Friday , September 21 2018
Home / ہندوستان / پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام ہندوستان میں شامل ہونا پسند کریں گے

پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام ہندوستان میں شامل ہونا پسند کریں گے

جموں۔ 9؍نومبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ انجمن منہاج الرسول کے چیرمین نے جو امن و بھائی چارگی فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے لئے کام کرنے والی ایک اسلامی تنظیم ہے، کہا کہ پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام ہندوستان کے ساتھ وابستہ ہونے کو پسند کریں گے۔ اگر ان پاکستانی شہریوں کو ایک موقع دیا جائے تو وہ یونین آف انڈیا میں شامل ہونے کی خواہش ظاہر کریں گے۔ انجمن

جموں۔ 9؍نومبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ انجمن منہاج الرسول کے چیرمین نے جو امن و بھائی چارگی فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے لئے کام کرنے والی ایک اسلامی تنظیم ہے، کہا کہ پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام ہندوستان کے ساتھ وابستہ ہونے کو پسند کریں گے۔ اگر ان پاکستانی شہریوں کو ایک موقع دیا جائے تو وہ یونین آف انڈیا میں شامل ہونے کی خواہش ظاہر کریں گے۔ انجمن منہاج الرسول کے چیرمین مولانا سید اطہر دہلوی نے یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر پاک مقبوضہ کشمیر میں استصوابِ عامہ کروایا جائے تو زائد از 99 فیصد پاک مقبوضہ کشمیر کے عوام ہندوستان میں شامل ہونے کے لئے ووٹ دیں گے۔ جموں و کشمیر کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا پانچ روزہ دورہ کرنے کے بعد جموں میں مولانا اطہر دہلوی نے کہا کہ کشمیر میں علیحدگی پسندوں نے اپنی بنیاد اور اثر کھودیا ہے۔ اس وادی کے عوام اچھی حکمرانی اور ترقی کی بات کررہے ہیں۔ کشمیر کے علیحدگی پسندوں نے اپنا مقام کھودیا ہے۔ وادی کے عوام مختلف مسائل جیسے اچھی حکمرانی، ترقی اور تعلیم پر اظہارِ خیال کرتے ہیں۔ انھیں اس کی کوئی پرواہ نہیں ہے کہ مٹھی بھر لوگ کیا کہتے ہیں؟

مولانا سید اطہر دہلوی نے کہا کہ کشمیر کے دورہ کے دوران انھیں پتہ چلا کہ سیلاب سے متاثرہ عوام نے فوج کی جانب سے انجام دیئے گئے راحت کے کاموں کی زبردست ستائش کی ہے۔ اس لئے کشمیر کے عوام نے اب محسوس کرلیا ہے کہ فوج ہی ان کی اصل محافظ ہے۔ دہلوی نے وزیراعظم نریندر مودی کی بھی ستائش کی اور کہا کہ وہ عوام دوست وزیراعظم ہیں۔ جموں و کشمیر میں ان کی پالیسیاں اور ملک کے لئے ان کے منصوبوں کی ستائش کی جاتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ انجمن منہاج الرسول واحد اسلامی تنظیم ہے جس نے القاعدہ اور دیگر دہشت گرد گروپس کے خلاف آواز اُٹھائی ہے۔ جب کشمیری پنڈتوں کو کشمیر چھوڑ دینے کے لئے مجبور کیا گیا تو ہم نے اپنا اعتراض پیش کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT