Wednesday , August 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس کے تین راجیہ سبھا امیدواروں کو کل قطعیت

ٹی آر ایس کے تین راجیہ سبھا امیدواروں کو کل قطعیت

یادو طبقہ سے کئی دعویدار ، مسلم نمائندگی کی صورت میں محمد سلیم متوقع امیدوار

حیدرآباد 8 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ سے راجیہ سبھا کی تین نشستوں کیلئے ٹی آر ایس امیدواروںکے ناموں کا اعلان 10 مارچ کو کئے جانے کی توقع ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے بااعتماد رفقاسے امکانی امیدواروں کے ناموں پر ابتدائی مشاورت مکمل کرلی ۔ ایسے قائدین جو راجیہ سبھا کی رکنیت کے اہل ہوسکتے ہیں، ان کے بارے میں انٹلیجنس رپورٹ طلب کی گئی ہے۔ رپورٹ ملنے کے بعد چیف منسٹر 10 مارچ کو پارٹی قائدین کے اجلاس میں ناموں کو قطعیت دیں گے۔ تین امکانی امیدواروں میں ایک نام طئے سمجھا جارہا ہے۔ چیف منسٹر کے رشتہ دار و پارٹی جنرل سکریٹری سنتوش کمار کو راجیہ سبھا کی رکنیت تقریباً یقینی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر کی جانب سے ہری جھنڈی دکھائے جانے کے بعد سنتوش کمار نے درگاہ یوسفینؒ پر حاضری دی تھی ۔ سنتوش کمار کی امیدواری پر پارٹی کے ہر گوشہ میں مسرت کی لہر دیکھی گئی کیونکہ سنتوش کمار قائدین اور کارکنوں میں یکساں مقبول ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ قومی سیاست میں کے سی آر کے حصہ لینے کے اعلان کے پس منظر میں سنتوش کمار دہلی میں کے سی آر کے مددگار کی حیثیت سے دستیاب رہیں گے۔ قومی سطح پر تیسرے محاذ کی تشکیل کی تیاریوں کے سلسلہ میں پارٹی کے قومی جنرل سکریٹری ڈاکٹر کیشو راؤ کو مختلف جماعتوں سے مشاورت کی ذمہ داری دی گئی۔ تاہم سنتوش کمار چیف منسٹر کے خصوصی مشیر کی حیثیت سے فرائض انجام دیں گے۔ کے سی آر نے یادو طبقہ کو راجیہ سبھا کا ٹکٹ دینے کا اعلان کیا ہے اور اس سلسلہ میں کئی دعویدار میدان میں ہیں۔ تیسری نشست کیلئے اعلیٰ طبقات کی جانب سے مساعی کی جارہی ہے جن میں ریڈی طبقہ کا چیف منسٹر پر زیادہ دباؤ ہے، ان کا کہنا ہے کہ راجیہ سبھا میں ریڈی طبقہ کی تلنگانہ سے نمائندگی نہیں ہے جبکہ بی سی طبقہ سے کیشو راؤ اور ڈی سرینواس موجود ہیں۔ تیسری نشست مسلمانوں کو الاٹ کرنے چیف منسٹر سے نمائندگی کی گئی۔ تاہم انہوں نے اس سلسلہ میں اپنے موقف سے قریبی حلقوں کو آگاہ نہیں کیا۔ اگر کسی مسلمان کو راجیہ سبھا کا ٹکٹ دیا جاتا ہے تو ان میں صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم سرفہرست رہیں گے۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ چیف منسٹر نے باقی دو امیدواروں کے ناموں کے سلسلہ میں اپنا ذہن ابھی تک واضح نہیں کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT