Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / پب کی سجاوٹ میں دل آزاری مخصوص فرقہ کے مذہبی جذبات مجروح کرنے کا الزام

پب کی سجاوٹ میں دل آزاری مخصوص فرقہ کے مذہبی جذبات مجروح کرنے کا الزام

ممبئی۔/3نومبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) پولیس نے آج بتایا ہے کہ سب اربن گورے گاؤں میں واقع ایک پب ( شراب خانہ ) کی سجاوٹ میں مذہبی دل آزاری کے الزام میں ایف آئی آر درج کرلیا گیا جس میں یہ شکایت کی گئی ہے کہ اس حرکت سے ایک مخصوص فرقہ کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ سابق کارپوریٹر نکولاس المیڈا نے کل پولیس میں ایک شکایت درج کرواتے ہوئے کہا کہ ہمارے مذہبی اعتقاد کو ٹھیس پہنچائی گئی ہے۔ اگرچیکہ پب کے مالک نے مذہبی جذبات مجروح ہونے پر معذرت خواہی کرلی ہے لیکن شکایت کنندہ کوئی مفاہمت کیلئے تیار نہیں ہے۔ معذرت خواہی کو قبول کرنے میں انکار کرتے ہوئے المیڈا نے کہا کہ قانون اپنا کام کریگا، اور پب کو مکمل بند کردینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو یہ واضح پیام جانا چاہیئے کہ کاروبار کرتے وقت کسی کے مذہبی جذبات کو ٹھیس نہ پہنچائی جائے۔ المیڈآ نے بتایا کہ وہ عہدیدار مجاز کے دفتر ہپنچ کر یہ جانچ کریں گے کہ قابل اعتراض سجاوٹ کے باوجود کس طرح لائسنس منظور کیا گیا۔ تاہم تنازعہ کے پیش نظر پب چلانے والے گروپ کے چیف ایکزیکیٹو آفیسر ریاض المانی نے ایک بیان میں کہا کہ ڈیکوریشن کا مقصد کسی کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنا نہیں ہے محض صارفیت پسندی اور اشتہار بازی کے جدید رجحان کو فروغ دینا ہے اور سجاوٹ پر اعتراض کئے جانے کے بعد ہٹادیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس غلطی پر نادم ہیں جس کی مکمل ذمہ داری قبول کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT