Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی آرا یس کی مرکزی وزارت میں شمولیت کی تردید

ٹی آرا یس کی مرکزی وزارت میں شمولیت کی تردید

حیدرآباد۔ 18 ۔ فروری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی نے ٹی آر ایس کی مرکزی حکومت میں شمولیت کی اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیا۔ انہوں نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ حکومت مرکز سے زائد فنڈس کے حصول کی کوشش کر رہی ہے تاکہ تلنگانہ ریاست کی ہمہ جہتی ترقی یقینی ہو۔ انہوں نے کہا کہ مرکز اور ریاست

حیدرآباد۔ 18 ۔ فروری (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی نے ٹی آر ایس کی مرکزی حکومت میں شمولیت کی اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیا۔ انہوں نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ حکومت مرکز سے زائد فنڈس کے حصول کی کوشش کر رہی ہے تاکہ تلنگانہ ریاست کی ہمہ جہتی ترقی یقینی ہو۔ انہوں نے کہا کہ مرکز اور ریاست کا رشتہ باپ بیٹے کی طرح ہوتا ہے اور کوئی ایک بھی ناراض ہوجائے تو معاملات بگڑ جاتے ہیں۔ تلنگانہ حکومت مرکز سے ٹکراؤ کا راستہ اختیار کرنے کے حق میں نہیں ہے لہذا وہ اس بات کے لیے کوشاں ہے کہ سنہرے تلنگانہ کی تعمیر کیلئے مرکز سے زائد فنڈس حاصل ہوں۔ انہوں نے کہا کہ نئی ریاست کی ترقی کیلئے مرکز کا تعاون ضروری ہے ۔ اس سلسلہ میں چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کی وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کو سیاسی رنگ نہیں دیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کی مرکزی حکومت میں شمولیت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا اور اس طرح کی اطلاعات محض قیاس آرائیوں پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کو ٹی آر ایس کی تائید کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ بی جے پی کو مکمل اکثریت حاصل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ برقی ، پانی اور دیگر اہم شعبوں میں مرکز سے تعاون حاصل کرنے کی کوشش ہر ریاست کا حق ہے اور مرکز میں جو پارٹی بھی برسر اقتدار ہو اس کی ذمہ داری ہے کہ وہ ریاستی حکومتوں سے تعاون کرے۔ انہوں نے بتایا کہ مرکزی وزارت اقلیتی امور کے عہدیداروں سے ملاقات کے دوران انہوں نے مرکزی اسکیمات میں تلنگانہ کو زائد حصہ داری دینے اور زائد فنڈس جاری کرنے کی نمائندگی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر اقلیتی امور نجمہ ہپت اللہ سے وہ اس سلسلہ میں تفصیلی نمائندگی کرچکے ہیں۔ وقف بورڈ کی تقسیم کے سلسلہ میں تلنگانہ و آندھراپردیش کے عہدیداروں کے ساتھ ملاقات کے بعد مرکزی ٹیم نے ڈپٹی چیف منسٹر سے ملاقات کی۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے امید ظاہر کی کہ وقف بورڈ کی تقسیم کا عمل جلد مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے اقلیتی اسکیمات کے بارے میں محکمہ کی جانب سے مساجد میں آویزاں کئے جانے والے پوسٹرس اور فلیکسی کی تیاری میں تاخیر پر افسوس کااظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ تمام اسکیمات کی تفصیلات پر مشتمل پوسٹر کی تیاری کی ہدایت دے چکے ہیں لیکن اس کی تیاری میں 20 دن گزر گئے ۔ انہوں نے عہدیداروں کو اس کام کی جلد تکمیل کی ہدایت دی ۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ کی تقسیم کے بعد تلنگانہ وقف بورڈ میں درکار زائد اسٹاف کا تقرر کیا جائے گا ۔ اس کے علاوہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں پولیس اور محکمہ مال کا بھرپور تعاون حاصل رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT