Thursday , December 14 2017
Home / پاکستان / پاکستان کا یوم آزادی ‘ صدر پاکستان نے کشمیر کا مسئلہ اٹھایا

پاکستان کا یوم آزادی ‘ صدر پاکستان نے کشمیر کا مسئلہ اٹھایا

پاکستانی فوج کی تلاشی مہم کے دوران 11عسکریت پسند گرفتار ‘ محکمہ سراغ رسانی کی اطلاع پر کارروائی
اسلام آباد ۔ 14 اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان نے آج ایک بار پھر 70ویں یوم آزادی تقریب کے موقع پر مسئلہ کشمیر کا تذکرہ کیا ۔ صدر پاکستان ممنون حسین نے کہا کہ ملک کشمیریوں کی حق خوداختیاری کی تائید جاری رکھے گا ۔ وہ خصوصی پرچم کشائی تقریب میں عوام سے خطاب کررہے تھے ۔ انہوں نے زیادہ تر داخلی چیلنجوں اور عسکریت پسندی کے خاتمہ کی اہمیت پر زور دیا ‘ تاہم مسئلہ کشمیر کا بھی تذکرہ کیا اور عوام سے خواہش کی کہ انہیں کشمیر کے عوام کو یوم آزادی کے موقع پر فراموش نہیں کرنا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیریوں کو بھول نہیں سکتا اور ان کے حق خود اختیاری کی اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں تائید جاری رکھے گا ۔ صدر پاکستان نے عوام پر زور دیا کہ وہ اپنے اختلافات ترک کردیں اور ملک کی خوشحالی کیلئے سخت محنت کریں ۔ قبل ازیں ممنون حسین نے 70ویں یوم آزادی کے موقع پر پرچم کشائی انجام دی ۔ وزیراعظم نواز شریف کابینی وزراء اور فوج کے سربراہان اس تقریب میں شریک تھے ۔

جب کہ تقریب کے موقع پر سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے تھے ۔ سخت چوکسی کا اعلان کیا گیا تھا ۔ موبائیل فون خدمات تقریباً 40شہروں میں معطل کردی گئی تھیں ۔ انٹرنیٹ خدمات بھی جزوی طور پر معطل تھی۔ 11عسکریت پسندوں کو لاہور سے موصولہ اطلاع کے بموجب تلاشی مہم کے دوران فوج نے گرفتار کرلیا ۔ ان کے قبضہ سے ہتھیار اور گولہ بارود کا زبردست ذخیرہ ان کے خفیہ ٹھکانے سے پاکستان کی یوم آزادی تقریب سے عین قبل ضبط کیا گیا ۔ کارروائی کا آغاز کل کیا گیا تھا ۔ محکمہ سراغ رسانی نے دہشت گردوں کی لاہور کے مضافات میں موجودگی کی اطلاع دی تھی ۔ آئی ایس آئی کے رابطہ عامہ شعبہ کے ایک عہدیدار نے کہا تھا کہ کارروائی تین گھنٹے سے زیادہ وقت تک جاری رہی ۔ 11 ارکان کو جن کا تعلق دہشت گرد تنظیم کے خوابیدہ  شعبہ تھا ‘ گرفتار کرلئے گئے ۔ کثیرالاشاعت روزنامہ ڈان سے بات چیت کرتے ہوئے عہدیدار نے کہا کہ گرفتار دہشت گردوں میں سے دو کا تعلق جماعت الاحرار سے ہے جو ممنوعہ تحریک طالبان پاکستان کا علحدہ شدہ گروپ ہے ۔ قبل ازیں پاکستانی پنجاب کے محکمہ داخلہ نے چوکسی کا انتباہ جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ طالبان کے فضل اللہ گروپ نے خودکش حملہ آوروں کو روانہ کیا ہے تاکہ لاہور کے قریب سرحدی علاقہ واگھا اور گنڈہ سنگھ سرحد قصور میں حملے کرے ۔

TOPPOPULARRECENT