Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس حکومت کا سرکاری ملازمین کے ساتھ معاندانہ رویہ

ٹی آر ایس حکومت کا سرکاری ملازمین کے ساتھ معاندانہ رویہ

پی آر سی باقی ، ہیلت کارڈس غیر کارکرد ، صدر پی سی سی تلنگانہ اتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ /16 مارچ (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے سرکاری ملازمین کے مفادات کو نقصان پہونچانے کا تلنگانہ حکومت پر الزام عائد کیا ۔  9 ماہ گزرنے کے باوجود پی آر سی بقایا جات جاری نہ کرنے اور ہیلت کارڈ کارآمد نہ ہونے پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایمپلائیز یونین کے عہدوں پر ٹی آر ایس قائدین کا قبضہ ہونے کی وجہ سے ایمپلائیز اپنے حقوق سے محروم ہورہے ہیں ۔ آج میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ کی تحریک میں اہم رول ادا کرنے والے ایمپلائیز کو حکومت نظر انداز کرتے ہوئے ان کی توہین کررہی ہے ۔ حکومت نے سرکاری ایمپلائیز کیلئے تنخواہوں میں 43 فیصد کا اضافہ کیا مگر 9 ماہ گزرجانے کے باوجود آج تک پی آر سی بقایا جات جاری نہیں کئے ۔ اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ ٹی آر ایس حکومت کو ایمپلائیز سے کتنی ہمدردی ہے اور ایمپلائیز بھی اس پر سنجیدگی سے غور کریں ۔ کس کے دور میں ایمپلائیز کے ساتھ انصاف ہوا اس کا جائزہ لیں ۔ کانگریس حکومت نے /28 فبروری 2013 ء کو پی کے اگروال کی قیادت پی آر سی کمیٹی تشکیل دی گئی اور مکمل رپورٹ وصول ہونے سے قبل جی او ایم ایس 10 جاری کرتے ہوئے سرکاری ایمپلائیز کو 27 فیصد عبوری راحت فراہم کی گئی ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد دوبارہ ایمپلائیز کے احتجاج کے بعد حکومت نے /18 مارچ 2015 ء کو 27 فیصد عبوری راحت میں صرف 16 فیصد کا اضافہ کرکے 42 فیصد پی آر سی کا اعلان کیا اور تمام 43 فیصد پی آر سی ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے دیئے جانے کی تشہیر کرتے ہوئے ریاست کے عوام کو گمراہ کیا ۔ تلنگانہ حکومت نے بقایا جات پہلے بانڈ کی شکل میں دینے اور پھر بینک اکاؤنٹس میں جمع کرنے کا اسمبلی میں اعلان کیا مگر اس پر بھی عمل نہیں کیا گیا ۔ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد ایمپلائیز کی تقسیم کیلئے کمل ناتھ کمیٹی تشکیل دی گئی ۔ 21 ماہ گزرنے کے باوجود آندھراپردیش میں کام کرنے والے تلنگانہ ایمپلائیز کو آج تک واپس نہیں لایا گیا ۔ تلنگانہ ایمپلائیز کو جاری کردہ ہیلت کارڈس بھی کارآمد نہیں ہے ۔ تلنگانہ ایمپلائیز گزیٹیڈ آفیسرس تنظیموں کے صدر اور اعزازی صدر کے عہدوں پر ٹی آر ایس کا قبضہ ہوگیا ہے ۔ ان سے حکومت کے خلاف آواز اٹھانے کی کیسے امید کی جاسکتی ہے ۔
تلنگانہ ایمپلائیز کو ان مسائل پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہئیے ۔ اگر ایمپلائیز اپنے حقوق کیلئے جدوجہد کرتے ہیں تو کانگریس پارٹی اس کی بھرپور تائید کرے گی ۔

TOPPOPULARRECENT