Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / پرانی کرنسی کے تبادلہ کی حد صرف 2000 روپئے

پرانی کرنسی کے تبادلہ کی حد صرف 2000 روپئے

۔30 ڈسمبر تک ایک ہی مرتبہ رقم تبدیل کرائی جاسکتی ہے ، شادی کیلئے 2.5 لاکھ روپئے حاصل کرنے کی اجازت
نئی دہلی ۔ /17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) اعلیٰ قدر کی کرنسی کا چلن بند کرنے کی وجہ سے ایسے افراد کو جہاں شادی مقرر ہے اور کسانوں کو جبکہ یہ بیج بونے کا موسم ہے درپیش مشکلات کے پیش نظر حکومت نے انہیں سہولت فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ لیکن رقمی تبادلے کی حد میں نصف سے بھی کمی کردی گئی ہے ۔ یہی نہیں بلکہ کسی بھی شخص کو /30 ڈسمبر تک صرف ایک ہی مرتبہ رقمی تبادلہ کی سہولت حاصل رہے گی ۔ سکریٹری معاشی امور شکتی کانتا داس نے کہا کہ ایسے خاندان جو شادی کی تیاری کررہے ہیں اپنے بینک اکاؤنٹ سے پیان تفصیلات اور سیلف ڈیکلریشن داخل کرتے ہوئے 2.5 لاکھ روپئے تک رقم حاصل کرسکتے ہیں ۔ تاہم انفرادی طور پر عوام کو 500 اور 1000 روپئے ختم کی گئی کرنسی کا تبادلہ کرتے ہوئے 4500 روپئے حاصل کرنے کی جو سہولت تھی اسے کم کرکے 2000 روپئے کردیا گیا اور وہ بھی /30 ڈسمبر تک صرف ایک مرتبہ یہ تبادلہ کیا جاسکتا ہے ۔ اسی طرح کسان اپنے کسان کریڈٹ کارڈ یا  فصلوں پر لئے گئے قرض کیلئے ہفتہ میں 25 ہزار روپئے کی رقم حاصل کرسکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ میٹرو شہروں میں منتخبہ بینک کی شاخوں پر رقمی تبادلہ کرنے والوں کی انگلی پر سیاہی لگانے کا کام پہلے ہی شروع کیا جاچکا ہے  ۔ انہوں نے کہا ہے کہ حکومت کے پاس کافی نقد رقم دستیاب ہے لیکن تبادلہ کی حد میں کمی کی وجہ یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ عوام کو کاؤنٹر تک پہونچنے میں مدد مل سکے ۔ ہم نے یہ محسوس کیا ہے کہ کئی لوگ رقمی تبادلہ نہیں کرپارہے ہیں ۔ اس کے برعکس چند افراد مسلسل کاؤنٹرس سے رجوع ہوکر متعدد مرتبہ رقمی تبادلہ کرارہے ہیں ۔ لہذا دوسروں کو بھی فائدہ پہونچانے کیلئے یہ قدم اٹھایا گیا ۔

فیصلہ واپس نہیں لیا جائے گا : ارون جیٹلی
نئی دہلی ۔ /17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کرنسی بند کرنے کا فیصلہ واپس لینے کا امکان مسترد کردیا اور دہلی و مغربی بنگال کے چیف منسٹرس پر غیر ضروری خوف و ہراس پیدا کرنے کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ بڑی قدر کی کرنسی کا چلن بند کرنے کا فیصلہ کافی منصوبہ بند ہے اور بنکوں و اے ٹی ایمس پر عوام کی تعداد بتدریج کم ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر روز 22000 اے ٹی ایمس کو درست کیا جارہا ہے تاکہ 100 ، نئے 500 اور  2000 روپئے کے نوٹ نکالے جاسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ چند افراد غیرضروری طور پر عوام میں خوف و ہراس پیدا کررہے ہیں ۔ انہوں نے یہ توقع نہیں کی تھی کہ ایک یا دو ر یاستوں کے چیف منسٹرس بھی ایسی کوششوں میں شامل ہوں گے ۔ عام آدمی پارٹی اور ترنمول کانگریس کا کرنسی بند کرنے کا مطالبہ انہوں نے یکسر مسترد کردیا اور کہا کہ حکومت نے ملک کی معیشت اور سیاست کو شفاف بنانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ لہذا اسے تبدیل نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے بینکوں کی جانب سے بڑے صنعتی گھرانوں کا قرض معاف کرنے کی اطلاع کو بھی غلط قرار دیا ۔

TOPPOPULARRECENT