Friday , September 21 2018
Home / Top Stories / پاکستان روایتی جنگ لڑنے کی طاقت سے محروم : مودی

پاکستان روایتی جنگ لڑنے کی طاقت سے محروم : مودی

لیہہ ؍ کارگل 12 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے اقتدار پر آنے کے بعد پہلی مرتبہ پاکستان کو راست تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے بالواسطہ جنگ میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا اور کہاکہ ہندوستان میں بے قصور عوام کو ہلاک کیا جارہا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ بالواسطہ جنگ سے فوج کو نقصانات روایتی جنگ کے نقصانات سے کہیں زیادہ ہے۔ مودی نے ک

لیہہ ؍ کارگل 12 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے اقتدار پر آنے کے بعد پہلی مرتبہ پاکستان کو راست تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے بالواسطہ جنگ میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا اور کہاکہ ہندوستان میں بے قصور عوام کو ہلاک کیا جارہا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ بالواسطہ جنگ سے فوج کو نقصانات روایتی جنگ کے نقصانات سے کہیں زیادہ ہے۔ مودی نے کہاکہ یہ افسوس کی بات ہے کہ ہمارے پڑوسی ملک کا رویہ نامناسب ہے۔ وہ (پاکستان) روایتی جنگ لڑنے کی طاقت سے محروم ہوچکا ہے لیکن بالواسطہ جنگ چھیڑ رکھی ہے۔

اِس بالواسطہ جنگ کے ذریعہ بے قصور عوام کو ہلاک کرنے کا عمل جاری ہے۔ اُنھوں نے دورہ لیہہ کے موقع پر فوج اور فضائیہ کے سپاہیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آخر کتنے بے قصور ہلاک کئے جائیں گے۔ اُنھوں نے کہاکہ بزدلی کی گولیوں کے ذریعہ ہلاک ہونے والوں کی تعداد روایتی جنگوں کی ہلاکتوں سے زیادہ ہے۔ نریندر مودی نے پاکستان پر یہ حملہ ایسے وقت کیا جبکہ دو ماہ قبل ہی اُنھوں نے وزارت عظمیٰ کا جائزہ حاصل کرنے کے فوری بعد امن پیشرفت کی تھی۔ مودی نے 26 مئی کو تقریب حلف برداری میں نواز شریف کے بشمول دیگر سارک قائدین کو مدعو کیا تھا۔ اُن کا تبصرہ اِس لحاظ سے بھی اہمیت کا حامل ہے کہ پاکستان کی جانب سے جنگ بندی کی متعدد خلاف ورزیوں پر تشویش بڑھ رہی ہے۔ اِس کے علاوہ کشمیر میں عسکریت پسند حملوں کے واقعات بھی بڑھ گئے ہیں۔

کل رات جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں بی ایس ایف جوانوں کے قافلہ پر حملہ کیا گیا جس میں 8 فوجی بشمول ایک آفیسر زخمی ہوگئے تھے۔ نریندر مودی نے کہاکہ وہ بالواسطہ جنگ لڑرہے ہیں۔ یہ جنگ صرف ہندوستان تک محدود نہیں بلکہ ساری دنیا سے ہورہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج ضرورت اِس بات کی ہے کہ انسانی فورس کو متحد ہونا چاہئے اور فوجی طاقت سے زیادہ انسانی طاقت کی اہمیت ہے۔ ہم تمام دنیا کی انسانی طاقتوں کو مل کر تشدد میں ملوث ہونے والوں کو روکنا ہوگا۔ اِس موقع پر چیف منسٹر عمر عبداللہ، گورنر این این ووہرہ ، فوجی سربراہ دلبیر سنگھ سوہاگ اور قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول بھی موجود تھے۔

نریندر مودی نے فوج کو عصری بنانے اور دفاعی شعبہ میں ایف ڈی آئی کی اجازت دینے کے فیصلہ کا بھی تذکرہ کیا۔ اُنھوں نے فوج کو عصری بنانے حکومت کے منصوبوں سے واقف کرایا اور کہاکہ فوج کو وسائل کا بحران درپیش نہیں ہونا چاہئے۔ ہندوستان کو سلامتی کے آلات کی پیداوار میں خود مکتفی ہونا چاہئے۔ لیہہ اور کارگل کے پہلے دورہ کے موقع پر نریندر مودی نے نیمو بازگو ہائیڈرو پاور پراجکٹ کا افتتاح کیا۔ اِس کے علاوہ لیہہ ۔ کارگل ۔ سرینگر ٹرانسمیشن سسٹم کا سنگ بنیاد رکھا۔

TOPPOPULARRECENT