Thursday , December 14 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ٹی آر ایس حکومت عوام دشمن پالیسیوں پر عمل پیرا

ٹی آر ایس حکومت عوام دشمن پالیسیوں پر عمل پیرا

محبوب نگر میں اندرماں ریتو باٹا پروگرام ، صدر پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی اور دیگر کا خطاب

محبوب نگر ۔ 21 ستمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ٹی آر ایس حکومت، عوام دشمن پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔ ان پالیسیوں کو عوام میں لے جاتیہوئے بے نقاب کیا جائے۔ مستقر محبوب نگر کے جے جے آر گارڈن میں منعقدہ اندرماں ریتو باٹا پروگرام میں بحیثیت مہمان خصوص مخاطب کرتے ہوئے گٹیا انچارج برائے ریاستی اُمور نے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس، عوام کے تمام طبقات کو دھوکہ دے رہی ہے۔ ٹی آر ایس اقتدار میں آنے کے بعد کتنی صنعتیں قائم ہوئیں اور کتنے بیروزگاروں کو روزگار فراہم کیا گیا، واضح کیا جائے۔ انہوں نے استفسار کیا کہ دلتوں کو 3 ایکر اراضی کی فراہمی کا وعدہ کیوں وفا نہیں ہوا؟ مرکز میں نریندر مودی اور تلنگانہ میں ٹی آر ایس دونوں عوام سے جھوٹے وعدے کرکے اقتدار پر ہیں۔ انہوں نے کانگریس کے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ کانگریس کے اقتدار میں جو فلاحی اسکیمات تھیں، اور عوام کو مستفید ہونے کے مواقع تھے، عوام کو اس سے واقف کروائیں۔ انہوں نے دیہی اور بوتھ سطح پر پارٹی کارکنوں کو پارٹی مستحکم کرنے کی ہدایت دی۔ دیہی سطح کے کارکنوں کے مسائل سے آگہی حاصل کرنے کیلئے ’’شکتی ایپ‘‘ شروع کیا گیا ہے۔ صدر پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی نے الزام لگایا کہ ٹی آرایس حکومت کسان کوآرڈینیشن کمیٹیوں میں صرف ٹی آر ایس کارکنوں کو ہی جگہ دے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو فی ایکر جو 4,000 روپئے دیئے جارہے ہیں۔ ہم اس کا خیرمقدم کرتے ہیں، لیکن ہمارا مطالبہ ہے کہ تمام کسانوں کو اس سے مستفید کیا جاسکے۔ حکومت اراضی کا جو سروے کروا رہی ہے۔ اس سے خول پر زراعت کرنے والوں کے ساتھ ناانصافی ہوگی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ مشن بھاگیرتا کے کاموں کیلئے جو فنڈز جاری کئے جارہے ہیں، وہ محض کمیشن کی خاطر جاری کئے جارہے ہیں، لیکن کسانوں کی بہبود کیلئے کوئی اقدام نہیں کیا جارہا ہے۔ اندرماں باٹا کا 100 روزہ پروگرام منعقد کیا جارہا ہے۔ اس دوران عوام سے ربط پیدا کرتے ہوئے حکومت کے ساتھ ساتھ گورنر اور دہلی کے اعلیٰ قائدین کو بھی واقف کروایا جائے گا۔ انہوں نے اعلان کیا کہ 28 ڈسمبر کو حیدرآباد میں بڑے پیمانے پر جلسہ عام منعقد کیا جارہا ہے جس میں سونیا گاندھی اور راہول گاندھی کو بھی مدعو کیا جارہا ہے۔ ریاستی کارگذار صدر بٹی وکرامارک نے کہا کہ کانگریس نے اپنے اقتدار میں کئی فلاحی اسکیمات جاری کئے۔ کانگریس نے کسانوں کی بہبود کیلئے قانون تک بنیاد ڈالا جیسے حصول اراضی قانون جنگلات، اراضی قانون تاکہ کسانوں کو ان کا پورا حق دیا جاسکے۔ حکومت دلتوں اور گریجنوں کو اراضی کی فراہمی کی بجائے، الٹا انہیں بے زمین کردینے کے اقدامات کررہی ہے۔ جلسہ سے سابق مرکزی وزیر جئے پال ریڈی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اراضی سروے سے کسانوں کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ ایم ایل اے گدوال ڈی کے ارونا نے کہا کہ کسان کوآرڈینیشن کمیٹی کے نام پر کسانوں کو دھوکہ دیا جارہا ہے۔ بتکماں تہوار کے موقع پر جو ساڑیاں تقسیم کی گئیں، عوام اس کے غیرمعیاری ہونے پر سخت ناراض ہیں۔ ایم ایل اے ونپرتی ڈاکٹر چنا ریڈی نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت کی اسکیمات سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں ہے جو بھیڑ تقسیم کئے گئے یا تو وہ فوت ہورہے ہیں یا پھر انہیں فروخت کردیا جارہا ہے۔ ایم ایل اے کلواکرتی ومشی چند ریڈی نے کہا کہ کانگریس کارکن گھر گھر پہنچ کر ٹی آر ایس کی بے اعتدالیوں سے عوام کو واقف کروائیں۔ ایم ایل اے عالم پور سمپت کمار نے کہا کہ پارٹی کارکن دیہی سطح پر حکومت کی غلط پالیسیوں پر راست سوال کریں۔ اس کے علاوہ پرگی ایم ایل اے رام موہن ریڈی، سابق ایم پی پرنم پربھاکر، قومی ایس سی سیل کے صدر کے راجو نے بھی مخاطب کیا۔ پروگرام میں ایم پی ناگرکرنول این یلیا، ایم ایل سی دامودھر ریڈی، سابق ایم ایل اے ملوروی، صدر ضلع کانگریس عبید اللہ کوتوال، سابق ایم ایل ایز چترنجن داس، ومشی کرشنا، پرتاپ ریڈی، چلا وینکٹ رام ریڈی کے علاوہ کانگریس کارکنوں کی بڑی تعداد شریک تھی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT