Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس دور حکومت میں تلنگانہ سنہرے ریاست میں تبدیل ہونے سے قاصر

ٹی آر ایس دور حکومت میں تلنگانہ سنہرے ریاست میں تبدیل ہونے سے قاصر

کودنڈا رام پر تنقید ، پرجا تلنگانہ قائدین کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 15 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ کا حسین خواب اس لیے دیکھا گیا کہ اس ریاست کو آندھرائی تغلب سے ہٹا کر تلنگانہ جدوجہد کے ذریعہ ایک ایسی مثالی حکومت و ریاست کا قیام عمل میں لایا جائے جس کے ذریعہ یہاں کی عوام اطمینان و سکون کے ساتھ زندگی گذار سکے ۔ لیکن ٹی آر ایس نے اقتدار میں آکر تلنگانہ کے ان تمام خواب کو پورا ہونے نہیں دیا ۔ اور اپنے خاندان کو لے کر صرف من مانی کی روش ان چار سالوں سے اختیار کی جارہی ہے جس کے لیے اس ریاست کے تمام مسائل دھرنوں ، ریالیوں اور وقت کے وزیراعلیٰ اور ان کے کابینی رفقاء تک پہنچانے کے باوجود دھرے کے دھرے ہیں ۔ اس ریاست کے قیام کے لیے عرصہ دراز سے نہ صرف کوشش جاری تھی بلکہ طلباء نے اس ایجی ٹیشن میں بھر پور ساتھ دیا ۔ یہ بات آج جی اینیا کنوینر پرجا تلنگانہ ، ایم راجندر کنوینر ، سری سائیل ریڈی ، کو کنوینر اور وی وکرم کو کنوینر نے آج پریس کلب سوماجی گوڑہ میں اخبار نویسیوں کو بتائی ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کا حصول صرف ٹی آر ایس کی دین نہیں ہے بلکہ اس میں کئی سیاسی جماعتوں کے علاوہ دائیں اور بائیں بازو کی پارٹیوں نے بڑی سرگرمی سے حصہ لیا تب مرکز کو اس بات پر مجبور ہونا پڑا کہ وہ علحدہ ریاست تلنگانہ تشکیل دے ۔ انہوں نے کہا کہ صدر نشین جے اے سی پروفیسر کودنڈا رام کی جانب سے نئی سیاسی پارٹی کے اعلان پر جس طرح ٹی آر ایس اور ان کی ہمنوا پارٹیاں پریشانی کے عالم میں ہیں دراصل کودنڈا رام ان چار سالوں کے دوران اس بات کا جائزہ لیا کہ کے سی آر اپنے افراد خاندان اور چند کابینی رفقاء اور دیگر کو اعلیٰ عہدوں پر دیکھنے کے لیے اپنے تمام تر اختیارات کا استعمال کیا ہے اور وہ اس میں کامیاب ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کودنڈا رام اور ان کی نئی پارٹی سے ٹی آر ایس کو شدید نقصان ہونے کے خدشات لاحق ہوگئے ہیں اور طلباء کی ایک بڑی تعداد جے اے سی اور ان کی پارٹی میں شمولیت اختیار کرے گی ۔ اور اس بات کی قوی امید ہے کہ ان کی پارٹی مشن کاکتیہ ، 24 گھنٹے برقی سربراہی اور آبپاشی پراجکٹس کی تعمیر اور دیگر کسانوں کے لیے موثر اقدامات کی کوشش کرے گی ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ تلنگانہ کے نوجوان آج کے سی آر سے مختلف محکموں میں ملازمتوں کی فراہمی کا مطالبہ کررہے ہیں جو ان کے منصوبہ میں تھا ۔۔

TOPPOPULARRECENT