Monday , June 25 2018
Home / سیاسیات / پارلیمنٹ کے وقفہ سوالات میں خلل اندازی ، اجلاس ملتوی

پارلیمنٹ کے وقفہ سوالات میں خلل اندازی ، اجلاس ملتوی

نئی دہلی۔ 9 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ریل بجٹ پر ترنمول کانگریس ارکان کے برہم احتجاج نے لوک سبھا میں آج مسلسل دوسرے دن خلل اندازی پیدا کی اور یہ راجیہ سبھا تک بھی پہنچ گئی۔ پارلیمنٹ وقفہ سوالات کے دوران کوئی کارروائی نہیں کرسکی۔ کلیان بنرجی اور ابھیشیک بنرجی کی زیرقیادت پلے کارڈس اٹھائے ہوئے ترنمول کانگریس کے ارکان ایوان کے وسط میں جم

نئی دہلی۔ 9 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ریل بجٹ پر ترنمول کانگریس ارکان کے برہم احتجاج نے لوک سبھا میں آج مسلسل دوسرے دن خلل اندازی پیدا کی اور یہ راجیہ سبھا تک بھی پہنچ گئی۔ پارلیمنٹ وقفہ سوالات کے دوران کوئی کارروائی نہیں کرسکی۔ کلیان بنرجی اور ابھیشیک بنرجی کی زیرقیادت پلے کارڈس اٹھائے ہوئے ترنمول کانگریس کے ارکان ایوان کے وسط میں جمع ہوگئے۔ وہ لوک سبھا کے اجلاس کا آغاز ہوتے ہی ریل بجٹ میں مغربی بنگال کے لئے ’’انصاف‘‘ کا مطالبہ کرتے ہوئے نعرہ بازی کررہے تھے۔ وہ کل پارٹی کی خاتون رکن پارلیمنٹ پر حملے کی مذمت بھی کررہے تھے۔ پلے کارڈس پر تحریر نعرے کچھ اس طرح تھے ’’اپوزیشن ارکان پارلیمنٹ پر لوک سبھا میں برسراقتدار پارٹی کی جانب سے غیرجمہوری حملوں کی ہم مذمت کرتے ہیں‘‘، ’’ریلوے بجٹ میں بنگال کا حصہ کیا ہوا؟‘‘ ، ’’مہنگائی ہٹاؤ ، دیش بچاؤ‘‘ وغیرہ۔ اسپیکر سمترا مہاجن نے ایوان کے اندر پلے کارڈس لہرانے پر اعتراض کیا اور احتجاجی ارکان کو انتباہ دیا کہ وہ سخت کارروائی پر مجبور نہ کریں، کیونکہ ایوان پارلیمنٹ میں پلے کارڈس ساتھ لانے کی اجازت نہیں ہے۔ سمترا مہاجن نے احتجاجی ارکان سے کہا کہ وہ پلے کارڈس ساتھ لانے والے ارکان کو انتباہ دیتی ہیں کہ وہ اپنی نشستوں پر واپس ہوجائیں۔ ریل بجٹ پر مباحث کے دوران آپ کوئی بھی مسئلہ اُٹھا سکتے ہیں۔ تمام ارکان پارلیمنٹ باقاعدگی سے خبر نامے وصول کررہے ہیں جن میں واضح طور پر تحریر ہے کہ ایوان پارلیمنٹ میں پلے کارڈس کی اجازت نہیں ہے، تاہم ترنمول کانگریس کے ارکان اپنے موقف پر اٹل رہے، اور نعرہ بازی جاری رکھی۔ کچھ دیر تک پلے کارڈس بھی لہراتے رہے۔ ترنمول کانگریس کے ارکان نے احتجاج کے دوران جو نعرے لگائے، وہ اس طرح تھے: ’’وزیراعظم ہائے ہائے‘‘ ، ’’پارلیمنٹ پر بی جے پی کی غنڈہ گردی نہیں چلے گی‘‘، ’’وزیراعظم جواب دو‘‘ اور ’’ممتا بنرجی زندہ باد‘‘۔ کیرالا کے بعض ارکان پارلیمنٹ بھی مبینہ طور پر ریل بجٹ میں ان کی ریاست کے ساتھ تعصب برتنے کا الزام عائد کرتے ہوئے احتجاج کررہے تھے۔ کلیان بنرجی نے اسپیکر پر تنقید کرتے ہوئے کچھ قابل اعتراض تبصرے کئے تو پورا برسراقتدار اتحاد اٹھ کر کھڑا ہوگیا۔ احتجاج کرنے لگا، جس کی وجہ سے پارلیمنٹ کا اجلاس دوپہر تک ملتوی کردیا گیا۔ راجیہ سبھا میں اپوزیشن پارٹیوں بشمول کانگریس اور ترنمول کانگریس نے ایوان زیریں کے کل کے بدنما واقعہ کے خلاف احتجاج کیا۔ ارکان کا احتجاج جاری رہا، تاہم شوروغل کی وجہ سے کچھ بھی نہیں سنا جاسکا۔ کانگریس نے الزام عائد کیا کہ ریلوے بجٹ کا اخبارات کے ذریعہ پہلے ہی افشا ہوچکا تھا۔دیگر پارٹیوں کے ارکان بھی اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر احتجاج کرتے ہوئے دیکھے گئے۔ قبل ازیں دو نئے ارکان پربھاکر کورے اور ڈی اوپیندر ریڈی نے عہدہ اور رازداری کا حلف لیا۔ حالانکہ اسپیکر نے نوٹسوں کا جائزہ لینے کا تیقن دیا، لیکن وقفہ سوالات کی کارروائی جاری رکھنے کی اجازت دینے ارکان سے اپیل کی تاہم ارکان نے اٹل موقف اختیار کیا۔

TOPPOPULARRECENT