Sunday , December 17 2017
Home / سیاسیات / پارلیمنٹ ،اسمبلی انتخابات 2024ء سے ایک ساتھ ممکن

پارلیمنٹ ،اسمبلی انتخابات 2024ء سے ایک ساتھ ممکن

نئی دہلی۔ 25اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام)الیکشن کمیشن کے وسائل کے طورپر تیار ہونے کے باوجود لوک سبھا اور راجیہ سبھاؤں کے انتخابات ایک ساتھ کرانے کا وزیراعظم نریندر مودی کا خواب 2019میں تو نہیں پورا ہوتا نظرآرہا ہے لیکن 2024سے یہ انتظام دو رمرحلوں میں نافذ ہونے کے آثار ہیں۔الیکشن کمیشن کے اعلی عہدے پر تعینات ذرائع کے مطابق ستمبر2018میں کمیشن کے پاس ضروری وسائل کے طورپر قریب 28لاکھ الیکٹرانک ووٹنگ مشین اور اتنی ہی وی وی پی اے ٹی مشینیں آجانے کا امکان ہے جس کے بعد لوک سبھا اور سبھی اسمبلی انتخابات ایک ساتھ کرانا ممکن ہوسکے گا۔حال ہی میں لوک سبھا اور سبھی اسمبلیوں کے انتخابات ایک ساتھ کرانے ہو تو قریب 1.60کروڑ اہلکاروں کی ضرورت پڑے گی۔ذرائع کے مطابق حکومت کے ساتھ ساتھ نیتی آیوگ نے بھی انتخابات ایک ساتھ کرانے کے سلسلے میں مختلف پارٹیوں میں سیاسی سطح پر ایک رائے قائم کرنے کی پہل کی ہے ۔فی الحال 2019 کے عام انتخابات میں ایسا ہونا شاید ہی ممکن ہو،لیکن 2024 کے عام انتخابات کے ساتھ آدھی ریاستوں کی اسمبلیوں کے انتخابات مکمل ہونے اور ڈھائی سال کے بعد بقیہ آدھی ریاستوں کی اسمبلیوں کے انتخابات کرائے جانے کے سلسلے میں اتفاق کیا جاسکتا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ لوک سبھا اور اسمبلی انتخابات ساتھ کرانے کے لئے آئینی اور سیاسی عمل بھی اشیا اور خدمات ٹیکس(جی ایس ٹی)نافذ کرنے جیسا ہی پیچیدہ مسئلہ ہے ۔اس کے لئے عوامی نمائندہ قانون میں تبدیلی کے ساتھ ساتھ آئین کے آرٹیکل 83،85،172،174اور 356میں ترمیم کرنی ہوگی۔پارلیمنٹ میں آئینی ترمیم کرنے کے ساتھ ملک کی کم از کم 15اسمبلیوں میں بھی اس ضمن میں بل پاس کرنے ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT