Monday , September 24 2018
Home / سیاسیات / پارلیمنٹ میں مسلم ارکان کی تعداد 24

پارلیمنٹ میں مسلم ارکان کی تعداد 24

نئی دہلی ، 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا میں اب مسلمانوں کی نمائندگی گھٹ گئی ہے جو 1952ء کے عام انتخابات کے بعد سے اب تک کی سب سے کم ترین تعداد ہے۔ نئی 16 ویں لوک سبھا میں صرف 24 مسلم ارکان پارلیمنٹ منتخب ہوئے ہیں جبکہ گزشتہ 15 ویں لوک سبھا میں 30 مسلم ارکان پارلیمنٹ تھے۔ اس طرح ایوان کی جملہ عددی طاقت کا 4.4 فیصد مسلم نمائندگی ہے۔ 1952ء میں پہل

نئی دہلی ، 17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا میں اب مسلمانوں کی نمائندگی گھٹ گئی ہے جو 1952ء کے عام انتخابات کے بعد سے اب تک کی سب سے کم ترین تعداد ہے۔ نئی 16 ویں لوک سبھا میں صرف 24 مسلم ارکان پارلیمنٹ منتخب ہوئے ہیں جبکہ گزشتہ 15 ویں لوک سبھا میں 30 مسلم ارکان پارلیمنٹ تھے۔ اس طرح ایوان کی جملہ عددی طاقت کا 4.4 فیصد مسلم نمائندگی ہے۔ 1952ء میں پہلی لوک سبھا کے اندر مسلم نمائندگی خاطرخواہ تھی۔ بعد کے برسوں میں مسلم ارکان کا تناسب 5 اور 6 فیصد رہا۔

1980ء کے انتخابات میں لوک سبھا کیلئے 49 مسلم ارکان منتخب ہوئے تھے یا یوں کہئے کہ ایوان میں 9.3 فیصد مسلم نمائندگی تھی۔ اب آنے والے ایوان میں اترپردیش سے کوئی بھی مسلم رکن پارلیمنٹ نہیں ہوگا۔ پہلی مرتبہ مہاراشٹرا سے بھی کوئی مسلم رکن منتخب نہیں ہوا جبکہ مہاراشٹرا میں قابل لحاظ مسلم آبادی ہے۔ اس مرتبہ صرف مغربی بنگال سے 8 مسلم ارکان، جموں و کشمیر سے 4، بہار سے 4، کیرالا سے 3، آسام سے دو، اور آندھرا پردیش ، ٹاملناڈو اور لکشادویپ سے ایک، ایک مسلم رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے ہیں۔ ان میں سے بلاشبہ جموں و کشمیر اور لکشادویپ میں مسلمانوں کی اکثریتی آبادی ہے۔ بی جے پی کے بھاگلپور سے امیدوار شاہ نواز حسین بھی انتخاب ہار گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT