Friday , December 15 2017
Home / دنیا / پاکستان میں طالبان کے محفوظ ٹھکانے ہونے کی تردید

پاکستان میں طالبان کے محفوظ ٹھکانے ہونے کی تردید

واشنگٹن ۔ 22 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے آج تک امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے ذریعہ پاکستان میں دہشت گردوں کو محفوظ ٹھکانے فراہم کرنے کے ریمارک کو فراموش نہیں کیا ہے۔ آج اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ افغانستان کی جنگ میں پاکستان کو ’’قربانی کا بکرا‘‘ نہیں بنایا جاسکتا اور وہ ایسی کسی بھی ناکام حکمت عملی کی تائید نہیں کریں گے جس سے خطہ کی عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوجائے۔ انہوں نے ادعا کیا کہ پاکستان میں طالبان کے کوئی محفوظ ٹھکانے موجود نہیں ہیں۔ اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے پاکستان نے اپنی کوششوں کے دوران کئی مصائب کا سامنا کیا ہے قربانیاں دی ہیں۔ ایسے میں اگر خود پاکستان پر یہ الزام لگایا جائے کہ وہ دہشت گردوں کی پشت پناہی کررہا ہے تو یہ ایک انتہائی دکھ کی بات ہے۔ انہوں نے ایک بار پھر کہا کہ اس معاملہ میں پاکستان ’’قربانی کا بکرا‘‘ بننا نہیں چاہتا۔ طالبان کے محفوظ ٹھکانے پاکستان میں نہیں بلکہ افغانستان کے ان سرحدی علاقوں میں ہیں جہاں طالبان کا کنٹرول ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان البتہ ایک بات کیلئے بالکل تیار نہیں اور وہ ہے افغانستان کی جنگ پاکستان کی سرزمین پر لڑنا۔

TOPPOPULARRECENT