Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس کو ورنگل کے دیہی علاقوں میں مخالفتوں کا سامنا: فاروق حسین

ٹی آر ایس کو ورنگل کے دیہی علاقوں میں مخالفتوں کا سامنا: فاروق حسین

حیدرآباد /10 نومبر (سیاست نیوز) کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین نے کہا کہ بہار کے عوام نے مودی اور فرقہ پرستی دونوں کو شکست دی ہے۔ بہار میں ایک بار پھر یہ ثابت ہوگیا کہ سیکولرازم پر فرقہ پرستی کو سبقت حاصل نہیں ہوسکتی۔ انھوں نے کہا کہ دہلی کے بعد بہار میں اچھے دن آئیں گے کی بجائے وزیر اعظم اور بی جے پی کے برے دن شروع ہو گئے ہیں۔ انھوں نے بہار میں کانگریس کے شاندار مظاہرہ کے لئے کانگریسیوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ورنگل لوک سبھا کے ضمنی انتخاب میں عوام کانگریس کو بھاری اکثریت سے کامیاب بناکر ٹی آر ایس اور بی جے پی کو محاسبہ پر مجبور کردیں گے۔ انھوں نے کہا کہ تلگودیشم کی تائید کے باوجود بی جے پی پر عوام بھروسہ نہیں کریں گے، کیونکہ ملک کے سیکولر عوام بی جے پی پر بھروسہ کرکے ملک کو نفرت کی آگ میں جھونکنے تیار نہیں ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دی، مگر ٹی آر ایس نے عوام سے جھوٹے وعدے کر کے اقتدار حاصل کیا، لیکن اپنے 17 ماہ کے دور حکومت میں ایک بھی وعدہ پورا نہیں کیا۔ انھوں نے کہا کہ وعدہ کے مطابق 12 فیصد مسلم تحفظات فراہم نہ کرنے کے سبب عوام میں ناراضگی ہے۔ کسانوں کی خودکشی کے واقعات سے کسان ناراض ہیں۔ دلتوں کو تین ایکڑ اراضی دینے اور بے گھر افراد کو ڈبل بیڈروم فلیٹ دینے کے وعدہ پر اب تک عمل آوری نہیں ہوئی، جس کی وجہ سے تلنگانہ بالخصوص ضلع ورنگل کے عوام ٹی آر ایس حکومت سے ناراض ہیں۔ انھوں نے کہا کہ انتخابی مہم کے سلسلے میں حلقہ لوک سبھا ورنگل کا دورہ کرنے والے ریاستی وزراء، ارکان اسمبلی، ارکان پارلیمنٹ اور ارکان قانون ساز کونسل کو عوام اپنے دیہاتوں میں داخل ہونے سے روک رہے ہیں اور وعدوں پر عمل آوری نہ ہونے کے سبب ناراضگی کا اظہار کر رہے ہیں، جب کہ کانگریس امیدوار سروے ستیہ نارائنا جہاں بھی جا رہے ہیں، عوام ان کا شاندرا استقبال کرتے ہوئے اپنے مسائل پیش کر رہے ہیں اور کانگریس کو کامیاب بنانے کا تیقن دے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT