Monday , January 22 2018
Home / شہر کی خبریں / پرانا شہر میں پاسپورٹ آفس کے قیام سے اتفاق

پرانا شہر میں پاسپورٹ آفس کے قیام سے اتفاق

حیدرآباد ۔ 11 ۔ فروری(سیاست نیوز) وزیر خارجہ سشما سوراج نے حیدرآباد کے پرانے شہر علاقہ میں پاسپورٹ آفس کی شاخ قائم کرنے سے اصولی طور پر اتفاق کرلیا ہے۔ انہوں نے اس سلسلہ میں متعلقہ عہدیداروں کو ضروری کارروائی کی ہدایت دی۔ ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی نے آج وزیر خارجہ سے ملاقات کی اور پرانے شہر کے علاقہ میں پاسپورٹ آفس ک

حیدرآباد ۔ 11 ۔ فروری(سیاست نیوز) وزیر خارجہ سشما سوراج نے حیدرآباد کے پرانے شہر علاقہ میں پاسپورٹ آفس کی شاخ قائم کرنے سے اصولی طور پر اتفاق کرلیا ہے۔ انہوں نے اس سلسلہ میں متعلقہ عہدیداروں کو ضروری کارروائی کی ہدایت دی۔ ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی نے آج وزیر خارجہ سے ملاقات کی اور پرانے شہر کے علاقہ میں پاسپورٹ آفس کے قیام اور حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے آغاز کیلئے نمائندگی کی۔ جناب محمود علی نے کہا کہ پرانے شہر کی آبادی 30 لاکھ سے زائد ہے لیکن اس علاقہ میں پاسپورٹ آفس نہ ہونے کے سبب عوام کو کئی مشکلات کا سامنا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ بیگم پیٹ میں پاسپورٹ آفس کے علاوہ سکندرآباد ، امیر پیٹ اور ٹولی چوکی میں برانچس قائم کی گئی ہیں لیکن پرانے شہر کو نظرانداز کردیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ پرانے شہر کے عوام کو پاسپورٹ کے حصول میں دوردراز کے علاقوں کا سفر کرنا پڑ رہا ہے۔ پرانے شہر سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد خلیج اور دیگر ممالک میں مقیم ہے، ان کے رشتہ داروں کو پاسپورٹ کے حصول اور تجدید کے سلسلہ میں دشواری ہورہی ہے۔ اس کے علاوہ عمرہ اور حج کی سعادت کیلئے پاسپورٹ ضروری ہوتا ہے لہذا پرانے شہر کے علاقہ میں پاسپورٹ آفس کی شاخ کا قیام وقت کی اہم ضرورت ہے۔ سشما سوراج نے اس سلسلہ میں مثبت کارروائی کا تیقن دیا۔ جناب محمود علی نے وزارت خارجہ کی جانب سے حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام کی اجازت دینے کی خواہش کی تاکہ حیدرآبادی عوام کو نئی دہلی یا ممبئی کے سفر کی صعوبت سے بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام سے کرناٹک اور کیرالا کے عوام کو بھی فائدہ ہوگا۔ سشما سوراج نے اس تجویز پر ہمدردانہ غور کا تیقن دیا

اور وزارت خارجہ کے عہدیداروں کو اس سلسلہ میں ضروری نوٹ درج کرایا۔ انہوں نے تلنگانہ ریاست کی ترقی کیلئے مرکز کی جانب سے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔ جناب محمود علی نے مرکزی مملکتی وزیر اقلیتی امور مختار عباس نقوی کے علاوہ ہندوستان میں سعودی عرب کے سفیر سعود الساتی اور پاکستانی سفیر ایم اے باسط سے بھی ملاقاتیں کیں۔ سعودی سفیر سے ملاقات کے دوران انہوں نے حیدرآباد میں سعودی کونسلیٹ کے قیام کی تجویز پیش کی۔ سعودی سفیر نے کہا کہ ان کی حکومت حیدرآباد میں کونسلیٹ کے قیام کے حق میں ہے تاہم اسے وزارت خارجہ کی اجازت کا انتظار ہے۔ جناب محمود علی نے کہا کہ تلنگانہ حکومت وزارت خارجہ سے اجازت کے حصول کی کارروائی کرے گی۔ انہوں نے سعودی سرمایہ کاروں کی جانب سے تلنگانہ کی ترقی میں اہم رول ادا کرنے کی خواہش کی جس پر سعودی سفیر نے کہا کہ وہ سعودی عرب کے اہم صنعت کاروں کے ساتھ بہت جلد تلنگانہ کا دورہ کریں گے

اور مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے امکانات کا جائزہ لیں گے ۔ تلنگانہ حکومت سعودی سرمایہ کاروں کو حیدرآباد کے دورہ کی سرکاری طور پر دعوت دیدی۔ پاکستانی سفیر سے ڈپٹی چیف منسٹر کی ڈنر پر ملاقات ہوئی جس میں نئی دہلی کی مختلف اہم سیاسی و سماجی شخصیتیں موجود تھیں۔ مملکتی وزیر اقلیتی امور مختار عباس نقوی سے ملاقات کے دوران جناب محمود علی نے تلنگانہ میں مرکزی اسکیمات پر عمل آوری میں تعاون کی خواہش کی۔ انہوں نے مرکزی اسکیمات کے سلسلہ میں تلنگانہ کو فراخدلانہ گرانٹ جاری کرنے کی اپیل کی۔ مختار عباس نقوی نے تیقن دیا کہ تلنگانہ میں اقلیتوں کی تعلیمی و معاشی ترقی کیلئے مرکز ہر ممکن تعاون کرے گا۔ انہوں نے تلنگانہ حکومت کی جانب سے اقلیتوں کی ترقی کے سلسلہ میں شروع کی گئی مختلف اسکیمات اور بجٹ میں اضافہ کی ستائش کی۔ جناب محمود علی کل جمعرات کو نئی دہلی میں مختلف درگاہوں پر حاضری دیں گے اور اسلامک سنٹر کا دورہ کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT