹ مسٹر میر ہادی علی ، مسٹر اسمعیل الرب انصاری ، کنوینرس معراج خاں ، اعجاز خاں ، سینئیر قائد مسٹر خواجہ ذاکر الدین ، مسٹر حاجی موسیٰ قاسم کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے کانگریس کے اقلیتی قائدین کو تیقن دیا کہ ٹکٹوں کی تقسیم میں کانگریس پارٹی مسلمانوں سے انصاف کرے گی ۔ کانگریس ہی واحد جماعت جو سیکولرازم پر قائم رہتے ہوئے فرقہ پرستی کا منھ توڑ جواب دے رہی ہے گذشتہ 10 سال کے دوران اقلیتوں کی ترقی اور بہبود کے لیے جو بھی اقدامات کئے گئے ہیں اس کی ملک بھر میں مثال نہیں ملتی ۔ صدر پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر محمد سراج الدین نے کہا کہ ہم پارٹی میں ہمارا حق مانگ رہے ہیں ۔ 17 لوک سبھا میں ایک لوک سبھا اور 119 اسمبلی حلقوں میں صرف 12 اسمبلی حلقے مسلمانوں کو دینے کا جمہوری انداز میں احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کررہے ہیں ۔ مسلمانوں نے ہمیشہ کانگریس کا ساتھ دیا ہے ۔ کانگریس پارٹی کی بھی ذمہ داری ہے وہ مسلمانوں سے انصاف کریں ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا نے ٹکٹوں کی تقسیم میں انصاف کرنے کا تیقن دیا ہے ۔ جس پر ہم بھروسہ کرتے ہوئے زیڈ پی ٹی سی انتخابات کا بائیکاٹ کرنے کے فیصلے سے دستبردار ہورہے ہیں کانگریس کے مسلم قائدین کا ایک وفد دہلی پہونچ کر پارٹی ہائی کمان سے پھر ایک بار نمائندگی کرے گا ۔ وہ امید کرتے ہیں ٹکٹوں کی تقسیم میں مسلمانوں سے انصاف ہوگا اگر نہ ہونے کی صورت میں آپسی مشاورت کے ذریعہ مستقبل کی حکمت عملی کا اعلان کریں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT