Friday , January 19 2018
Home / کھیل کی خبریں / پاکستان کی سنسنی خیز میچ میں آسٹریلیا کے خلاف 16 رن سے کامیابی

پاکستان کی سنسنی خیز میچ میں آسٹریلیا کے خلاف 16 رن سے کامیابی

میرپور 23 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستانی کرکٹ ٹیم نے آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 میں اپنے امکانات کو برقرار رکھتے ہوئے طاقتور سمجھی جانے والی آسٹریلیا کے خلاف ایک دلچسپ اور اہم مقابلے میں 16 رنوں سے کامیابی حاصل کرلی ہے ۔ پاکستان نے اس میچ میں پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے اکمل برادران کی بہترین بلے بازی کی بدولت 20 اوورس میں پانچ وکٹس کے نقصان سے 191 رنز

میرپور 23 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستانی کرکٹ ٹیم نے آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 میں اپنے امکانات کو برقرار رکھتے ہوئے طاقتور سمجھی جانے والی آسٹریلیا کے خلاف ایک دلچسپ اور اہم مقابلے میں 16 رنوں سے کامیابی حاصل کرلی ہے ۔ پاکستان نے اس میچ میں پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے اکمل برادران کی بہترین بلے بازی کی بدولت 20 اوورس میں پانچ وکٹس کے نقصان سے 191 رنز اسکور کئے تھے ۔ عمر اکمل نے ٹیم کیلئے بے مثال بیٹنگ کی اور انہوں نے 54 گیندوں میں چار چھکوں اور 9 چوکوں کی مدد سے 94 رنز اسکور کئے تھے جبکہ ان کے بڑے بھائی کامران اکمل نے 31 گیندوں میں چار چوکوں کی مدد سے 31 رنز اسکور کئے تھے ۔

اوپنر احمد شہزاد ڈگی بولنجر کی گیند پر جلدی آوٹ ہوگئے ۔ انہوں نے پانچ گیندوں میں ایک چوکے کی مدد سے پانچ رنز اسکور کئے تھے تاہم بولنجر کی گیند پر انہیں کو کیچ دے بیٹھے ۔ کپتان محمد حفیظ بھی زیادہ دیر وکٹ پر جم نہیں سکے اور انہوں نے دس گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 13 رنز بنائے تھے ۔ شین واٹسن نے انہیں بولڈ کیا ۔ اس موقع پر عمر اکمل میدان پر آئے اور انہوں نے ٹیم کے اسکور کو بہترین بنانے میں اہم رول ادا کیا ۔ کامران اکمل 31 رن بناکر کولٹر نیل کی گیند پر وارنرک و کیچ دے بیٹھے ۔ شعیب مقصود بھی زیادہ دیر وکٹ پر ٹک نہیں سکے اور انہوں نے پانچ رنز ہی اسکور کئے ۔ کولٹر نیل نے انہیں بولڈ کیا ۔ شاہد آفریدی نے تیز رفتار 20 رن بنائے اور ناٹ آوٹ رہے ۔

انہوں نے 11 گیندوں کا سامنا کیا اور ایک چھکا و دو چوکے لگائے ۔ شعیب ملک تین گیندوں میں ایک چوکے کی مدد سے چھ رن بناکر ناٹ آوٹ رہے ۔ عمر اکمل چھ رنوں کی کمی سے سنچری اسکور کرنے سے محروم رہے ۔ عمر اکمل نے پاکستانی ٹیم کو مشکل صورتحال سے نکال کر ایک بڑا اسکور کرنے میں اہم رول ادا کیا اور انہوں نے میدان کے چاروں جانب بہترین شاٹس لگائے ۔ آسٹریلیا کی جانب سے کولٹر نیل کو دو وکٹس ملے جبکہ مچل اسٹارک ‘ بولنجر اور واٹسن کو ایک ایک وکٹ مل سکی ۔

جواب میں آسٹریلیائی ٹیم نے اپنی اننگز کی ناقص شروعات کی تھی جب ذوالفقار بابر نے ایک ہی اوور میں دو وکٹیں حاصل کرتے ہوئے ٹیم کو پریشان کردیا تھا ۔ انہوں نے ڈیوڈ وارنر کو چار رن کے اسکور پر بولڈ کردیا جبکہ شین واٹسن بھی تین گیندوں میں چار رن بناکر ذوالفقار بابر کی گیند پر کامران اکمل کو کیچ دے بیٹھے ۔ اس وقت دوسرے اوپنر آرون فنچ اور گلین میکس ویل نے ٹیم کو نہ صرف مشکلات سے نکالا بلکہ بہترین مقام پر پہونچادیا تھا ۔ آسٹریلیا نے آٹھ اوورس میں 100 رنوں کا نشانہ پورا کرلیا تھا ۔ خاص طور پر میکس ویل نے طوفانی انداز سے بیٹنگ کی اور انہوں نے 33 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے چھ چھکوں اور سات چوکوں کی مدد سے 74 رنز بنائے تھے ۔ شاہد آفریدی نے انہیں آوٹ کیا ۔ احمد شہزاد نے ان کا کیچ لیا ۔ کپتان جارج بیلی بھی زیادہ دیر ٹک نہیں سکے اور صرف شار رن بناکر شاہد آفریدی کی گیند پر بولڈ ہوگئے ۔

آرون فنچ نے آخر وقت تک اپنی وکٹ بچانے کی کوشش کی اور وہ اسکور بھی کرتے جا رہے تھے تاہم دوسری جانب سے وکٹیں جلدی جلدی گرنے اور درکار رن ریٹ میں اضافہ کا دباؤ ان پر بھی آگیا اور سعید اجمل کی گیند پر وہ بولڈ ہوگئے ۔ انہوں نے 54 گیندوں میں دو چھکوں اور 7 چوکوں کی مدد سے 65 رن بنائے تھے ۔ براڈ ہاج دو رن ہی بناسکے اور عمرگل کی گیند پر سعید اجمل نے ان کا کیچ لیا جبکہ براڈ ہاڈن کو 8 کے اسکور پر بلاول بھٹی نے بولڈ کیا ۔ کولٹر نیل کوئی رن بنائے بغیر عمر گل کی گیند پر بولڈ ہوگئے ۔ براڈ ہاگ تین رن بناکر بلاول بھٹی کی گیند پر بولڈ ہوگئے جبکہ بولنجر صفر کے اسکور پر ناٹ آوٹ رہے ۔ آسٹریلیا کی ٹیم 191 رنوں کا تعاقب کرتی ہوئی 175 رنوں پر آوٹ ہوگئی ۔ عمر اکمل کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT