Wednesday , April 25 2018
Home / Top Stories / پارلیمنٹ میں بدستور شوروغل ، تحریک عدم اعتماد پیش نہ ہوئی

پارلیمنٹ میں بدستور شوروغل ، تحریک عدم اعتماد پیش نہ ہوئی

عراق میں 39 ہندوستانیوں کی ہلاکت کے بارے میں سشما سوراج کا دونوں ایوان میں بیان ۔ ٹامل و آندھرا کی پارٹیوں کا احتجاج جاری
نئی دہلی ۔ 20 مارچ ۔( سیاست ڈاٹ کام ) آندھراپردیش اور ٹاملناڈو سے تعلق رکھنے والی پارٹیوں کے شوروغل نے آج پارلیمنٹ میں لگاتار بارہویں روز کارروائی کو مفلوج کر رکھا جبکہ وزیراُمور خارجہ سشما سوراج نے دونوں ایوان کو عراق میں 39 لاپتہ ہندوستانیوں کی موت ہوجانے کی اطلاع دی ۔ لوک سبھا کو پہلے دوپہر تک اور پھر دن بھر کیلئے ملتوی کردینا پڑا کیونکہ کئی احتجاجی پارٹیوں نے اپنے شوروغل کے ذریعہ ایوان کو معمول کے کام کاج کے قابل نہیں رکھا ، جس پر اسپیکر سمترا مہاجن نے اعلان کردیا کہ وہ تحریک عدم اعتماد کا معاملہ شروع کرنے سے قاصر ہیں کیونکہ ایوان میں کچھ بھی نظم نہیں ہے ۔ راجیہ سبھا کو دن کی کارروائی کی شروعات کے اندرون 30 منٹ دن بھر کیلئے ملتوی کردیا گیا ، جہاں جیسے ہی ایوان کی کارروائی شروع ہوئی سشما سوراج نے از خود بیان دیتے ہوئے عراق میں ہندوستانیوں کی ہلاکت سے قوم کو واقف کروایا ۔ انھوں نے کہاکہ تمام 39 ہندوستانی جو تین سال قبل عراق کے شہر موصل میں دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس کے ہتھے چڑھ گئے تھے وہ تمام اب زندہ نہیں اور اُن کی نعشیں برآمد کی جاچکی ہیں۔ راجیہ سبھا میں جب سشما سوراج نے عراق میں ہلاک ہندوستانیوں کے بارے میں بیان دیا تب صدرنشین ایم وینکیا نائیڈو نے اسے نہایت غمناک خبر قرار دیا جس کے بعد ایوان بالا کے ارکان نے بطور سوگ اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر دو منٹ کی خاموشی منائی ۔ ان اموات پر دکھ کااظہار کرتے ہوئے اپوزیشن کے لیڈر غلام نبی آزاد نے حکومت کو یاد دلایا کہ اُس نے گزشتہ سال ہمیں تیقن دیا تھا کہ عراق میں ہندوستانی زندہ ہیں۔ راجیہ سبھا کی کارروائی کو دن بھر کیلئے ملتوی کرنے سے چند منٹ قبل ٹامل اور آندھرا کی پارٹیوں نے ہنگامہ کیا ، کانگریس نے پارلیمانی تعطل کیلئے حکومت کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے کہا کہ وہ تمام پارٹیوں کو ساتھ لے کر ایوان کی کارروائی چلانے کی کوشش نہیں کررہی ہے اور اس طرح ایوان میں بینکنگ فراڈ جیسے مسائل پر مباحث نہیں ہوپارہے ہیں ۔ غلام نبی آزاد نے کہاکہ وہ چاہتے ہیں کہ ایوان کی کارروائی چلے اور تین اہم مسائل پر مباحث منعقد ہوں جس کے ساتھ ساتھ بجٹ اور دیگر قانون سازی اُمور کی انجام دہی کو بھی آگے بڑھایا جائے ۔ اپوزیشن کی اکثریت نے غلام نبی آزاد سے بیان دینے کی خواہش کی جبکہ ٹامل پارٹیاں ڈی ایم کے اور آل انڈیا انا ڈی ایم کے کے ساتھ ساتھ ٹی ڈی پی کے بشمول آندھراپردیش کی پارٹیوں کے ارکان ایوان کے وسط میں پہونچ کر نعرہ بازی کرنے لگے ۔ اُن کے مطالبے ہیں کہ کاویری واٹر مینجمنٹ بورڈ تشکیل دیا جائے اور آندھرا کو خصوصی درجہ عطا کیا جائے ۔ اس شوروغل کے درمیان وینکیا نائیڈو نے کہاکہ دس اپوزیشن پارٹیوں بشمول کانگریس ، ٹی ایم سی ، ایس پی ، بی ایس پی ، ڈی ایم کے ، این سی پی ، سی پی آئی اور سی پی آئی (ایم) نے آج صبح اُن سے ملاقات میں اتفاق کیا تھا کہ ایوان کو معمول کی کارروائی چلانے کا موقع دیا جانا چاہئے ۔ لوک سبھا میں سشما سوراج شوروغل کی وجہ سے عراق میں ہندوستانیوں کی ہلاکت پر تفصیلی بیان دینے سے قاصر رہیں ۔ لوک سبھا اور راجیہ سبھا دونوں ایوان میں 5 مارچ سے جب پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن کے دوسرے نصف کا احیاء ہوا ،کوئی بھی قابل ذکر کام کاج نہیں ہوا ہے ۔ تحریک عدم اعتماد کیلئے کم از کم پچاس ارکان کی تائید ضروری ہے ۔ جب ایوان میں شوروغل ہو اور ارکان نشستوں سے کھڑے ہوں تو اُن کی گنتی کرنا مشکل ہوجاتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT