Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / پالیرو میں ٹی آر ایس کو سخت مقابلہ درپیش

پالیرو میں ٹی آر ایس کو سخت مقابلہ درپیش

وزیر آئی ٹی کے ٹی راما راؤ کی سرگرم مہم ، انتخابی حلقہ میں ہی قیام
حیدرآباد۔/12مئی، ( سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی و بلدی نظم و نسق کے ٹی راما راؤ نے کھمم کے عوام سے اپیل کی کہ وہ ترقی کیلئے ووٹ دیں۔ انہوں نے کھمم کے پالیرو اسمبلی حلقہ کے کئی علاقوں میں ٹی آر ایس کی انتخابی مہم میں حصہ لیا اور رائے دہندوں سے خطاب کیا۔ کے ٹی آر ضمنی چناؤ کی انتخابی مہم کے انچارج ہیں اور وہ پالیرو میں مستقل قیام کرتے ہوئے انتخابی مہم کی راست طور پر نگرانی کررہے ہیں۔ کانگریس کو تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی تائید کے سبب ٹی آر ایس کیلئے یہ حلقہ وقار کا مسئلہ بن چکا ہے۔ کے ٹی آر نے پارٹی امیدوار ٹی ناگیشورراؤ کے ہمراہ عوام سے ملاقات کی اور حلقہ کو مثالی ترقی دینے کیلئے ٹی آر ایس کو کامیاب بنانے کی اپیل کی۔ انہوں نے حالیہ عرصہ میں ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرنے والے عوامی نمائندوں اور قائدین کو انتخابی مہم میں شامل کیا ہے تاکہ کارکنوں کو متحرک کیا جاسکے۔ کے ٹی آر نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ پالیرو اسمبلی حلقہ کھمم کا ایک مثالی ترقیافتہ حلقہ بنے گا جس کی ذمہ داری ٹی ناگیشورراؤ پر ہوگی جو ریاستی کابینہ میں وزیر بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ناگیشورراؤ ایک تجربہ کار سیاستداں ہیں اور چیف منسٹر کی سرپرستی میں پالیرو حلقہ کے بنیادی مسائل کی یکسوئی عمل میں آئے گی۔ کے ٹی آر نے کانگریس اور تلگودیشم کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ سیاسی فائدہ کیلئے دونوں پارٹیوں نے ناپاک اتحاد کیا ہے جبکہ تلگودیشم پارٹی کے قیام کا مقصد ہی کانگریس کی مخالفت ہے۔ انہوں نے کہا کہ تینوں جماعتوں کے اتحاد کے باوجود ٹی آر ایس کی کامیابی کو کوئی بھی طاقت روک نہیں پائے گی۔ کے ٹی آر نے صدر پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی پر الزام عائد کیا کہ وہ پارٹی کی شکست کے خوف سے بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکے ہیں۔ انہوں نے پھر اس چیلنج کا اعادہ کیا کہ اگر ٹی آر ایس کو شکست ہوتی ہے تو وہ وزارت سے مستعفی ہوجائیں گے بصورت دیگر اتم کمار ریڈی کو پردیش کانگریس کی صدارت سے مستعفی ہونا پڑے گا۔

TOPPOPULARRECENT