ٹی آر ایس حکومت بے بھروسہ

محمد سراج الدین ریاستی صدر کانگریس اقلیتی سیل کا الزام

محمد سراج الدین ریاستی صدر کانگریس اقلیتی سیل کا الزام
آرمور۔/16مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) تلنگانہ ریاستی اقلیتی صدر کانگریس محمد سراج الدین نے کسی پروگرام کے بعد آرمور میں توقف کرتے ہوئے اردو صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ کانگریس پارٹی نائب صدر راہول گاندھی کی ریتو بھروسہ یاترا تلنگانہ کی عوام کو نئی سوچ دی ہے۔ عوام کو یہ احساس ہوچکا ہے کہ تلنگانہ میں ٹی آر ایس کو ووٹ دے کر اور مرکز میں بی جے پی کی حکومت کو منتخب کرکے غلطی کی ہے۔ بتایا کہ ٹی آر ایس حکومت ہندوتوا کے طرز کی حکومت ہے ۔ کے سی آر نے انتخابات کے دوران جھوٹے وعدے کرتے ہوئے اقتدار حاصل کیا۔ کسانوں کا قرض ایک لاکھ تک معاف کرنے کا وعدہ کیا وہ ابھی تک پورا نہیں ہوا لیکن کانگریس یو پی اے سرکار نے اقتدار پر آتے ہی کسانوں کے قرض معاف کئے۔ بتایا کہ عوام خاص کر اقلیتیں اس حکومت سے اپنا بھروسہ کھوچکے ہیں کے سی آر نے اپنے منشور میں وعدہ کیا تھا۔ اقلیتوں کو 12فیصد تحفظات دیئے جائیں گے لیکن اس کے لئے کوئی اقدام نہیں کیا گیا۔ اگر کیا جاتا تو سینکڑوں کی تعداد میں مسلم طلباء انجینئر، ڈاکٹرس و دیگر اعلیٰ تعلیم کیلئے منتخب ہوتے۔ اس طرح فیس کی ادائیگی اسکیم میں بھی اقلیتوں کے ساتھ ناانصافی کی جارہی ہے۔ ای زمرے کے سیٹ دیئے جارہے ہیں۔ سراسر ناانصافی ہے کہا کہ مائناریٹی بجٹ کو استعمال کئے بغیر واپس کردیا جارہا ہے اور آگے بتایا کہ ہم نے راہول گاندھی کے دورہ کے موقع پر بتایا کہ تلنگانہ میں مسلم مائناریٹیز محفوظ نہیں ہیں۔ نظام آباد میں پولیس حراست میں حیدرآبادی نوجوان کو ہلاک کیا گیا۔ ضلع ورنگل کے آلیر میں بے قصور زنجیروں میں جکڑے ہوئے 5مسلم نوجوانوں کو انکاؤنٹر کے نام پر شہید کردیا گیا۔ اس طرح تلنگانہ حکومت نے بھارتیہ جنتا پارٹی، آر ایس ایس کا بھی ریکارڈ توڑدیا۔ انہوں نے بتایا کہ ٹی آر ایس حکومت شادی مبارک اسکیم کیلئے اتنا بجٹ مختص نہیں کررہی ہے جتنا اس کے اشتہارات پبلسٹی کیلئے خرچ کیا جارہا ہے۔ ریاستی اقلیتی صدر کانگریس نے تلنگانہ حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے انتخابی منشور میں کئے گئے وعدوں کو عملی جامہ پہنائے ورنہ کانگریس پارٹی صدائے احتجاج بلند کرے گی اور ان وعدوں کو پورا کرواکے رہے گی۔اس پریس میٹ میں صدر اقلیتی ڈپارٹمنٹ تلنگانہ کے علاوہ ریاستی سکریٹری سید یوسف ہاشمی، ضلعی صدر اقلیتی ڈپارٹمنٹ نظام آباد، سمیر احمد اور دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT