ٹی آر ایس میں کوئی داخلی اختلافات نہیں

وزیر داخلہ محمد محمود علی کا بیان ۔ جمعرات کو وزارت کی ذمہ داری سنبھالیں گے

حیدرآباد /18 ڈسمبر ( سیاست نیوز ) تلنگانہ راشٹریہ سمیتی ٹی آر ایس ایک ایسی جماعت ہے جو تمام مذہب سے تعلق رکھنے والے کے قائدین کا احترام کرتی ہے ۔ پارٹی میں ادب و احترام کا خاص خیال رکھا جاتا ہے ۔ چیف منسٹر کے چندرا شیکھر راؤ کی قیادت میں ہر ایک قائد اپنا اپنا فرض نبھا رہے ہیں ۔ ٹی آر ایس پارٹی میں نہ کوئی اختلافات ہیں اور نہ ہی کوئی گروپ بندی ہے ۔ کے ٹی آر کو ٹی آر ایس پارٹی کا ورکنگ پریسیڈنٹ کی حیثیت سے منتخب کئے جانے پر پارٹی کیڈر میں کافی مقبولیت حاصل ہوگئی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار وزیر داخلہ جناب محمود علی نے آج ان نمائندہ سیاست شہنواز بیگ سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ ایک ایسی معروف شخصیت ہیں جو ہر مذہب کے ماننے والے سیاسی قائدین اور لیڈران کو کافی عزت دیتے ہیں ۔ میں نے کبھی خواب میں نہیں سوچا تھا کہ مجھے وزیر داخلہ کی حیثیت سے منتخب کیا جائے گا ۔ یہ میری خوش قسمتی سمجھتا ہوں کہ مجھے پارٹی میں اتنا بڑا درجہ دیا گیا جس کیلئے میں کے سی آر کا ممنوں و مشکور ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ جمعرات 20 ڈسمبر کو درگاہ یوسفین پر حاضری دینے کے بعد وہ وزیر داخلہ کی حیثیت سے جائزہ لیں گے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ خواتین کی جان و مال کی حفاظت و تحفظ کیلئے شی ٹیموں میں مزید اضافہ کیا جائیگا ۔ لڑکیوں سے چھیڑ چھاڑ کرنے والے اشرار کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی اور جہیز کیلئے ہراساں کرنے والے افراد کو ہرگز بخشا نہیں جائے گا ۔فیملی کونسلنگ کے ذریعہ مسائل کی یکسوئی کی جائے گی ۔ شہر میں امن و امان کی برقراری کیلئے عوام سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ پولیس کے ساتھ بھرپور تعاون کریں ۔ محمود علی نے کہا کہ فرقہ وارانہ فسادات کو پھیلانے والے اشرار کے خلاف پی ڈی ایکٹ کے تحت مقدمات درج کئے جائیں گے ۔ شہر کے اطراف کے علاقوں میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ سوشیل میڈیا غلط گمراہ کن خبریں اور افواہیں پھیلانے والے افراد کے خلاف کرائم کے عہدیداروں کے ذریعہ ان کی شناخت کرتے ہوئے قانونی کارروائی کی جائے گی ۔

TOPPOPULARRECENT