Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس لوک سبھا اور اسمبلی امیدواروں کی دوسری فہرست جاری

ٹی آر ایس لوک سبھا اور اسمبلی امیدواروں کی دوسری فہرست جاری

مسلم امیدوار نظرانداز، کے سی آر صدر ٹی آر ایس کا اجلاس، امیدواروں کی منظوری

مسلم امیدوار نظرانداز، کے سی آر صدر ٹی آر ایس کا اجلاس، امیدواروں کی منظوری

حیدرآباد۔/5اپریل،( سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹرا سمیتی نے آج لوک سبھا اور اسمبلی امیدواروں کی دوسری فہرست جاری کردی ہے۔ پارٹی صدر کے چندر شیکھر راؤ کی منظوری کے بعد لوک سبھا کے 8اور اسمبلی کے 4امیدواروں کے ناموں کا اعلان کیا گیا۔ لوک سبھا امیدواروں میں ٹی بھیم سین ( سکندرآباد) ڈاکٹر مندا جگنادھم ( ناگرکرنول ) ڈاکٹر بی نرسیا گوڑ ( بھونگیر) اے پی جتیندر ریڈی ( محبوب نگر ) بی ونود کمار ( کریم نگر ) کے وشویشور ریڈی ( چیوڑلہ ) اور ڈاکٹر پی راجیشور ریڈی ( نلگنڈہ) شامل ہیں۔ اسمبلی کے چار امیدواروں میں باجی ریڈی گوردھن ( نظام آباد رورل ) سی ایچ کنکا ریڈی ( ملکاجگیری) وائی انجیا یادو ( شاد نگر ) اور کے ششی دھر ریڈی ( کوداڑ ) شامل ہیں۔ واضح رہے کہ ٹی آر ایس نے کل 69امیدواروں پر مشتمل پہلی فہرست جاری کی تھی۔ الیکشن کمیٹی کے ارکان کے ساتھ چندر شیکھر راؤ نے آج اجلاس منعقد کرتے ہوئے دوسری فہرست کو منظوری دی ہے۔ پارٹی نے عام انتخابات میں تنہا مقابلہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حلقہ لوک سبھا سکندرآباد سے امیدوار بنائے گئے ٹی بھیم سین پیشہ سے ایڈوکیٹ ہیں اور تلگودیشم پارٹی کے پولیٹ بیورو رکن رہ چکے ہیں۔ وہ 2009انتخابات میں تلگودیشم پارٹی کے ٹکٹ پر ملکاجگیری لوک سبھا حلقہ سے مقابلہ کرچکے ہیں۔ محبوب نگر سے امیدوار بنائے گئے اے پی جتیندر ریڈی 1999ء میں اس حلقہ سے بی جے پی امیدوار کی حیثیت سے منتخب ہوچکے ہیں۔ انہوں نے 2006ء میں تلگودیشم میں شمولیت اختیار کی اور پھر 2010ء میں وائی ایس آر کانگریس سے وابستہ ہوگئے۔ ٹی آر ایس کے سربراہ چندر شیکھر راؤ فی الوقت محبوب نگر لوک سبھا حلقہ کی نمائندگی کرتے ہیں۔ پارٹی نے کریم نگر سے تعلق رکھنے والے سینئر قائد ونود کمار کو کریم نگر لوک سبھا حلقہ کا امیدوار بنایا ہے۔

وہ 2004ء میں لوک سبھا حلقہ ہنمکنڈہ سے منتخب ہوئے تھے جبکہ 2009ء میں انہیں کریم نگر میں کانگریس کے امیدوار پونم پربھاکر سے شکست ہوئی۔ سابق ریاستی وزیر اور تلگودیشم کے سینئر قائد کڈیم سری ہری کو ورنگل لوک سبھا حلقہ کا امیدوار بنایا گیا جنہوں نے گذشتہ سال ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کی اور پولیٹ بیورو رکن کی حیثیت سے پارٹی کے تنظیمی شعبہ کے انچارج ہیں۔ کونڈا وشویشور ریڈی ایک تاجر ہیں جنہیں چیوڑلہ لوک سبھا کی نشست دی گئی۔ وہ سابق ڈپٹی چیف منسٹر کونڈا وینکٹ رنگاریڈی کے نواسہ ہیں جن کے نام سے ضلع رنگاریڈی موسوم کیا گیا ہے۔ مندا جگنادھم 2009ء میں ناگرکرنول سے کانگریس کے ٹکٹ پر منتخب ہوئے لیکن اس مرتبہ وہ ٹی آر ایس کے ٹکٹ پر قسمت آزما رہے ہیں۔ نرسیا گوڑ پیشہ کے اعتبار سے ڈاکٹر ہیں جبکہ پی راجیشور ریڈی ماہر تعلیم اور کاکتیہ یونیورسٹی کے پروفیسر ہیں۔ یہ دونوں حال ہی میں ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں اور انہیں علی الترتیب بھونگیر اور نلگنڈہ لوک سبھا حلقوں سے امیدوار بنایا گیا ہے۔ ٹی آر ایس میں جمعہ کے دن شمولیت اختیار کرنے والے نظام آباد کے قائد باجی ریڈی گوردھن کو دوسرے ہی دن سابق صدر پردیش کانگریس ڈی سرینواس کے خلاف نظام آباد (رورل ) اسمبلی حلقہ سے امیدوار بنایا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT