Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / پاکستان کی جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزی،فائرنگ اور مارٹر حملے

پاکستان کی جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزی،فائرنگ اور مارٹر حملے

جموں ۔ 7 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوج نے جنگ بندی کی خلاف ورزی جاری رکھتے ہوئے آج 40 سرحدی آؤٹ پوسٹ اور 25 سرحدی مواضعات کو نشانہ بنایا ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کے فوجی عہدیداروں نے جموں و کشمیر میں سرحد پار فائرنگ میں اضافہ کے پیش نظر ہاٹ لائین پر بات چیت کی تاہم تعطل ختم ہونے کے کوئی اشارے نہیں ملے۔ سیکوریٹی اور سیول عہدیدارو

جموں ۔ 7 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوج نے جنگ بندی کی خلاف ورزی جاری رکھتے ہوئے آج 40 سرحدی آؤٹ پوسٹ اور 25 سرحدی مواضعات کو نشانہ بنایا ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کے فوجی عہدیداروں نے جموں و کشمیر میں سرحد پار فائرنگ میں اضافہ کے پیش نظر ہاٹ لائین پر بات چیت کی تاہم تعطل ختم ہونے کے کوئی اشارے نہیں ملے۔ سیکوریٹی اور سیول عہدیداروں کے مطابق پاکستانی فوج نے آج چار مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کی ہے۔ فوجی ذرائع نے دہلی میں بتایا کہ ڈائرکٹوریٹ جنرل آف ملٹری آپریشنس کے عہدیداروں نے جنگ بندی کی خلاف ورزی پر ہاٹ لائین پر بات چیت کی جس میں دونوں فریقین نے اس خلاف ورزی کیلئے ایک دوسرے کو مورد الزام قرار دیا۔ آج کے یہ واقعات اس وقت پیش آئے جبکہ ایک دن قبل پاکستان کی بدترین جنگ بندی کی خلاف ورزی کے نتیجہ میں پانچ دیہاتی ہلاک اور 34 زخمی ہوگئے تھے ۔ اب تک جملہ 15 افراد ہلاک اور 37 زخمی ہوئے ہیں۔

مہلوکین میں ایک جے سی او اور دیگر دو فوجی جوان بھی شامل ہیں۔ پاکستان کی رات بھر جاری رہی فائرنگ اور مارٹر بم حملوں کی وجہ سے دیہاتی عوام میں خوف و ہراس کی کیفیت پیدا ہوگئی ۔ وہ اپنے کچے مکانات چھوڑ کر بسوں ، ٹریکٹر ٹرالی اور بیل بنڈیوں کے ذریعہ محفوظ مقام منتقل ہوگئے۔ پاکستانی فائرنگ اور شلباری کے خلاف آج جموں و دیگر علاقوں میں مخالف پاکستان احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ دفاعی ترجمان لیفٹننٹ کرنل منیش مہتا نے بتایا کہ آج پونچھ میں لائین آف کنٹرول میں واقع بانوت اور حمیر پور کو نشانہ بنایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری فوج نے بھی موثر جواب دیا ہے۔ آخری وقت تک بھی نقصانات کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ ایک اور جنگ بندی کی خلاف ورزی کے واقعہ میں پاکستانی فوج نے بلنوئی میں چھوٹے اسلحہ سے فائرنگ کی۔ یہاں بھی فوج نے جوابی کارروائی کی اور فائرنگ کا تبادلہ جاری رہا۔ صبح کے وقت پاکستانی رینجرس نے ارنیا ٹاؤن پر شلباری کی ۔ یہاں پولیس اسٹیشن کے چہار دیواری کے قریب ایک شل پھٹ پڑا جس میں 6 افراد زخمی ہوگئے۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ جموں اجیت کمار ساہو نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد سے متصل تقریباً 20 تا 25 چھوٹے مواضعات میں فائرنگ اور مارٹر شلباری کی گئی۔ جموں سرحدی علاقوں میں فائرنگ کی وجہ سے تین افراد زخمی ہوئے جنہیں ہاسپٹل میں شریک کیا گیا۔ اس دوران تین فوجی خدمات کے سربراہان نے وزیر دفاع ارون جیٹلی سے ملاقات کی۔ دفاعی عہدیداروں نے بتایا کہ بری، بحری اور فضائیہ کے سربراہان نے پاکستان کی جنگ بندی کے خلاف ورزیوں کے پس منظر میں پیدا شدہ سیکوریٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

ہندوستان تحمل کا مظاہرہ کرے: پاکستان
اسلام آباد ۔ 7 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) لائین آف کنٹرول پر جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کے باعث جاری کشیدی کے تناظر میں پاکستان نے آج ہندوستان پر سرحد پر امن برقرار رکھنے کی کوششیں مسترد کرنے کا الزام عائد کیا۔ پاکستان نے ہندوستان سے خواہش کی ہے کہ اس کی فوج کو خاموش رہنے کی ہدایت دیتے ہوئے امن برقرار رکھنے کا موقع دیا جائے۔ وزیراعظم پاکستان کے قومی سلامتی اور امور خارجہ مشیر سرتاج عزیز نے کہا کہ لائین آف کنٹرول کی صورتحال پر ہمیں تشویش ہے۔ انہں نے بتایا کہ حکومت ہند اپنی فوج کو پاکستان کے سخت سفارتی احتجاج کے باوجود روکنے کے موقف میں نہیں۔ انہوں نے حکومت ہند پر زور دیا کہ فوری جنگ اور شلباری کا سلسلہ روکا جائے۔ اس کے ساتھ ساتھ یہاں امن کی برقراری میں مدد کی جائے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ حکومت پاکستان زیادہ سے زیادہ صبر و تحمل اور ذمہ داری کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہندوستانی فوج کی فائرنگ میں ہمارے چار شہری ہلاک ہوگئے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT