Thursday , April 26 2018
Home / Top Stories / ٹی آر ایس ایم پیز کو مسلم تحفظات و دیگر مسائل اٹھانے کی ہدایت

ٹی آر ایس ایم پیز کو مسلم تحفظات و دیگر مسائل اٹھانے کی ہدایت

مرکز سے ٹکراؤ کے بغیر مسائل منوانے کا مشورہ ۔ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کا پارٹی قائدین کے ساتھ اجلاس
حیدرآباد ۔ 3 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن میں مسلم تحفظات ، زراعت کو اقل ترین قیمت ، کالیشورم کو قومی پراجکٹ قرار دینے احتجاج کرتے ہوئے مرکز پر دباؤ بنانے کا مشورہ دیا ۔ غذائی ملاوٹ کی روک تھام فوڈ پروسیسنگ صنعت کی حوصلہ افزائی اور غذائی اجناس کو اقل ترین قیمت کا جائزہ کے لیے کابینی سب کمیٹی تشکیل دی ۔ مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کی جانب سے پیش کردہ بجٹ پر ریاستی وزیر فینانس ایٹالہ راجندر کے بشمول ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ نے اپنی ناراضگی کا اظہار کیا تھا ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے آج پرگتی بھون میں ریاستی وزرا اور ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ کا اجلاس طلب کرتے ہوئے پارلیمنٹ میں ٹی آر ایس کے ادا کرنے والے رول کا جائزہ لیا ۔ اس اجلاس میں مرکزی بجٹ میں تلنگانہ سے ہوئی نا انصافیوں پر غور و خوض کرتے ہوئے مستقبل کی حکمت عملی تیار کی گئی ۔ مرکز سے ٹکراؤ اختیار کئے بغیر گذشتہ 4 سال سے ریاست کو مرکز کا جو تعاون حاصل ہوا ہے اس پر اظہار تشکر کرتے ہوئے دوسرے مسائل کو منوانے کے لیے مرکز کو مجبور کرنے پر زور دیا ۔ اسمبلی و کونسل میں مسلمانوں کو 12 فیصد اور قبائیلوں کے لیے 10 فیصد تحفظات فراہم کرنے کی جو قرار داد منظور کی گئی ہے اس پر پارلیمنٹ اجلاس کے دوران مرکز کو توجہ دلاتے ہوئے مسلمانوں اور قبائیلوں کو انصاف دلانے کے لیے آواز اٹھانے کی ہدایت دی ۔ کسانوں کی فلاح و بہبود کے لیے تلنگانہ حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیتے ہوئے غذائی اجناس کو اقل ترین قیمت حاصل کرنے کے لیے آواز اٹھانے اور اسی سیشن میں حکومت کو منوانے پر زور دیا ۔ چیف منسٹر نے بتایا کہ تلنگانہ حکومت زرعی شعبہ کو ترقی دینے کسانوں کی فلاح و بہبود کیلئے کئی عملی اقدامات کررہی ہے اور کئی اسکیمات کو روشناس کراچکی ہے ۔ زرعی شعبہ کو 24 گھنٹے مفت برقی سربراہ کی جارہی ہے ۔ بیج اور تخم سبسیڈی پر فراہم کئے جا رہے ہیں ۔ بڑے پیمانے پر آبپاشی پراجکٹس تعمیر کیے جارہے ہیں ۔ کسانوں کو 8 ہزار روپئے سرمایہ فراہم کرنے کی اسکیم کا آغاز کیا جارہا ہے ۔ کسان سمیتوں کی تشکیل عمل میں لائی جارہی ہے ۔ انہوں نے ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ کو کئی مسائل کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں موضوع بحث بنانے کا مشورہ دیا ۔ بجٹ میں جن چیزوں سے تلنگانہ محروم رہا ہے اس کو حاصل کرنے جدوجہد کرنے پر زور دیا ۔ کالیشورم پراجکٹ کو قومی پراجکٹ کا درجہ حاصل کرنے کے لیے آواز اٹھانے مشین بھاگیرتا ، ورنگل ٹیکسٹائیل پارک کے لیے فنڈز حاصل کرنے ، روزگار ضمانت اسکیم کو زرعی شعبہ سے مربوط کرنے امدادی اداروں کے لیے مرکز سے تعاون حاصل کرنے دونوں ایوانوں میں آواز اٹھانے کی ٹی آر ایس کے ارکان پارلیمنٹ کو ہدایت دی ۔ اس کے علاوہ ریاست میں غذائی اشیا میں کی جانے والی ملاوٹ کی روک تھام ، فوڈ پروسیسنگ صنعت کی حوصلہ افزائی ، زراعت کو اقل ترین قیمت حاصل کرنے کا جائزہ لینے کابینی کمیٹی تشکیل دی ۔ کمیٹی میں ریاستی وزراء پوچارام سرینواس ریڈی ، ایٹالہ راجندر ، ہریش راؤ ، اور کے ٹی آر کو بحیثیت ارکان شامل کیاگیا ۔ چیف منسٹر نے اجلاس میں زرعی سرگرمیوں کا بھی جائزہ لیا ۔ مستقبل کی حکمت عملی تیار کرنے کے لیے پلانٹیشن مشین ، ویڈرس مشین ، کسانوں کو سبسیڈی پر فراہم کرنے کا مشہورہ دیا ۔ 50 فیصد سبسیڈی پر پلانٹیشنس مشین ریاست کے تمام منڈلوں کو سربراہ کرنے کا مشورہ دیا ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے تلنگانہ کے 30 اضلاع میں کم از کم ہر اسمبلی حلقہ میں ایک کے حساب سے 100 فوڈ پروسیسنگ یونٹس قائم کرنے کی ہدایت دی ۔ موجودہ بننگ ملز کے ساتھ مزید بننگ ملز قائم کرنے رائس ملرس کلسٹرس قائم کرنے کے احکامات جاری کئے فوڈ پروسیسنگ یونٹس کے قیام کے لیے مرکز سے فنڈز حاصل کرنے پر زور دیا ۔

TOPPOPULARRECENT