Monday , November 19 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس میں مسلم قائدین و کارکن نظر انداز ، مسلم قائدین خود کشی پر مجبور

ٹی آر ایس میں مسلم قائدین و کارکن نظر انداز ، مسلم قائدین خود کشی پر مجبور

دھرما ورم میں محمد خورشید کی خود کشی، امجد اللہ خاں کا دورہ ، متوفی کے خاندان کو ایکس گریشیا کا مطالبہ
حیدرآباد۔15جنوری (سیاست نیوز) تلنگانہ راشٹر سمیتی میں مسلم قائدین و کارکنوں کو نظرانداز کیا جا رہاہے اور مسلم قائدین اس پالیسی کے سبب خودکشی پر مجبور ہونے لگے ہیں۔ ضلع نظام آباد کے علاقہ دھرمارم سے تعلق رکھنے والے تلنگانہ راشٹر سمیتی کارکن محمد خورشید کی خودکشی کی اطلاع پر جناب امجد اللہ خان خالد ترجمان مجلس بچاؤ تحریک نے تحریک کے وفد کے ہمراہ ان کے گھر پہنچ کر افراد خاندان کو پرسہ دیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ ان کے افراد خاندان کیلئے 25لاکھ روپئے ایکس گریشیاء منظور کیا جائے اور خودکشی کرنے والے محمد خورشید کے افردا خاندان میں ایک سرکاری ملازمت کی فراہمی کو یقینی بنایاجائے۔ انہوںنے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے اپیل کی کہ وہ فوری اس مسئلہ پر توجہ مبذول کریں کیونکہ پارٹی کارکن کی خودکشی کا یہ پہلا معاملہ نہیں ہے بلکہ سابق میں بھی تانڈور سے تعلق رکھنے والے مسلم قائد محمد ایوب نے بھی پارٹی کی جانب سے نظر انداز کئے جانے کی پالیسی کے خلاف ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ کی موجودگی میں خود کو نذرآتش کرلیا تھا اور اب خود چیف منسٹر کی دختر مسز کے کویتا کے حلقہ پارلیمنٹ میں خودکشی کا واقعہ پیش آیا ہے لیکن افسوس کے اب تک نہ متعلقہ رکن پارلیمنٹ نے محمد خورشید کے ارکان خاندان سے اظہار تعزیت کیا اور نہ ہی متعلقہ رکن اسمبلی باجی ریڈی گوردھن ریڈی نے مہلوک کے افراد خاندان سے ملاقات کی ۔ جناب امجد اللہ خان خالد نے بتایا کہ محمد خورشید رکن قانون ساز کونسل بھوپتی ریڈی کے قریبی رفقاء میں شمار کئے جاتے تھے۔ انہوںنے بتایاکہ طلاق ثلاثہ مسئلہ پر تلنگانہ راشٹر سمیتی کے ارکان پارلیمان کے موقف سے مسلمانو ںمیں برہمی پائی جاتی ہے اور مسلمانوں کی جانب سے تلنگانہ راشٹر سمیتی کے ارکان پارلیمان کو ان کے حلقوں میں عوامی احتجاج کا سامنا کرنا پڑے گا۔ترجمان مجلس بچاؤ تحریک نے کہا کہ تلنگانہ تحریک کے دوران جن مسلمانوں نے تلنگانہ راشٹر سمیتی کا ساتھ دیا ہے انہیں نظر انداز کرتے ہوئے ان لوگوں کو عہدے دیئے جانے کی شکایت عام ہوتی جا رہی ہے جو تشکیل تلنگانہ کے بعد ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں۔ جناب امجداللہ خان خالد نے کہا کہ کے سی آر اس مسئلہ پر فوری توجہ دیتے ہوئے پارٹی کے مسلم قائدین سے انتہائی اقدام نہ کرنے کی اپیل کریں اور انہیں انصاف کا تیقن دیں۔انہوں نے بتایا کہ تحریک تلنگانہ کے دوران ضلع نظام آباد کے مسلمانوں نے اپنا سرگرم رول ادا کیا ہے اس بات کو بھی فراموش نہیں کیا جانا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT