’’پاکستان کو کروڑہا ڈالرس تو درکنار ایک ڈالر بھی نہیں دیا جانا چاہئے‘‘

l جو ممالک امریکہ کو نقصان پہنچانے کے بارے میں سوچتے ہیں ان کے ساتھ یہی سلوک کرنا چاہئے
l امریکہ نے آنکھیں بند کرکے مدد کی لیکن اب آنکھیں کھل چکی ہیں
l اقوام متحدہ میںامریکی سفیر نکی ہیلی کی یو ایس میگزین ’’دی اٹلانٹک‘‘ سے بات چیت

نیویارک ۔ 10 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر نکی ہیلی نے ایک بار پھر پاکستان کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وہاں آج بھی دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں موجود ہیں جو وقتاً فوقتاً امریکی فوجیوں کو ہلاک کرتے رہتے ہیں لہٰذا جب تک پاکستان دہشت گردی کے خلاف مؤثر کارروائی کرتے ہوئے ان کا مکمل صفایا نہیں کردیتا اس وقت تک امریکی حکومت کو پاکستان کو کروڑہا ڈالرس کی امداد تو کیا بلکہ ایک ڈالر بھی نہیں دینا چاہئے۔ یاد رہیکہ نکی ہیلی ایسی پہلی ہندوستانی نژاد امریکی خاتون ہیں جنہیں کسی بھی امریکی صدر کے انتظامیہ میں بالکل پہلی بار کابینی موقف عطا کیا گیا ہے۔ انہوں نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ امریکہ کو اب اپنی آنکھیں کھول لینی چاہئے اور پاکستان کو بطور امداد ایک ڈالر بھی نہیں دینا چاہئے۔ جو ممالک امریکہ کا بھلا نہیں سوچتے اور ہمیشہ اس کے نقصان کے بارے میں سوچتے رہتے ہیں، ایسے ممالک کے ساتھ یہی رویہ اپنانا چاہئے جو امریکہ پاکستان کے ساتھ اپنا رہا ہے۔ حالات اس قدر دگرگوں ہیں کہ ہمیں اب یہ سوچنا چاہئے کہ ہمیں کن ممالک کے ساتھ حکمت عملی کی شراکت داری کرنی چاہئے۔ یو ایس میگزین ’’دی اٹلانٹک‘‘ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے یہ بھی کہا کہ ان کے پاس سب سے اچھی مثال پاکستان کی ہے۔ ہم نے اب تک انہیں زائد از ایک بلین ڈالرس دیئے ہیں لیکن اس کا نتیجہ کیا ہوا؟ وہی ٹائیں ٹائیں فش۔ پاکستان نے خطیر رقمی امداد حاصل کرنے کے بعد بھی دہشت گردی کا بازار گرم رکھا اور کئی دہشت گرد تنظیموں کو محفوظ پناہ گاہیں فراہم کیں۔ پاکستانی سرزمین کا استعمال کرتے ہوئے دہشت گردوں نے افغانستان میں بھی تباہی مچا رکھی ہے جس میں امریکی فوجیوں کی ہلاکتیں بھی تشویشناک حد تک بڑھ چکی ہیں۔ اب تک امریکہ نے پاکستان کو جو بھی امداد دی ہے وہ آنکھیں بند کرکے دی ہے کہ چلو پاکستان کم سے کم اس امداد کے عوض دہشت گردی کا مکمل خاتمہ کردے گا لیکن اب ایسا نہیں ہوگا۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہیکہ نکی ہیلی جاریہ سال کے اختتام تک اپنے عہدہ سے مستعفی ہوجائیں گی جبکہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ہیلی کے جانشین کے طور پر گذشتہ ہفتہ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی چیف ترجمان اور فوکس نیوز کی سابق خاتون صحافی ہیتھرنوریٹ کو نامزد کیا ہے۔ اکٹوبر میں ہی ہیلی نے اعلان کردیا تھا کہ وہ ڈسمبر کے اختتام تک اپنے عہدہ سے مستعفی ہوجائیں گی۔ انہوں نے اس عہدہ پر کم و بیش دو سال اپنے فرائض انجام دیئے جبکہ جنوبی کیرولینا کے گورنر کی حیثیت سے بھی ان کی خدمات ناقابل فراموش ہیں۔ 46 سالہ ہیلی نے واضح طور پر کہا کہ اب وقت آ گیا ہیکہ پاکستان سے یہ واضح طور پر کہہ دیا جائے اسے فلاں فلاں کام انجام دینے ہیں جس کے بعد ہی امداد کا سلسلہ شروع کیا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT