ٹی آر ایس کی انتخابی وعدہ خلافی ، ریس کورس اور چنچل گوڑہ جیل منتقل نہ کرنے کا فیصلہ

گنجان آبادی کے علاقہ کو جوں کا توں برقرار رکھنے حکومت کا فیصلہ ، وزیر تعلیم کے اجلاس میں غور و خوص

گنجان آبادی کے علاقہ کو جوں کا توں برقرار رکھنے حکومت کا فیصلہ ، وزیر تعلیم کے اجلاس میں غور و خوص
حیدرآباد۔10ڈسمبر ( سیاست نیوز) اقتدار کے حصول سے قبل چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے پرانے شہر سے ریس کورس اور چنچل گوڑہ جیل کی منتقلی کا وعدہ کیا تھا لیکن اب ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے بموجب حکومت نے ریس کورس کی منتقلی کا منصوبہ ترک کردیا ہے ۔چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے انتخابات سے قبل کئے گئے اعلانات میں اس بات کا اعلان کیا تھا کہ تلنگانہ راشٹراسمیتی اقتدار حاصل کرنے کی صورت میں پرانے شہر کے علاقہ ملک پیٹ میں واقع ریس کورس کو شہر کے نواحی علاقہ میں منتقل کردیا جائے گا اور ملک پیٹ کے اس علاقہ کو تعلیمی مرکز کے طور پر فروغ دینے کے اقدامات کئے جائیں گے لیکن حکومت کی جانب سے اس منصوبہ کو ترک کردیئے جانے کی اطلاعات موصول ہورہی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ مختلف گوشوں کی جانب سے کئے جانے والے تنقیدوں کے علاوہ گنجان آبادی والے اس علاقہ کو جوں کا توں برقرار رکھنے کے مطالبہ کے پیش نظر حکومت نے یہ اقدام کیا ہے ۔ منصوبہ کو ترک کرنے کے متعلق کئے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے عہدیدار یہ کہہ رہے ہیں کہ ملک پیٹ کی تنگ سڑکیں اس بات کی اجازت نہیں دے رہی ہیں کہ ریس کورس کے مقام پر تعلیمی مرکز قائم کیا جائے ۔

ریاستی وزیر تعلیم مسٹر جی جگدیش ریڈی نے بھی اس مسئلہ پر عہدیداروں کے ہمراہ جائزہ اجلاس طلب کیا لیکن جو نتائج اجلاس کے برآمد ہوئے اس کے مطابق عہدیدار بھی اس بات کے حق میں نہیں ہے کہ حیدرآباد ریس کورس کو ملک پیٹ سے کسی اور مقام پر منتقل کیا جائے ۔ 127 ایکڑ اراضی پر محیط حیدرآباد ریس کلب نواب میر محبوب علی خان کے دور میں شروع کیا گیا تھا ۔18ویں صدی کے اس حیدرآباد ریس کلب کی منتقلی کے خلاف ریس کورس کے اعلیٰ عہدیدار و اہلکار حکومت سے نمائندگی کرچکے ہیں اور ریس کورس کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ مذکورہ 127ایکڑ اراضی نظام کی زرخرید جائیداد ہے اور اس جائیداد سے ریس کورس کی منتقلی معمولی عمل نہیں ہوگا ۔اس 127ایکڑ اراضی سے ریس کورس کو نواحی علاقوںمیں منتقل کرنا ہو تو سب سے پہلے حکومت کو شہر کے مرکزی مقام پر واقع 127ایکڑ اراضی بذریعہ خریدی حاصل کرنی ہوگی اور پھر اس کے متبادل ریس کورس کیلئے شہر کے نواحی علاقے میں 150تا 200ایکڑ اراضی کی فراہمی یقینی بنانی ہوگی ۔ علاوہ ازیں حیدرآباد ریس کلب کو ریس کورس کی تعمیر کیلئے 500تا 600کروڑ روپئے درکار ہوں گے ‘ جو کہ انتہائی دشوار کن ہے ۔

TOPPOPULARRECENT