Wednesday , September 19 2018
Home / سیاسیات / پارلیمانی کمیٹی کی وزارت اطلاعات اور سنسر سے رپورٹ طلبی

پارلیمانی کمیٹی کی وزارت اطلاعات اور سنسر سے رپورٹ طلبی

گجرات میں بھی امتناع، دستخطی مہم، ریلیں نذرآتش کرنے کرنی سینا کی اپیل
نئی دہلی ۔ 22 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت نے فلم پدماوتی کے بارے میں تحقیقات کیلئے ایک پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی ہے جس نے وزارت اطلاعات و نشریات اور سنسر بورڈ سے اس سلسلہ میں رپورٹ طلب کی ہے۔ یہ کمیٹی بی جے پی ارکان پارلیمنٹ جوشی اور برلا کی اس سلسلہ میں پیش کردہ درخواست کی بنیاد پر تشکیل دی گئی ہے۔ دریں اثناء بی جے پی زیراقتدار ریاست گجرات میں جہاں عنقریب اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں، پدماوتی پر امتناع عائد کردیا گیا ہے جبکہ چیف منسٹر ہریانہ منوہر لال کھٹر نے کہاکہ انہیں سنسر بورڈ کی جانب سے فلم کی نمائش کی اجازت کا انتظار ہے۔ لکھنؤ میں عدالت نے بھنسالی پر قانونی کارروائی کرنے کی درخواست پیش کی گئی ہے۔ بی جے پی رکن پارلیمنٹ شتروگھن سنہا نے خاموشی کو ترجیح دی اور سوالات کا جواب دینے سے انکار کردیا۔ بی جے پی نے ایک ریاستی قائد و جس نے بھنسالی اور دیپیکا پڈوکون پر حملہ کرنے والے کیلئے انعام کا اعلان کیا تھا، وجہ بتاؤ نوٹس جاری کردی ہے۔ کرنی سینا نے دریں اثناء فلم کے خلاف احتجاجی مہم کی قیادت کی اور اپنے جارحانہ تیور برقرار رکھے ہیں۔ اس نے فلم کے خلاف ایک دستخطی مہم کا آغاز کیا ہے جو فی الحال مغربی بنگال میں جاری ہے۔ دیپیکاپڈوکون نے اپنے تبصرہ میں کہاکہ کوئی بھی طاقت فلم کی نمائش روک نہیں سکتی۔ ڈائرکٹر بھنسالی نے حال ہی میں وضاحت کی تھی کہ فلم کے بارے میں بہت سی افواہیں پھیلائی جارہی ہیں حالانکہ فلم میں رانی پدماوتی اور علاء الدین خلجی کے کردار کا کوئی خواب کا منظر نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ راجپوت وقار اور عزت کا انہوں نے بے انتہاء خیال رکھا ہے۔ انہوں نے اپیل کی کہ فلم دیکھنے سے پہلے اس پر اعتراض نہ کیا جائے اور افواہوں پر یقین نہ کیا جائے۔ کرنی سینا نے ایک بار پھر اپیل کی ہیکہ فلم رانی پدماوتی کی ریلیں نذرآتش کردی جائیں۔

TOPPOPULARRECENT