Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / پاکستان کے ساتھ بھروسہ کی بنیاد پر بات چیت کا احیاء

پاکستان کے ساتھ بھروسہ کی بنیاد پر بات چیت کا احیاء

سبوتاج کرنے کی کوششیں کامیاب نہیں ہوں گی ، دہشت گردی پر مشیران قومی سلامتی کی سطح پر مذاکرات :سشما سوراج
نئی دہلی۔14ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام )ہندوستان کے موقف میں بار بار تبدیلی کو مسترد کرتے ہوئے وزیر اُمور خارجہ سشما سوراج نے کہاکہ پاکستان کے ساتھ بھروسہ کی بنیاد پر مذاکرات کے احیاء کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ انھوں نے سبوتاج کی کوششوں اور اشتعال انگیزی کے باوجود بلا کسی رکاوٹ کے مذاکرات کا یہ عمل جاری رہنے کی توقع ظاہر کی ۔ سشما سوراج نے حالیہ دورہ پاکستان کے بارے میں پارلیمنٹ کو واقف کراتے ہوئے جامع مذاکرات شروع کرنے کے فیصلے کی مدافعت کی اور کہا کہ علاقہ میں امن واستحکام کیلئے پڑوسی ملک کے ساتھ خلیج کو پُر کرنا ضروری ہے ۔ سشما سوراج نے یہ بھی واضح کیا کہ دہشت گردی پر مذاکرات کی سطح کو بڑھادیا گیا ہے اور اب معتمدین خارجہ کی بجائے قومی سلامتی کے مشیر اس مسئلے سے نمٹیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ حقیقت کہ ہندوستان اور پاکستان کے مشیران قومی سلامتی نے کسی تشہیر کے بغیر بنکاک میں ملاقات کی، یہ مطلب نہیں رکھتی کہ تیسرے ملک کے ماحول میں بات چیت ضروری تھی ۔ بلکہ اس کا مقصد اوفا میں جو کارروائی شروع ہوئی تھی اس میں پیشرفت تھا ۔ یہ ملاقات دہلی میں نہیں ہوسکی تھی ۔ سشما سوراج نے حالیہ دورہ پاکستان کیلئے پارلیمنٹ کی تائید حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہوئے دونوں ایوانوں لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں از خود بیان دیا اور ارکان کے سوالوں کے ایوان زیریں میں جواب دیئے ۔ ان سے سوال کیا گیا تھا کہ کیا پاکستان قابل بھروسہ ہے ‘ خاص طور پر اس لئے کہ تاریخ شاہد ہے کہ بات چیت کے ساتھ ساتھ پاکستان کے حملے بھی جاری رہے ہیں ۔ انہوں نے ستائش کی کہ ایوان نے اس پہل کا خیرمقدم کیا ہے ۔ مختلف سیاسی پارٹیوں کے 13 ارکان سشما سوراج سے پہلے تقریر کرچکے تھے ۔ اس سوال پر کہ مشیران قومی سلامتی کی سابق ملاقات میں پاکستان نے اصرار کیا تھا کہ کشمیر کے مسئلہ پر اجلاس میں لازمی طور پر تبادلہ خیال کیا جائے ۔ وزیر خارجہ سے دریافت کیا گیا کہ مشیران قومی سلامتی کی ملاقات منسوخ کردی گئی تھی ‘ اب ایسی کونسی تبدیلی آگئی کہ بات چیت کا احیاء کیا جارہا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ جب بھی بات چیت ہوتی ہے اس کی بنیاد بھروسہ ہوتا ہے ۔ پاکستان کے ساتھ بات چیت کا آغاز خلیج کو پاٹنے کی اور اُس پر پُل بنانے کی ضرورت ظاہر کرتا ہے ، امن کیلئے بات چیت ضروری ہے ۔ مسائل کا حل صرف بات چیت کے ذریعہ ممکن ہے۔ سشما سوراج نے کہا کہ وزیراعظم نے یہ پہل 26مئی 2014ء سے وزیراعظم کا عہدہ سنبھالنے سے پہلے ہی کی تھی اور وزیراعظم پاکستان نواز شریف کو اپنی تقریب حلف برداری میں مدعو کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT