Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / پانی کی تلاش میں چیتا اور مگرمچھ انسانی بستیوں میں داخل

پانی کی تلاش میں چیتا اور مگرمچھ انسانی بستیوں میں داخل

سنگاریڈی ۔ /20 ڈسمبر (ایجنسیز) کولچارم منڈل کے مواضعات کوناپار اور پیٹارا کے دیہاتیوں کو /14 ڈسمبر کو اس وقت حیرت ہوئی جب گاؤں کے دو لوگوں نے کہا کہ انہوں نے کھیتوں میں دو چیتا کو دیکھا ہے ۔ ان میں سے چند افراد نے ان کا پتہ چلانے کی کوشش کی لیکن انہیں اس میں کامیابی نہیں ملی ۔ بعد میں محکمہ جنگلات کے عہدیداروں نے ان علاقوں کا دورہ کیا اور اس بات کی توثیق کی کہ ایک چیتا بھٹک کر انسانی بستی میں آیا تھا ۔ ان عہدیداروں نے دونوں گاؤں میں اس امید کے ساتھ پنجرے نصب کئے کہ چیتا کسی روز یہاں آئے گا ۔ایک اور واقعہ میں یکم ڈسمبر کو اسی منڈل میں تکاپار کے 10 دیہاتیوں پر ایک چیتا نے حملہ کیا جس میں ان میں سے چند بری طرح زخمی ہوگئے ۔ اس چیتا کو جال میں لینے کیلئے سات گھنٹے سے زیادہ وقت لگا ۔ نہرو زوالوجیکل پارک حیدرآباد سے لائے گئے ٹرانکیلائزرس کو استعمال کرتے ہوئے اسے پکڑا گیا ۔ یہ بھی اطلاعات ہیں کہ ہرنوں کا ایک غول بھی پانی کی تلاش میں انسانی بستی میں داخل ہوا جن میں سڑک عبور کرتے وقت حادثات میں چند ہرن زخمی ہوئے ۔ مانجرا ندی کے خشک ہونے کے ساتھ کوئی 12 مگر مچھ انسانی بستیوں میں داخل ہوئے ہیں ۔ یہ مگرمچھ زیادہ تر گنے کے کھیتوں میں پائے گئے ۔ جہاں اس کی فصل کو بچانے کیلئے پانی اب بھی سربراہ کیا جارہا ہے ۔ یہ مگر مچھ ندی کے دونوں جانب گنے کے کھیتوں میں پناہ لے رہے ہیں ۔ وہ غذا کے بغیر زندہ رہ سکتے ہیں لیکن پانی کے بغیر نہیں رہ سکتے ۔ اعلیٰ عہدیدار موسم گرما کے دوران انہیں بچانے کا منصوبہ رکھتے ہیں ۔ جے ستیا ، فارسٹ بیٹ آفیسر نے یہ بات کہی ۔

TOPPOPULARRECENT