Wednesday , December 19 2018

پانچ زیر دریافت نوجوانوں کی ہلاکت ‘سفاکانہ قتل

علیگڈھ 13 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین نے پانچ مسلم زیر دریافت قیدیوں کی تلنگانہ میں پولیس کی جانب سے فرضی انکاؤنٹر میں ہلاکت کو تحویل کی موت قرار دیتے ہوئے پولیس کارروائی کی مذمت کی ہے ۔ علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین کی جانب سے یونیورسٹی کے احاطہ میں اس فرضی انکاؤنٹر کے خلاف احتجاج منظم کیا گی

علیگڈھ 13 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین نے پانچ مسلم زیر دریافت قیدیوں کی تلنگانہ میں پولیس کی جانب سے فرضی انکاؤنٹر میں ہلاکت کو تحویل کی موت قرار دیتے ہوئے پولیس کارروائی کی مذمت کی ہے ۔ علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین کی جانب سے یونیورسٹی کے احاطہ میں اس فرضی انکاؤنٹر کے خلاف احتجاج منظم کیا گیا ۔ یونین نے کہا کہ اس کے خیال میں یہ نوجوانوں کا سفاکانہ قتل ہے اور پولیس ایک فرضی کہانی پیش کر رہی ہے ۔ یونین نے کہا کہ یہ فرضی انکاؤنٹر در اصل پولیس کی انتقامی کارروائی ہے اور اس میں ملوث پولیس عہدیداروں کے خلاف مقدمہ درج کرکے کارروائی کی جانی چاہئے ۔ علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین کے صدر عبداللہ اعظم نے احتجاجیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے انکاؤنٹرس طویل وقت سے ہو رہے ہیں اور افسوس کی بات یہ ہے کہ اس ملک میں ترقی کے نام پر فاشسٹ طاقتیں اپنا موقف مستحکم کرنے میں جٹ گئی ہیں ایسے میں اس طرح کے انکاونٹرس میں مزید اضافہ ہی ہوسکتا ہے ۔ یونین نے کہا کہ اس کا ماننا ہے کہ ان نوجوانوں کا قتل پولیس کی منظم کارروائی ہے اور زنجیروں سے بندھے نوجوانوں کو میڈلس اورترقیوں کیلئے قتل کردیا گیا ۔ اس طرح کے واقعات ایک وسیع تر سازش کا حصہ ہیں تاکہ مسلم نوجوانوں کو مزید پست کردیا جائے ۔ یہ سب کچھ دہشت کی سیاست کا حصہ ہے تاکہ مسلمانوں کو ہندوستان میں مزید ہراساں کیا جائے ۔ یونین نے کہا کہ پولیس کی یہ ہمیشہ کی روایت رہی ہے کہ جب وہ نوجوانوں کو قانون کی بنیاد پر سزائیں دلانے میں ناکام ہوجاتی ہے تو پھر انہیں ہلاک کردیا جاتا ہے ۔ اس طرح کی ہلاکتیں ماضی میں بھی ہوئی ہیں اور حکومت تحویل میں ہونے والی ان اموات کو روکنے میں ناکام رہی ہے ۔ علیگڈھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین نے آندھرا پردیش کے چتور ضلع میں بھی 20 افراد کی پر اسرار ہلاکت کی بھی مذمت کرتی ہے اور اس واقعہ کی بھی اعلی سطح کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کرتی ہے ۔ یونین نے مطالبہ کیا کہ مبینہ فرضی انکاؤنٹرس کی اعلی سطح مقررہ وقت کے اندر تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ خاطیوں کو قانون کے مطابق سزا دلائی جاسکے ۔ یونین نے متوفی نوجوانوں کے ورثا سے اظہار ہمدردی کیا ہے اور ان کیلئے دعی کی گئی ۔ یونین نے کہا کہ اس کے خیال میں اگر حکومت اس طرح کے واقعات کا تدارک کرنے میں ناکام رہی تو اس سے ملک میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال بگڑ سکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT