Monday , September 24 2018
Home / دنیا / پاکستان کیساتھ باوثوق معلومات کی امریکی شراکت داری

پاکستان کیساتھ باوثوق معلومات کی امریکی شراکت داری

واشنگٹن۔ 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے پاکستان کے ساتھ لشکر طیبہ کے آپریشنس کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کے بارے میں ’’باوثوق ثبوتوں‘‘ میں شراکت داری کی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ لکھوی 2008ء کے ممبئی حملے کے کلیدی سازشی ہیں۔ امریکہ کے ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ پاکستان کو امریکہ نے یاد دہانی کروائی تھی کہ وہ 26 نومبر کے دہشت گرد حملوں کے ذ

واشنگٹن۔ 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے پاکستان کے ساتھ لشکر طیبہ کے آپریشنس کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کے بارے میں ’’باوثوق ثبوتوں‘‘ میں شراکت داری کی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ لکھوی 2008ء کے ممبئی حملے کے کلیدی سازشی ہیں۔ امریکہ کے ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ پاکستان کو امریکہ نے یاد دہانی کروائی تھی کہ وہ 26 نومبر کے دہشت گرد حملوں کے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کا پابند ہے۔ امریکی عہدیدار نے کہا کہ امریکہ نے قابل اعتبار ثبوت (لکھوی کے بارے میں) پاکستان کو فراہم کئے تھے، تاہم عہدیدار نے مسئلہ کی مزید تفصیلات کا انکشاف نہیں کیا۔ صرف اتنا کیا کہ یہ ایک جاری قانونی معاملہ ہے۔ امریکہ نے پاکستان کو لشکر طیبہ کے آپریشنس کمانڈر لکھوی اور دیگر افراد کے بارے میں ممبئی دہشت گرد حملوں کے سلسلے میں قابل اعتبار ثبوت فراہم کئے تھے۔ امریکہ نے ممبئی دہشت گرد حملے کے افراد کے بارے میں تفصیلی معلومات میں شراکت داری کی تھی۔ یہ معلومات ڈیوڈ ہیڈلی سے تفتیش کی بنیاد پر حاصل ہوئی تھیں۔ ڈیوڈ ہیڈلی فی الحال حملے میں اپنے ملوث ہونے کی بناء پر سزائے قید بھگت رہا ہے۔

مختلف صیانتی محکموںاور امریکی سراغ رسانی محکموں نے اپنے طور پر ممبئی دہشت گرد حملے کے بارے میں تحقیقات کی تھیں۔ محکمہ انصاف و وفاقی بیورو برائے تحقیقات نے تفصیلی مدد ممبئی حملوں کے سلسلے میں حکومت پاکستان کو فراہم کی تھی جس میں ٹھوس ثبوت بھی موجود تھے۔ صدر براک اوباما نے کہا کہ ممبئی حملے کے ذمہ داروں ، مالیہ فراہم کرنے والوں اور سرپرستوں کو ان کے جرائم کیلئے جوابدہ بنایا جائے گا۔ صدر امریکہ نے کہا کہ انہوں نے تمام حکومتوں سے اپیل کی ہے کہ وہ بھی ایسا ہی کریں۔یہ معلومات امریکہ کے بیان کے ایک ہفتہ بعد منظر عام پر آئی ہیں کہ پاکستان کے ساتھ مخالف دہشت گردی تعاون مستحکم انداز کا ہے۔ امریکہ نے پرزور انداز میں حکومت پاکستان سے کہا ہے کہ اپنے تیقنات کی تکمیل کرے اور 26 نومبر کے دہشت گرد حملے کے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کریں۔ محکمہ خارجہ کی ترجمان جین ساکی نے کہا کہ 55 سالہ لکھوی ممبئی حملے کا کلیدی سازشی ہے۔ وہ فی الحال قانون عوامی سلامتی کے تحت پاکستان میں زیرحراست ہے۔ لکھوی کو گزشتہ ہفتہ دوبارہ گرفتار کیا گیا تھا جبکہ وہ عدالت کی ہدایت پر آزاد کیا جانے والا تھا۔ عدالت کے فیصلہ پر ہندوستان کی جانب سے سخت احتجاج کیا گیا تھا۔ لکھوی اور دیگر چھ افراد پر الزام عائد ہے کہ انہوں نے نومبر 2008ء میں ممبئی دہشت گرد حملوں کی سازش تیار کی تھی جس میں 166 افراد بشمول 6 امریکی ہلاک ہوگئے تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT