Wednesday , December 19 2018

ٹی آر ایس کے سوامی گوڑ کونسل کے صدر نشین منتخب

حیدرآباد۔/2جولائی، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے امیدوار مسٹر سوامی گوڑ تلنگانہ قانون ساز کونسل کے صدر نشین منتخب ہوگئے۔ لمحہ آخر میں کانگریس نے ڈرامائی انداز میں مقابلہ سے دستبرداری اختیار کرتے ہوئے واک آؤٹ کیا۔ کانگریس کے ڈپٹی چیرمین بشمول 8ارکان اور تلگودیشم کے دو ارکان نے پارٹی وہپ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے سوامی گوڑ کو ووٹ دیا جبکہ تلگودیشم نے صدرنشین کے انتخاب کا بائیکاٹ کیا۔ تلنگانہ قانون ساز کونسل کے صدر نشین کے انتخاب کیلئے آج کونسل میں ڈرامائی مناظر دکھائی دیئے۔ کانگریس کے ڈپٹی فلور لیڈر مسٹر محمد علی شبیر نے صدر نشین کے انتخاب میں قوانین اور روایات کو نظرانداز کرتے ہوئے عجلت میں انتخاب کرانے کا الزام عائد کرتے ہوئے احتجاج کیا۔ انہوں نے اسمبلی سکریٹری کے ٹیبل پر موجود پیپرس کو بطور احتجاج پھاڑنے کی کوشش کی۔ ٹی آر ایس کے رکن قانون ساز کونسل مسٹر سدھاکر ریڈی نے محمد علی شبیر کے ہاتھ سے پیپرس چھین لینے کی کوشش کی، جس پر دونوں کے درمیان دھکم پیل ہوگئی۔ محمد علی شبیر نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکمران ٹی آر ایس ایوان میں من مانی کررہی ہے اور جمہوری انداز میں اس کی مخالفت کرنے پر اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کررہی ہے۔ قائد اپوزیشن مسٹر ڈی سرینواس نے انتخاب کو غیر جمہوری قرار دیتے ہوئے اس کو فوری ملتوی کرنے پر زور دیا۔ ڈپٹی چیرمین نے ڈی سرینواس کی تقریر کے دوران رائے دہی شروع کرنے کا اعلان کیا اور پہلا ووٹ ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمد محمود علی نے ڈالا۔)

کانگریس نے احتجاج درج کرایا اور ڈی سرینواس نے انتخاب سے دستبرداری اختیار کرنے اور واک آؤٹ کرنے کا اعلان کیا۔ کانگریس اور ٹی آر ایس ارکان کے درمیان نعرہ بازی شروع ہوگئی۔ کانگریس کے ارکان کے واک آؤٹ کرنے سے قبل ہی تلگودیشم پارٹی نے حکمران ٹی ار یس اور اصل اپوزیشن کانگریس پر صدر نشین کونسل کے انتخاب کیلئے اختیار کردہ رویہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے الیکشن کا بائیکاٹ کردیا۔ الیکشن کیلئے کانگریس پارٹی نے وہپ جاری کی تھی، کانگریس کے انتخاب سے دستبردار ہوجانے اور واک آؤٹ کرنے کے بعد ریاستی وزیر آئی ٹی مسٹر کے ٹی آر نے کانگریس اور تلگودیشم کے ارکان کو انسداد انحراف قانون سے بچانے کیلئے رائے دہی میں حصہ لینے کے بجائے ایوان سے باہر چلے جانے کا مشورہ دیا۔ بعد ازاں ہریش راؤ نے سکریٹری اسمبلی سے مشاورت کی۔ انہیں بتایا گیا کہ ایوان میں کورم کا ہونا لازمی ہے، پھر کانگریس اور تلگودیشم کے ارکان کو ایوان میں طلب کرتے ہوئے رائے دہی میں حصہ لینے کا مشورہ دیا گیا۔ جملہ 21ووٹ ڈالے گئے اور سارے کے سارے ووٹ ٹی آر ایس کے امیدوار مسٹر سوامی گوڑ کو حاصل ہوئے، ایک بھی ووٹ ضائع نہیں ہوا۔ کانگریس کے امیدوار مسٹر محمد فاروق حسین کو ایک بھی ووٹ حاصل نہیں ہوا۔ مجلس کے دو ارکان اور ایک آزاد امیدوار مسٹر ناگیشور راؤ نے ٹی آر ایس کے حق میں اپنا ووٹ استعمال کیا۔ ڈپٹی چیرمین ودیا ساگر نے سوامی گوڑ کے بحیثیت صدر نشین منتخب ہونے کا اعلان کیا۔

TOPPOPULARRECENT