Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / ٹی ایس آر ٹی سی ملازمین کا آج ڈپوز کے روبرو احتجاج

ٹی ایس آر ٹی سی ملازمین کا آج ڈپوز کے روبرو احتجاج

چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کے ریمارکس پر شدید برہمی ، آر ٹی سی جے اے سی کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 17 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن ملازمین یونینوں پر مشتمل جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے آر ٹی سی ملازمین کی تنخواہوں سے متعلق چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے ریمارکس کی سخت مذمت کی اور چیف منسٹر کے ان ریمارکس کے خلاف ٹی ایس آر ٹی سی کمیٹی نے 18 مئی کو ریاست بھر میں تمام بس ڈپوز کے روبرو آر ٹی سی ملازمین کی جانب سے سیاہ بیاچس لگا کر احتجاجی دھرنا منظم کرنے کا اعلان کیا ۔ کمیٹی قائدین مسرس کے راجی ریڈی ، کنوینر ، ہنمنتو مدیراج نے یہ بات کہی ۔ اسی دوران ٹی ایس آر ٹی سی نیشنل مزدور یونین صدر نشین مسٹر ایم ناگیشور راؤ صدر یونین کمل ریڈی ، نریندر اور مسٹر محمد مولانا نے الزام عائد کیا کہ محض آر ٹی سی انتظامیوں کی غلط پالیسیوں دور اندیشی کا فقدان کی وجہ سے ہی آر ٹی سی کو نقصانات سے دوچار ہونا پڑرہا ہے ۔ ان قائدین نے چیف منسٹر کی جانب سے آر ٹی سی ملازمین کی تنخواہوں کے مسئلہ پر کیے گئے ریمارکس پر شدید اعتراض کیا اور بتایا کہ سرکاری ملازمین ، الیکٹریسٹی ملازمین سنگارینی ورکرس کی تنخواہوں کے مقابلہ میں کم تنخواہیں حاصل کرنے والے صرف اور صرف آر ٹی سی ملازمین ہی ہیں ۔ لہذا معاشی طور پر پسماندہ آر ٹی سی ملازمین کو کم از کم 62 فیصد فٹمنٹ دینے کا حکومت سے مطالبہ کیا ۔ چیف منسٹر کے آر ٹی سی ملازمین کے تعلق سے کئے ہوئے ریمارکس تکلیف دہ ہیں اور ان ریمارکس سے آر ٹی سی ملازمین کو بھی تکلیف پہونچی ہے ۔ اسی دوران صدر تلنگانہ جنا سیمتی پروفیسر ایم کودنڈا رام نے کہا کہ ٹی ایس آر ٹی سی میں اصلاحات لانے پر ہی تمام مسائل حل ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے اس بات کا مشورہ دیا کہ آر ٹی سی ملازمین کی جانب سے ملازمین یونین قائدین کو ایک قدم آگے بڑھانا چاہئے ۔ ریاستی سی پی آئی سکریٹری مسٹر سی وینکٹ ریڈی نے آر ٹی سی ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کے مطالبہ کو چیف منسٹر غلط تصور کرلینے اور آر ٹی سی کو بند کردینے کا اظہار کرنا مسٹر چندر شیکھر راؤ کے آمرانہ طرز عمل کا تازہ ثبوت ہے اور چیف منسٹر کو آئندہ اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT