Wednesday , December 12 2018

پاکستان کو شکست ، جمعرات کو ہند۔ آسٹریلیا سیمی فائنل

ایڈیلیڈ ۔ 20 مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ورلڈ کپ کرکٹ کے تیسرے کوارٹر فائنل میں میزبان آسٹریلیا کی ٹیم نے حریف پاکستانی ٹیم کو آج چھ وکٹس سے شکست دیدی ۔ اس طرح سیمی فائنل میں ورلڈ کپ کی چار مرتبہ چمپئین رہنے والی ٹیم آسٹریلیا کا مقابلہ دفاعی چمپئین ہندووستانی ٹیم سے ہوگا ۔ پاکستانی ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور ساری

ایڈیلیڈ ۔ 20 مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) آئی سی سی ورلڈ کپ کرکٹ کے تیسرے کوارٹر فائنل میں میزبان آسٹریلیا کی ٹیم نے حریف پاکستانی ٹیم کو آج چھ وکٹس سے شکست دیدی ۔ اس طرح سیمی فائنل میں ورلڈ کپ کی چار مرتبہ چمپئین رہنے والی ٹیم آسٹریلیا کا مقابلہ دفاعی چمپئین ہندووستانی ٹیم سے ہوگا ۔ پاکستانی ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور ساری ٹیم 49.5 اوورس میں 213 کے مجموعی اسکور پر آؤٹ ہوگئی ۔ آسٹریلیا کے جوش ہیزل ووڈ نے صرف 35 رن دیکر پاکستان کے چار قیمتی وکٹس حاصل کیا ۔ ان کی طوفانی بولنگ نے حریف ٹیم کو شکست سے دوچار کرنے میں اہم رول ادا کیا۔ بعد ازاں آسٹریلیا نے فتح کیلئے مقرر معمولی ہدف کے تعاقب کا ناقص انداز میں آغاز کیا ۔ اُس کے دو اہم کھلاڑی صرف 24 رن کے معمولی اسکور پروہاب ریاض کی گیند پر راحت علی کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہوگئے ۔ بعد ازاں ارون فنچ محض دو رن کے انفرادی اسکور پر سہیل خاں کی گیند پر آؤٹ ہوگئے ۔ چوتھی وکٹ کی شکل میں مائیکل کلارک 8 رن کے نجی اسکور کے ساتھ وہاب ریاض کی گیند پر شعیب مقصود کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے

لیکن اسٹیون اسمتھ (65) اور شین واٹسن (64 ناٹ آؤٹ) نے اپنی ٹیم کو سنبھال لیا۔ احسان عادل کی گیند پر اسٹیون اسمتھ کے آؤٹ ہونے کے بعد گلین میکسویل (44 ناٹ آؤٹ ) نے واٹسن کے ساتھ شاندار ساجھیداری نبھاتے ہوئے آسٹریلیا کی ٹیم کو چھ وکٹ کی شاندار فتح سے ہمکنار کیا۔ اسٹیو اسمتھ نے جارحانہ بیٹنگ کے ذریعہ 69 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 65رنز بنایا جس میں سات چوکے شامل ہیں۔ آل راؤنڈ شین واٹسن نے ابتداء میں لڑکھڑانے کے بعد 66 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 64 رنز بنایا جس میں سات چوکے اور ایک چھکہ شامل ہے۔ ورلڈ کپ سے اخراج کے لئے پاکستانی خود کو مورد الزام ٹھہراسکتے ہیں کیونکہ انھوں نے دو آسان کیچ چھوڑکر میزبان ٹیم کو اپنا موقف مستحکم بنانے میں بالواسطہ مدد کی کیونکہ فتح کیلئے آسٹریلیا کا تعاقب کوئی آسان اور اطمینان بخش نہیں رہا۔

اوپنر آرون فنچ صرف دو رن بناکر تیسرے ہی اوور میں پویلین لوٹ گئے ۔ ڈیوڈ وارنر کا کرشمہ بھی جلد مائل بہ زوال ہوگیا وہ 23 گیندوں میں تین چوکوںکے بشمول 24 رنز بناکر میدان چھوڑ گئے۔ درحقیقت وہاب ریاض اپنے چھ اوورس کے ابتدائی مرحلے میں بہت کامیاب رہے جس میں انھوں نے صرف 24 رن دیکر دو وکٹس حاصل کیا۔ پیس بولر وہاب ریاض نے نہ صرف اپنی گیندوں بلکہ اپنے منفرد انداز کے ذریعہ آسٹریلیا کے بیٹسمین کو کافی پریشان کیا اور شائقین سے خوب داد حاصل کی۔ ریاض کو تین وکٹ بھی حاصل ہوتے اگر راحت علی 17 ویں اوور میں واٹسن کا آسان کیچ نہ چھوڑتے ۔ اُس وقت واٹسن کا اسکور صرف چار رن تھا ۔ کپتان کلارک آٹھ سے زائد رن بنائے بغیر آؤٹ ہوگئے اس وقت ان کی ٹیم کا اسکور تین وکٹس کے نقصان پر 59 رن تھا۔ تاہم چوتھے وکٹ کی ساجھیداری میں اسمتھ اور واٹسن نے اپنی ٹیم کو سنبھالتے ہوئے 89 رن کا اضافہ کیا اور گلین میکسویل نے ذمہ دارانہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو حیرت انگیز کامیابی سے ہمکنار کیا ۔ چنانچہ سیمی فائنل میں آسٹریلیا کا مقابلہ 26 مارچ کو سڈنی میں ہندوستان کے ساتھ ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT