Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / پاکستان میں دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کا خاتمہ ضروری

پاکستان میں دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کا خاتمہ ضروری

پاکستان کو انتخاب کرنے کی ضرورت ، صدر افغانستان کا دہشت گردی پر تبصرہ
نئی دہلی ۔ /24 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی اور صدر افغانستان اشرف غنی نے آج اپنے عزم واثق کا اعلان کیا تاکہ دہشت گردی کی لعنت کو ختم کردیا جائے جو سرحد پار قائم محفوظ ٹھکانوں سے ابھررہی ہے ۔ دونوں نے کہا کہ افغانستان میں پائیدار امن کیلئے سرحد پار واقع دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کا خاتمہ ضروری ہے ۔ دونوں قائدین نے ہندوستان کی جانب سے دفاع اور صیانت کے شعبوں بشمول ہزاروں افغان فوجیوں کی تربیت کسے اتفاق کیااور افغانستان کی دفاعی اور پولیس فورس کی ضروریات کی تکمیل کیلئے ہر ممکن مدد دینے کا تیقن دیا ۔ وزیراعظم مودی اور صدر اشرف غنی کے درمیان تفصیل سے تبادلہ خیال ہوا ۔ دونوں کی ملاقات ظہرانہ پر ہوئی تھی۔ ہندوستانی قیادت نے افغانستان کے ساتھ سیاسی مفاہمت کا تیقن دیا ۔ نریندر مودی نے تشدد اور دہشت گردی کی مذمت کرتے ہوئے سرحد پار دہشت گردی کے ٹھکانوں کے خاتمہ پر زور دیا اور کہا کہ افغانستان میں پائیدار امن کیلئے یہ انتہائی ضروری ہے ۔ یہ اشرف غنی کا گزشتہ تین سال میں چوتھا دورہ ہند ہے اور مودی ۔ غنی کے درمیان بارہویں مرتبہ تبادلہ خیال ہے ۔ پاکستان کی دہشت گردی کو تائید کی مذمت کرتے ہوئے صدر افغانستان اشرف غنی نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ پاکستان واضح طور پر انتخاب کرے ۔ پاکستان کو چاہئیے کہ امریکہ کی نئی جنوبی ایشیاء پالیسی کی قیمت پاکستان کو چکانی ہوگی اگر وہ دہشت گرد گروپس کی تائید ترک نہ کرے ۔ چین ۔ پاکستان معاشی راہداری کے بارے میں اشرف غنی نے کہا کہ خودمختاری کا مسئلہ ہندوستان کی جانب سے اٹھایا گیا اور اگر افغانستان کو واگھا اور اٹاری تک براہ پاکستان رسائی کی اجازت نہ دی جائے تو افغانستان بھی پاکستان کی وسطی ایشیاء تک رسائی روک دے گا ۔

TOPPOPULARRECENT