Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / پارلیمنٹ میں وزیراعظم کے خلاف کانگریس کی مراعات شکنی نوٹس

پارلیمنٹ میں وزیراعظم کے خلاف کانگریس کی مراعات شکنی نوٹس

نئی دہلی ۔ 10 مئی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج لوک سبھا میں احتجاج کا انوکھا طریقہ اختیار کرتے ہوئے دھرنا منظم کیا۔ وزیراعظم نریندرمودی کی جانب سے سونیا گاندھی کو نشانہ بنائے جانے کا مسئلہ اٹھانے کی لوک سبھا میں اجازت نہیں دی گئی۔ پارٹی نے مراعات شکنی نوٹس پیش کی تھی۔ کانگریس ارکان بشمول قائد ایوان ملکا ارجن کھرگے، جیوترآدتیہ سندھیا، رنویت سنگھ اور رنجیت رنجن ایوان کے وسط میں دھرنا دے کر بیٹھ گئے اور احتجاج درج کرایا۔ اس وقت ایوان میں خشک سالی، پینے کے پانی اور دریاؤں کو باہم مربوط کرنے پر مباحث جاری تھے۔ ملکارجن کھرگے نے مسئلہ اٹھا یا اور کہا کہ ان کی پارٹی صبح سے اظہارخیال کی کوشش کررہی ہے لیکن انہیں موقع نہیں دیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے نوٹس دی اور رولنگ دی جانی چاہئے۔ کرسی صدارت نے کوئی رولنگ نہیں دی۔ انہوں نے کہا کہ یہ اہم معاملہ ہے کیونکہ حکومت ہمارے صدر کا نام لیکر توہین کررہی ہے۔ وزیراعظم کو ایوان کے باہر اس طرح کا بیان نہیں دینا چاہئے۔ وہ ایوان میں اظہارخیال کرسکتے تھے۔ کھرگے نے کہا کہ انکی پارٹی ایوان کی کارروائی کو متاثر کرنا نہیں چاہتی لیکن کرسی صدارت کو چاہئے کہ وہ نوٹس پڑھنے کی اجازت دیں۔ اس کے بعد کرسی صدارت ہی یہ فیصلہ کرے گی کہ اسے قبول کیا جائے یا مسترد کیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT