Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس پر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا الزام

ٹی آر ایس پر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا الزام

حکومت عوامی اعتماد سے محروم ، کانگریس ایم پی سکھیندر ریڈی کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 16 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے ورنگل لوک سبھا ضمنی انتخاب ٹی آر ایس کے لیے یکطرفہ ہونے کا دعویٰ کرنے والے ٹی آر ایس قائدین پر تنقید کرتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کو چیلنج کیا کہ اگر ضمنی انتخاب یکطرفہ ہے تو اپنے وزراء کو حیدرآباد واپس طلب کرلیں ۔ انہوں نے حکمران ٹی آر ایس پر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے کا الزام عائد کیا ۔ آج گاندھی بھون میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کانگریس کے رکن پارلیمنٹ مسٹر جی سکھیندر ریڈی نے کہا کہ 16 ماہ میں ٹی آر ایس حکومت عوامی اعتماد سے محروم ہوگئی ہے ۔ ورنگل لوک سبھا حلقہ کے عوام مختلف مسائل پر وزراء اور ٹی آر ایس کے عوامی منتخب نمائندوں پر برہمی کا اظہار کررہے ہیں ۔ جس سے حکمران ٹی آر ایس بوکھلاہٹ کا شکار ہوگئی ہے ۔ اور ضمنی انتخاب یکطرفہ ہونے کی جھوٹی تشہیر کرتے ہوئے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ اس کے علاوہ کانگریس کے قائدین کو زبردستی ٹی آر ایس میں شامل کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ شامل نہ ہونے کی صورت میں ان کے مقدمات پر کارروائی کرنے یا نئے مقدمات درج کرتے ہوئے جیل بھیج دینے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں ۔ ٹی آر ایس کے قائدین اور وزراء بڑے پیمانے پر انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیاں کررہے ہیں۔ برسوں سے مخلوعہ کاکتیہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو نامزد کیا گیا ہے ۔ طویل عرصے سے طلبہ میس چارجس میں اضافہ کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ مگر کوئی اضافہ نہیں کیا گیا ضمنی انتخاب کے پیش نظر میس چارجس میں اضافہ کرنے کا اعلان کیا گیا ۔ ریاستی وزیر آبپاشی مسٹر ہریش راؤ نے ایک لاکھ سرکاری ملازمتوں کے لیے اعلامیہ جاری کرنے کا اعلان کیا ۔ ریاستی وزراء ورنگل کے عوام کو پھر ایکبار جھوٹے وعدے کرتے ہوئے انہیں دھوکہ دے رہے ہیں ۔ ان تمام واقعات کے خلاف کانگریس پارٹی کی جانب سے ریاستی الیکشن کمیشن کو شکایت کی گئی ہے ۔ آج کانگریس کا ایک وفد الیکشن کمیشن سے ملاقات کرتے ہوئے کانگریس کی جانب سے کی گئی شکایتوں پر کارروائی کے تعلق سے وضاحت طلب کرے گا ۔ ریاستی وزیر آئی ٹی و پنچایت راج کے ٹی آر کی جانب سے شکست ہونے پر کیپٹن اتم کمار ریڈی سے پردیش کانگریس کمیٹی کی صدارت سے استعفی دینے کے چیلنج پر پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے مسٹر جی سکھیندر ریڈی نے کہا کہ کے ٹی آر کو اس طرح کا چیلنج کرنے کا کوئی اخلاقی حق بھی نہیں ہے ۔ صدر وائی ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر جگن موہن ریڈی کی انتخابی مہم کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وائی ایس آر کانگریس پارٹی کا مقابلے میں ہونا معنی خیز ہے ۔ اصل مقابلہ کانگریس اور ٹی آر ایس کے درمیان ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT