Saturday , May 26 2018
Home / سیاسیات / پارلیمانی ڈیموکریسی کے بارے میں کانگریس کا ریکارڈ داغدار

پارلیمانی ڈیموکریسی کے بارے میں کانگریس کا ریکارڈ داغدار

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختارعباس نقوی کا اہم اپوزیشن پارٹی پر الزام

نئی دہلی ۔ 21 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کا ٹریک ریکارڈ پارلیمانی جمہوریت کے بارے میں ’’داغدار‘‘ ہے اور اسے مرکزی حکومت کو اس بارے میں پند و نصیحت نہیں کرنی چاہئے۔ مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے آج کہا کہ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس میں تاخیر اس لئے کی جارہی ہیکہ مرکزی حکومت مبینہ اسکامس رافیل سودا اور جی ایس ٹی کے بارے میں گجرات اسمبلی انتخابات سے پہلے اپوزیشن کے سوالات کا سامنا نہیں کرنا چاہتی۔ کانگریس نے حکومت پر یہ الزام عائد کیا ہے لیکن ایک ایسی پارٹی کو جس کا ماضی کا ریکارڈ پارلیمانی جمہوریت کے بارے میں داغدار ہے، حکومت پر اس قسم کے الزامات عائد نہیں کرنے چاہئیں۔ وہ اہم انتخابی مدت کو ذہن میں رکھتے ہوئے فیصلے کیا کرتی تھی۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کانگریس زیرقیادت حکومتیں ہمیشہ ایسا کرتی رہی ہیں۔ کانگریس کا ماضی کا ریکارڈ پارلیمانی جمہوریت کے بارے میں انتہائی داغدار ہے۔ یہ ایسی پارٹی ہے جس نے ایمرجنسی کے دور میں پارلیمنٹ کو تالا ڈال دیا تھا۔ نقوی نے کہا کہ اس نے جمہوریت اقدار کو کچلا ہے اور جمہوری اداروں کو برخاست کیا ہے اس لئے بہتر ہیکہ وہ پارلیمانی جمہوریت کے بارے میں مرکز کی حکومت کو نصیحت نہ کرے۔ انہوں نے کہاکہ سیاسی پارٹیوں کے ارکان حکومت کو انتخابات کے بعد سرمائی اجلاس طلب کرنے کی تجویز پیش کرچکے ہیں کیونکہ تمام سیاسی پارٹیوں کے کارکن انتخابات کے سلسلہ میں مصروف ہیں۔ چنانچہ مرکزی حکومت نے سرمائی اجلاس کے انعقاد میں تاخیر کی ہے۔ کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر کچھ لوگ محسوس کرتے ہیں کہ انہیں ’’گجرات میں‘‘ کچھ نہیں کرنا ہے اور کانگریس محسوس کرتی ہیکہ کسی کو بھی اس کی گجرات میں موجودگی کی پرواہ نہیں ہوگی تو یہ کانگریس کا مسئلہ ہے۔ کانگریس نے آج الزام عائد کیا تھا کہ مودی حکومت نظرانداز کرنے، کچل دینے اور غداری کرنے کی حکمت عملی پر عمل پیرا ہے جو جمہوریت پر حملے کے مترادف ہے۔ کانگریس کے اس تبصرہ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے مختارعباس نقوی نے یہ بیان دیا۔
دہلی میں فضائی بہتری انتہائی ناقص
نئی دہلی ۔ 21 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کی ہوا کا معیار مسلسل تیسرے دن آج بھی انتہائی ناقص رہا اور عہدیداروں نے انتباہ دیا ہیکہ آئندہ دنوں میں صورتحال مزید ابتر ہوسکتی ہے۔ دہلی کے وزیرماحولیات عمران حسین نے چیف منسٹر دہلی کو اس بارے میں ایک مکتوب روانہ کیا ہے تاکہ دارالحکومت میں صورتحال کو بہتر بنایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT