Thursday , November 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / ٹی ۔ 20 میں کامیابی آسٹریلیا کیلئے اہمیت کی حامل

ٹی ۔ 20 میں کامیابی آسٹریلیا کیلئے اہمیت کی حامل

ٹسٹ اور ونڈے چمپین تاحال ٹی20  چمپین شپ سے محروم : اِسمتھ
کولکتہ۔ 12 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) آسٹریلیا کے کپتان اسٹیو اسمتھ نے آئی سی سی ورلڈ ٹی۔ 20 میں اپنی ٹیم کی کامیابی کی اہمیت پر زور دیا ہے کیونکہ پانچ مرتبہ عالمی چمپین کے ریکارڈ کے ساتھ ٹسٹ کرکٹ اور ونڈے انٹرنیشنل ٹور میٹ میں عالمی نمبر ایک مقام رکھنے کے باوجود اس کے پاس ٹی 20 چمپین شپ کے خطاب کی کمی ہے۔ اسمتھ نے ٹی۔ 20 فور میٹ میں پانچویں مقام کی حامل اپنا ٹیم کے بارے میں کہا کہ ’’یہی (ٹی۔ 20) وہ واحد لڑائی ہے جو ہم سے دور ہے۔ ہم ہر ٹورنمنٹ اور ہر سیریز کھیلتے ہیں، وہ جیتنا چاہتے ہیں۔ ہم ایک اچھی طرح متوازن ٹیم ہیں۔ ہمارے پاس 15 کھلاڑی ہیں جو اس ٹورنمنٹ کو ایک صحیح دھکہ دے سکتے ہیں‘‘۔ آسٹریلیا کے کپتان نے یہاں پہونچنے سے قبل جنوبی آفریقہ میں 3-1 سے فتح حاصل کرنے والی اپنی ٹیم کے بارے میں کہا کہ ’’ہم نے جنوبی آفریقہ میں اچھا کھیلا اور سیریز جیت لی۔ کھلاڑیوں نے سخت محنت کی اور اچھے فارم میں ہیں اور اچھے فارم میں ہیں اور اس ٹورنمنٹ میں بہتر مظاہرہ کیلئے حوصلے بلند ہیں‘‘۔ آسٹریلیا کو نیوزی لینڈ میں صفر کے مقابلے 2 سے ٹسٹ سیریز جیتنے سے قبل ونڈے انٹرنیشنل سیریز میں ایک کے مقابلے 2 سے شکست ہوگئی تھی، لیکن اس ٹیم نے ورلڈ ٹی۔ 20 مکی تیاری کے طور پر جنوبی آفریقہ کا سفر کیا جہاں اس کو ایک کے مقابلے 2 سے کامیابی حاصل ہوئی۔

ٹورنمنٹ سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران اس سوال پر کہ آیا آپ ٹی۔ 20 فورمیٹ کو سنجیدہ نہیں سمجھتے؟ اسٹیو اسمتھ نے جواب دیا کہ ’’میں نہیں کہوں گا کہ ایسی کوئی بات ہے، لیکن ہماری بھاری مصروفیات کیا ہیں، بہت کرکٹ کھیلنا ہے۔ بسااوقات آپ اس فورمیٹ میں ٹسٹ اور ونڈے انٹرنیشنل کے بہتر زیادہ کھلاڑیوں کو کھیلتا ہوا نہیں دیکھتے ہیں‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’لیکن یقینا ہم ٹی۔ 20 کرکٹ بھی بہت زیادہ کھیلیں گے۔ ہم جانتے ہیں کہ کس طرح کھیلا جائے، اگر ہم اپنی صلاحیتوں کا بھرپور استعمال کرتے ہیں، تو ہم بھی ایک ایسی سخت ٹیم ثابت ہوسکتے ہیں جس کو ہرانا آسان نہیں ہوگا‘‘۔ آسٹریلیا کی ٹیم آل راؤنڈرس سے بھرپور ہے اور 26 سالہ اسٹیو اسمتھ نے کہا کہ ٹی۔ 20 کے چیلنج سے بھرپور فورمیٹ میں یہ تمام کھلاڑی اپنی ٹیم کے لئے اثاثہ ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہمارے تمام آل راؤنڈرس، بیٹنگ میں بھی کافی طاقتور ہیں اور یہی وہ بات ہے جس کی ٹی۔ 20 میں ضرورت ہوتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT