Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / پاکستان میں ہندوؤں سے ناانصافی کے خلاف نواز شریف کا انتباہ

پاکستان میں ہندوؤں سے ناانصافی کے خلاف نواز شریف کا انتباہ

میرا مذہب اسلام ، کمزوروں کی حمایت کا درس دیتا ہے، دیوالی تقریب سے پاکستانی وزیراعظم کا خطاب
کراچی۔ 11 ۔ نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف نے اپنے ملک میں ہندوؤں کے ساتھ ناانصافی کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا عہد کیا ہے اور کہا کہ وہ بھی مظلوموں کے ساتھ ظالموں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں گے کیونکہ وہ تمام طبقات کے وزیراعظم ہیں ۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں پر عالمی تشویش کے درمیان نواز شریف نے کہا کہ ’’اگر کسی ہندو پر جبر کیا جاتا ہے اور جبر کرنے والا مسلم ہے تو میں مسلمان کے خلاف کارروائی کروں گا۔ میں، آپ (ہندوؤں) کے ساتھ ظالموں کے خلاف کھڑا ہوجاؤں گا‘‘۔ وزیراعظم نواز شریف نے ایک مقامی ہوٹل میں دیوالی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بلا لحاظ ذات پات ، مذہب و ملت تمام مظلوموں کی حفاظت کرنا ، ان کی  ذمہ داری ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’’میرا مذہب اسلام مجھے سکھاتا ہے کہ میں کمزور اور مظلوم کا ساتھ دوں ۔ درحقیقت تمام مذاہب ہمیں کمزوروں اور مظلوموں کی مدد کی تعلیم دیتے ہیں‘‘۔ نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کے تمام عوام ایک متحدہ قوم ہیں اور وقت کا تقاضہ ہے کہ ہم متحد رہیں اور ایک دوسرے کی مدد کر یں ۔ مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ ہندوؤں کی خوشیوں میں شامل ہو اور ہندوؤں کو بھی مسلمانوں کی خوشیوں میں شامل ہونا چاہئے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ وہ مذہبی بنیاد پر تفریق و امتیاز پر یقین نہیں رکھتے کیونکہ ہر پاکستانی کو مساویانہ حقوق حاصل ہے ۔ نواز شریف نے کہا کہ ’’پاکستان ہم سب کا ملک ہے اور میں تمام پاکستانیوں کا وزیراعظم ہوں۔ کون کس مذہب یا ذات پات سے تعلق رکھتا ہے، اس کا کوئی امتیاز نہیں ہے‘‘۔ وزیراعظم کے ان ریمارکس کو نمایاں اہمیت حاصل ہوگئی ہے کیونکہ جنوبی صوبہ سندھ میں ہندو لڑکیوں کو زبردستی مذہب بدلنے کیلئے مجبور کرنے کے مسئلہ کے خلاف ہندو برادری کے افراد نے پارلیمنٹ کے روبرو مظاہرہ کیا تھا۔ ہندو قائدین نے کہا ہے کہ حالیہ مہینوں کے دوران دور دراز کے علاقوں میں اس تکلیف دہ رجحان میں نمایاں اضافہ ہوا ہے کیونکہ سرکاری مشنری اور پولیس مناسب کارروائی نہیں کر رہی ہے ۔ روشنیوں کے تہوار ، دیوالی کی تقریب سے خطاب کے دوران نواز شریف نے کراچی کے شہر حیدرآباد میں بھگت، کنور رام میڈیکل کامپلکس کے قیام کا اعلان کیا اور کہا کہ صوبہ پنجاب کے ضلع ننکانہ صاحب کے بابا گردوارہ کی تجدید کی جائے گی۔ حالیہ عرصہ کے دوران شورش زدہ صوبہ بلوچستان میں ہی ہندوؤں اور دیگر اقلیتوں پر حملوں کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT