Sunday , February 18 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ٹی آر ایس ،مجلس مسلمانوں کو گمراہ کررہے ہیں : کانگریس

ٹی آر ایس ،مجلس مسلمانوں کو گمراہ کررہے ہیں : کانگریس

چیف منسٹر کو مسلمانوں کا مسیحا قرار دینے والے تحفظات معاملہ پر حکومت سے جواب طلب کریں : گنگا دھر

نظام آباد :16؍ نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)پردیش کانگریس کے جنرل سکریٹری گڑ گو گنگادھر آج شام کانگریس بھون میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے فیصلہ ہر ٹی آرایس اور مجلس سے عوام کو جواب دینے کا مطالبہ کیا ۔ مسٹر گنگادھر نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں تحفظات کے مسئلہ پر فیصلہ لیتے ہوئے 50 فیصد سے زائد تحفظات نہ دینے کا حکومتوں کو انتباہ دیا ہے ٹی آرایس 2014ء میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا واضح طور پر اعلان کرتے ہوئے چیف منسٹر مسٹر چندر شیکھر رائو نے چار ماہ میں تحفظات فراہم کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن اس کی ابھی تک عمل آوری نہیں کی گئی اور اسمبلی میں قرار داد پیش کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو قرار داد روانہ کیا ہے جبکہ مرکز میں زیر اقتدار جماعت تحفظات کی فراہمی کیلئے ابھی تک کوئی اقدام نہیں کیا اور اسمبلی میں چیف منسٹر نے تحفظات فراہم کیلئے حکومت کی جانب سے سنجیدہ اقدامات کرنے کا ارادہ ظاہر کیا جس سے ملک کی جلیل القدر عدالت نے تحفظات 50 فیصد سے زائد نہ فراہم کرنے کی حکومتوں کو ہدایت دی ہے ایسے حالات میں کس طرح مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کئے جاسکتے ہیں ۔ چیف منسٹر نے تحفظات کی عدم فراہمی پر اپنے سر کو جدا کرلینے کا بھی اعلان کیا تھا کیا اس پر عمل پیرا ہے مسلمانوں کو تحفظات کے نام پر گمراہ کرنا بند کریں اور فوری اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے مسلمانوں سے معذرت خواہی کریں ۔ مسٹر گنگادھر نے مجلس اتحاد المسلمین پر بھی شدید تنقید کرتے ہوئے قائد مقننہ اکبر الدین اویسی سے مطالبہ کیا کہ اکبر الدین اویسی نے چیف منسٹر مسٹر چندر شیکھر رائو کی ستائش کرتے ہوئے مسلمانوں کا مسیحا کی حیثیت سے پیش کیا تھا اور کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے 70سال سے کانگریس مسلمانوں کو کچھ بھی نہیں دی کہے کر عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی تھی کانگریس کی ایک تاریخ ہے اور کانگریس نے 4 سال کے دورن میں ہندوستان کے صدر جمہوریہ کی حیثیت سے اور نائب صدر جمہوریہ کی حیثیت سے مسلمان کو کامیاب بنایا تھا اور مسلمانوں کیلئے کئی سہولتیں فراہم کی تھی جس کے کارنامہ عوا م کے سامنے موجود ہے ۔ کانگریس کے خلاف بیان بازی کرنے کے بجائے ٹی آرایس کے انتخابی اعلان پر ٹی آرایس سے دریافت کریں اور مسلمانوں کے ساتھ کئے گئے وعدے کی عمل آوری کیلئے دبائو ڈالیں ۔ ٹی آرایس اور مجلس دونوں مل کر مسلمانوں کو گمراہ کررہی ہے اور مجلس اتحاد المسلمین مسلمانوں کا سہارا لیتے ہوئے ہمیشہ اپنے مفادات کی تکمیل کی لیکن مسلمانوں کیلئے کوئی کام نہیں کیا مسلمانوں کے نام پر میڈیکل کالج اور انجینئرنگ کالج اور دیگر کئی تعلیمی ادارے قائم کیا لیکن کسی بھی غریب مسلمان کو مفت میں تعلیم نہیں دی اور مسلمانوں کے نام پر فائدہ اٹھاتے ہوئے مسلمانوں کو نظر انداز کرنے والے اکبر الدین اویسی ٹی آرایس سے تحفظات کے معاملہ میں جواب طلب کریں اور تحفظات کی فراہمی کیلئے پارٹی کی جانب سے جدوجہد کریں تو مسلمانوں کے ساتھ انصاف ہوگا ورنہ مسلمان کبھی بھی مجلس کو معاف نہیں کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ہمیشہ مسلمانوں کی مفادات کی تکمیل کیلئے اقدامات کرتی رہی اور آئندہ بھی تحفظات کے مسئلہ پر جدوجہد کو جاری رکھے گی ۔ اس موقع پر صدر ضلع اقلیتی سیل سمیر احمد ، سابق وقف کمیٹی صدر ماجد خان کے علاوہ دیگر اقلیتی قائدین بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT